BN

آصف محمود

عام انتخابات……چند سوالات

منگل 22 مئی 2018ء
عام انتخابات سر پر کھڑے ہیں ۔ مناسب ہو گا ، چند سوالات پر ابھی سے غور کر لیا جائے۔ کیا اس بات کی کوئی شعوری کوشش کی گئی ہے کہ یہ انتخابات گذشتہ انتخابات سے بہتر ہوں اور پچھلی دفعہ جن مسائل اور قباحتوں کا سامنا کیا گیا تھا کم از کم اس دفعہ ان سے بچا جا سکے؟ گذشتہ انتخابات کے نتیجے میں یہ ملک ایک بحرانی کیفیت سے دوچار رہا ۔ کیا اس کے بعد پارلیمان میں شعور اجتماعی بروئے کار آیا اور کوئی ایسی ٹھوس قانون سازی کی گئی کہ اگلے انتخابات میںان مسائل
مزید پڑھیے


’ ’ جہاں ہمارے حضور ﷺ بلند ہوئے تھے ، وہاں ہم پست ہو گئے‘‘

هفته 19 مئی 2018ء
فلسطینیوں پر قیامت بیت گئی اور یہاںہماری محفلیں شگوفہ بنی رہیں۔ یہ ہمیں کیا ہو گیا ہے؟ بستی میں ایسی بے حسی تو کبھی نہ تھی۔درست کہ ہم آج کمزور ہیں اور فلسطینیوں کی عملی مدد سے قاصر ہیں۔لیکن ہم اتنا تو کر ہی سکتے ہیں کہ یہ دکھ امانت کی طرح سنبھال کر رکھیں اور نسلوں کو وراثت میں دے جائیں۔کیا عجب ہماری نسلیں ہماری طرح بے بس نہ ہوں۔وقت کا موسم بدل بھی تو سکتا ہے۔ہم اتنا تو کر سکتے ہیںکہ موسموں کے بدلنے تک اپنے زخموں کو تازہ رکھیں۔ ان سے رستے لہو کو جمنے نہ دیں۔ بھلے
مزید پڑھیے


یہ آگ صرف ریکارڈ کیوں جلاتی ہے؟

جمعرات 17 مئی 2018ء
مبارک ہو، اسلام آباد کے نئے ایئر پورٹ پر بھی آگ لگ گئی۔ آگ میں نجی فضائی کمپنیوں کا ریکارڈ جل گیا۔ جی ہاں وہی نجی فضائی کمپنیاں جن کے مالکان کو سپریم کورٹ نے طلب کیا تھا۔آپ تجربہ کار حکمرانوں کے بابرکت عہد میں بھڑکنے والی اس آگ کے کمالات دیکھیے جس معاملے پر تفتیش شروع ہوتی ہے وہاں جا کر بھڑک اٹھتی ہے اور سارا ریکارڈ جلا دیتی ہے۔ نندی پور پراجیکٹ کو دیکھ لیجیے۔بڑا شور تھا اس پراجیکٹ کا۔ اس پراجیکٹ پر 58 بلین کی لاگت آئی۔ اتنی بھاری رقم برباد کر کے اس سے جو بجلی پیدا
مزید پڑھیے


نواز شریف کا مسئلہ کیا ہے؟

منگل 15 مئی 2018ء
تو کیا نواز شریف غصے میں ہیں اور گاہے توازن کھو بیٹھتے ہیں؟ ہر گز نہیں ، بنیادی طور پر وہ ایک تاجر ہیں جنہوں نے سیاست کو تجارت کا نیا رنگ دیا ہے ۔ اب معاملہ یہ ہے کہ کریانہ سٹور میں جذبات رکھے جاتے ہیں نہ نظریہ فروخت کیا جاتا ہے۔ یہاں ساری توجہ اس بنیادی نکتے پر ہوتی ہیں کہ دو جمع دو ساڑھے چار کیسے ہو سکتے ہیں۔ نواز شریف رد عمل کے کسی کمزور لمحے کا شکار نہیں ہوئے ۔ وہ شعوری طور پر بروئے کار آئے ہیں۔اس واردات کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔ نواز شریف
مزید پڑھیے


جسٹس شوکت عزیز صدیقی ، آپ کا بہت شکریہ

اتوار 13 مئی 2018ء
رمضان کی مبارک ساعتوں میں شیطان قید اور میڈیا آزاد ہو جاتا ہے۔ اتفاق نہیں یہ ایک واردات ہے جو پورے اہتمام سے ڈالی جاتی ہے۔ اس کے پیچھے وہ فکر کارفرما ہے جسے میں سیکولر انتہا پسندی کہتا ہوں۔ ہر ماہ مقدس میں یہ انتہا پسندی مسلم معاشرے کی حساسیت کی توہین اور اس کی قدروں کی تذلیل کرتی تھی اور اس طوفان بد تمیزی کو دیکھ دیکھ کر جب دل ڈوبتا تھا تو میرے جیسے اس کے سوا اور کیا کرتے کہ دل میں ہوک کی صورت اٹھتے نوحوں کو قلم سے لکھ کر غم ہلکا کرتے۔ اس
مزید پڑھیے


