کراچی(سٹاف رپورٹر)تحریک انصاف کے منحرف ایم پی ایزکی سندھ اسمبلی آمد پرسندھ اسمبلی کاایوان منگل کومیدان جنگ بن گیا،جہاں پی ٹی آئی اور پیپلز پارٹی کے اراکینِ اسمبلی آپس میں گتھم گتھا ہو گئے اور ایک دوسرے کومغلظات بکنے کے علاوہ شدید ہنگامہ آرائی کرکے ایوان کومیدان جنگ میں بدل دیا،تحریک انصاف کے اراکین کی جانب سے باغی اراکین کی پٹائی لگائی گئی ۔تحریک انصاف کے ارکان نے ڈرمائی اندازمیں اپنے منحرف رکن کو گاڑی میں بٹھاکرسندھ اسمبلی سے کسی نامعلوم مقام پرمنتقل کردیا ہے ۔سندھ اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کا آغاز اس وقت ہوا جب سندھ اسمبلی اجلاس میں شرکت کیلئے تحریک انصاف کے منحرف ایم پی ایز کریم بخش گبول، شہریار شر اور اسلم ابڑو سندھ اسمبلی کے ایوان میں داخل ہوئے توپیپلزپارٹی اراکین نے ڈیسک بجاکر تینوں ایم پی ایزکا استقبال کیاجس پر تحریکِ انصاف کے اراکینِ سندھ اسمبلی نے اپنے ناراض اراکین کو پکڑلیااورایوان میں شدیدہنگامہ آرائی شروع ہوگئی،تحریک انصاف کے اراکین کی جانب سے باغی اراکین کی پٹائی بھی لگائی۔وقفہ سوالات کے بعد اچانک دونوں جانب کے ارکان ٹولیوں کی شکل میں ایوان میں داخل ہوئے ۔کریم بخش گبول اپنی نشست پر جا کر بیٹھے اسی دوران پی ٹی آئی کے خرم شیر زمان نے ان سے سرگوشی میں کوئی بات کی اور غالباً وہ باہر لے جانے کی کوشش کر رہے تھے جس کو دیکھتے ہوئے پیپلز پارٹی کے ارکان آگے بڑھے اورکہا کہ انہیں باہرنہیں لے جا سکتے ،جس کے بعد ایوان میں شدید ہنگامہ شروع ہوگیا حکومتی اور اپوزیشن ارکان اجلاس میں ایک دوسرے سے دست و گریبان ہوئے اور اسمبلی آداب کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ایک دوسرے کے خلاف نازیبا الفاظ استعمال کئے جس پرڈپٹی اسپیکرنے اجلاس جمعرات تک ملتوی کردیا۔اجلاس ملتوی ہونے کے اعلان کے بعد بھی پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی کے ارکان گتھم گتھا ہو گئے ۔پیپلز پارٹی کے ارکان کریم بخش گبول کو پی ٹی آئی ارکان کے نرغے سے چھڑانے کی کوشش کررہے تھے ،اس کشمکش میں کریم بخش گبول کو تھپڑ بھی مارے گئے ،ان کا گریبان پھٹ گیا،تحریک انصاف کے ارکان نے اپنے منحرف رکن کرم بخش گبول کو گھیر لیا اوراسے ایوان سے نکال کراپنے ہمراہ باہرلے گئے ، ۔ہنگامہ آرائی کے دوران، پیپلز پارٹی کی کئی خواتین ارکان بھی پیچ بچاؤ کی کوشش میں دھکم پیل کی زدمیں آگئیں۔تحریک انصاف کے منحرک رکن کریم بخش گبول نے کہا کہ مجھے پیپلز پارٹی والوں نے یرغمال بنایا ہوا تھا اور مجھ پر ظلم ہوا ہے ۔دوسری طرف اجلاس میں اراکین اسمبلی کی دھکم پیل کے دوران پیپلز پارٹی کے رہنما اورپارلیمانی لیڈر مکیش چاولہ زخمی ہو کر ہیئر لائن فریکچر کا شکار ہوگئے ۔