پانی کو عزت دو

جمعه 11 مئی 2018ء

بھارت نے پاکستان کے حصے کے پانی پر کشن گنگا ڈیم بنا لیا ہے اور چند ہی دنوں میں مودی اس کا باقاعدہ افتتاح کرنے والے ہیں۔ پانی کی قلت کے بد ترین بحران سے دوچار پاکستان ایک نئے عذاب سے دوچار ہونے جا رہا ہے مگر زندہ اور پائندہ قوم میں کسی کو پرواہ ہی نہیں ہے۔سیاسی قیادت روز ایک نیا تماشا لگا دیتی ہے اور میڈیا اس پر ڈگڈگی بجاتے ہوئے دن گزار دیتا ہے۔غیر سنجیدگی اور خوفناک سطحیت کے اس ماحول میں کسی کو احساس ہی نہیں پاکستان کے ساتھ کیا ہونے جا رہا ہے۔ کشن گنگا
مزید پڑھیے


انتہا پسندی کیوں پھیل رہی ہے؟

منگل 08 مئی 2018ء

ہوٹلوں پر ہوٹل کھلتے جا رہے ہیں مگر ڈھنگ کی کسی لائبریری کا سراغ نہیں ملتا۔دماغ سکڑتے جا رہے ہیں اور توندیں پھولتی جا رہی ہیں۔کتابیں گرد سے اٹے فٹ پاتھوں پر ملتی ہیں لیکن جوتے کی دکانیں جگمگا رہی ہوتی ہیں۔نیم خواندہ لوگوں کے ہاتھ میں زمام اقتدار ہوتی ہے اور علم و دانش کی مسند پر غیر سنجیدہ لوگ براجمان ہو گئے ہیں۔ایسے سماج میں تعصب اور انتہا پسندی نہیں پھیلے گی تو کیا فکر و دانش کے چشمے پھوٹیں گے؟ اسلام آباد کے بلیو ایریا سے گزروں تو حیرت ہوتی ہے۔ کھابوں کے مراکز آباد ہیں۔فٹ بال
مزید پڑھیے


قرض واپس کیسے کرنا ہے

هفته 05 مئی 2018ء

اگلے مالی سال کا بجٹ تو حکومت نے دے دیا ، کیا ہمیں معلوم ہے اس بجٹ کے مطابق معاملات چلانے کے لیے آئندہ حکومت کو اگلے سال کتنا قرض لینا پڑے گا؟ دل تھام لیجیے ، پورے 13 بلین ڈالرز کا قرض لینا ہو گا۔پاکستان کی اکہتر سالہ تاریخ میں ایک سال میں لیا گیا یہ سب سے زیادہ قرض ہو گا۔نواز شریف حکومت نے اپنے ساڑھے چار سال کے دور اقتدار میں40بلین ڈالر سے زیادہ قرض لیا۔ اور اب جاتے جاتے مسلم لیگ ن ایک ایسا بجٹ بنا کر جا رہی ہے جو اگلے سال قوم کو مزید
مزید پڑھیے


نواز شریف شکر اور عمران خان فکر کریں

بدھ 02 مئی 2018ء

مسلم لیگ ن کا دور اقتدار ختم ہونے کو ہے۔کیا آج ہم میںسے کسی کو یاد ہے اس جماعت نے گذشتہ انتخابات میں ہمارے ساتھ کون کون سے وعدے کیے تھے اور کیا ہم نے جاننے کی کوشش کی کہ ان وعدوں میں سے کتنے تھے جو پورے ہو سکے؟ مسلم لیگ نے میاں نواز شریف صاحب کے دستخطوں سے 2013 ء میں جو انتخابی منشور پیش کیا تھا اس میں کہا گیا تھا کہ ہماری اولین ترجیح معیشت کی بحالی ہو گی۔حقیقت یہ ہے کہ آج معیشت کا ستیا ناس ہو چکا ہے اور ان کا چہیتا وزیر خزانہ
مزید پڑھیے


بجٹ بہترین انتقام ہے؟

هفته 28 اپریل 2018ء
بجٹ کی جزئیات کو تو ایک طرف رکھ دیجیے کہ جھوٹ اور سفید جھوٹ کے بعد دروغ گوئی کی تیسری قسم کو بجٹ اعداد و شمار کہا جاتا ہے۔سوال یہ ہے کہ کیا اس حکومت کے پاس آئندہ مالی سال کا بجٹ پیش کرنے کا کوئی جواز موجود تھا؟ان کی حکومت ختم ہونے کو ہے۔ جن کے پاس صرف مئی 2018 تک کا مینڈیٹ ہو وہ 2019 کے مالی سال کا بجٹ کیسے پیش کر سکتے ہیں؟ تضادات دیکھیے ایک طرف پارلیمان کے ہوتے ہوئے معاملہ اس کے سامنے نہیں لایا جاتا اور صدارتی آرڈی ننس جاری کر دیا جاتا
مزید پڑھیے