BN

ارشاد احمد عارف


غضب کیا تیرے وعدے پہ اعتبار کیا


مریم نواز شریف کے طرح مصرعے پر بلاول بھٹو نے خوب گرہ لگائی‘ پی ڈی ایم کے اجلاس میں میاں نواز شریف کی طویل غزل پر آصف علی زرداری کے جواب آں غزل سے مشابہ ۔مریم نواز شریف کی میڈیا ٹاک خواتین خانہ کے طعنوں کو سنوںسے ملتی جلتی تھی‘ بلاول بھٹو کے جواب میں جمہوری و سیاسی منطق کا تڑکہ نظر آیا‘ پی ڈی ایم روز اول سے تضادات کا مجموعہ اتحاد تھا جس پر جلی حروف میں ’’مری تعمیر میں مضمر ہے اک صورت خرابی کی ‘‘کندہ تھا مگر ذاتی خواہشات اور خاندانی مفادات کے اسیر ساون کے
منگل 30 مارچ 2021ء

رنج لیڈر کو بہت ہیں مگر آرام کے ساتھ

جمعه 26 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
یاں بآں شورا شوری یا بایں بے نمکی‘ مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر اور میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز شریف نے چند روز قبل حکومت اور نیب کو چیلنج کیا تھا ’’کہ وہ انہیں گرفتار کرنے کی جرأت کرے‘ میں مقدمات سے ڈرتی ہوں نہ گرفتاری سے‘‘ مگر جونہی نیب نے انہیں طلب کیا وہ ضمانت قبل از گرفتاری کرانے لاہور ہائی کورٹ پہنچ گئیں‘ جس پر ان کے مداح اور مسلم لیگ (ن) کے لیڈرو کارکن حیراں ہیں‘ پریشان وہ اس بات پر ہیں کہ اگر محترمہ گرفتاری سے خوفزدہ تھیں تو حکومت اور نیب کو للکارنے
مزید پڑھیے


اس کی اُمیدیں قلیل‘اس کے مقاصد جلیل

جمعرات 25 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
گزشتہ روز محقق اقبالیات جناب ڈاکٹر رفیع الدین ہاشمی صاحب کی تازہ تالیف مکاتیب ڈاکٹر حمید اللہؒ (بنام محمد طفیل)ملی‘ درویش منش محقق کے طور پر ڈاکٹر رفیع الدین ہاشمی کا وجود غنیمت ہے‘ شاعر مشرق علامہ اقبال کی حیات و خدمات پر درجنوں کتابوں کے مصنف ڈاکٹر رفیع الدین ہاشمی نے تن تنہا وہ کام کیا جو سرکاری سرپرستی میں کام کرنے والے تحقیقی ادارے نہیں کر پائے‘ڈاکٹر حمید اللہ کی عظیم دینی خدمات سے اہل علم واقف ہیں ’’مکاتیب ڈاکٹر حمید اللہ‘‘ مگر اس مرد درویش‘ عظیم محقق کے روزمرہ معمولات‘ دلچسپیوں ‘ انداز فکر اور مقصد حیات
مزید پڑھیے


تیرے وعدے پہ جیئے ہم تو یہ جان جھوٹ جانا

منگل 23 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
چیئرمین سینٹ کے الیکشن میں ناکامی کے بعد پی ڈی ایم کا مستقبل مخدوش ہے اور میاں نواز شریف و آصف علی زرداری کے مابین اعتبار و اعتماد کا بحران شدید۔ ’’وعدے قرآن و حدیث نہیں ہوتے‘‘ کے مشہور زمانہ قول کے خالق آصف علی زرداری کی زبان پر اعتبار کرنے سے پہلے میاں نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز شریف نے ماضی کا تلخ تجربہ بھلا دیا تو قصور وار وہ خود ہیں کوئی اور کیوں؟جھوٹ اور فریب کا کاروبار کم و بیش سارے ہی سیاستدان کرتے ہیں‘مانتا کوئی نہیں‘ آصف علی زرداری چھپاتے نہیں‘زیادہ بدنام ہیں‘
مزید پڑھیے


کیا خوب سودا نقد ہے…

جمعرات 18 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس میں آصف علی زرداری نے میاں نواز شریف اور مولانا فضل الرحمن سے وہی کچھ کیا جو 2007ء میں میاں صاحب نے آل پارٹیز ڈیمو کریٹک الائنس(اے پی ڈی ایم) کے پلیٹ فارم پر عمران خان اور اپنے دیگر اتحادیوں اور حضرت مولانا نے اپنے حلیف قاضی حسین احمد کے ساتھ کیا تھا ؎ کانٹا کسی کے مت لگا‘گو مثل گل پھولا ہے تو وہ تیرے حق میں تیر ہے‘ کس بات پر بھولا ہے تو مت آگ میں ڈال اور کو‘پھر گھانس کا پولا ہے تو سن رکھ یہ نکتہ بے خبر‘کس بات
مزید پڑھیے



ناچ نہ جانے آنگن ٹیڑھا

منگل 16 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
پریس کانفرنس میں وفاقی وزیروں شفقت محمود‘ فواد چودھری اور شبلی فراز کو الیکشن کمیشن آف پاکستان پرگرجتے برستے دیکھ کر اردو زبان کا پامال محاورہ یاد آیا‘ ناچ نہ جانے آنگن ٹیڑھا‘ موجودہ الیکشن کمیشن کے سربراہ سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کے قابل اعتماد مشیر سعید مہدی کے داماد ہیں، ممکن ہے بطور بیوروکریٹ ان کی ہمدردیاں بھی مسلم لیگ ن یا شریف خاندان کے ساتھ ہوں مگر راجہ سکندر کا نام عمران خان نے اپنے ایک غیر سیاسی مشیر کی سفارش پر پیش کیا‘ آئینی تقاضوں کے مطابق قائد حزب اختلاف میاں شہبازشریف کے مشورے پرانہیں حکومت نے
مزید پڑھیے


اپنے اپنے بے وفائوں نے……

اتوار 14 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
حضرت حفیظ جالندھری نے برسوں قبل مخدوم یوسف رضا گیلانی‘ عبدالغفور حیدری اور مولانا فضل الرحمن کے دلی جذبات کی ترجمانی کس خوبصورت انداز و الفاظ میں کی تھی ؎ دیکھا جو کھا کے تیر کمیں گاہ کی طرف اپنے ہی دوستوں سے ملاقات ہو گئی مولانا فضل الرحمن اور مولانا عبدالغفور حیدری کو صورتحال کا ادراک ہے‘پی ڈی ایم سربراہی اجلاس میں مذہبی رہنما مسلم لیگ(ن) اور پیپلز پارٹی کی قیادت سے جواب طلبی نہ سہی‘ بھرپور گلے شکوے کا ارادہ رکھتے ہیں مگر اپنے گریبان میں جھانکنے‘ کو وہ بھی تیار نہیں‘ عمران خان کی مخالفت
مزید پڑھیے


اتنا بے سمت نہ چل لوٹ کے گھر جانا ہے

جمعرات 11 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
سینٹ الیکشن میں پی ڈی ایم کے امیدوار یوسف رضا گیلانی کی کامیابی نے حکمران اتحاد کو چکرادیا ہے‘ پریشانی کے عالم میں عمران خان اور ان کے ساتھیوں کو ڈپٹی چیئرمین کے منصب کے لئے امیدوار نامزد کرنے کی فرصت مل رہی ہے نہ چیئرمین سینٹ کے امیدوار صادق سنجرانی کی کامیابی کے لئے ایسی حکمت عملی تیار کرنے کا موقع کہ جس اخلاقی برتری کے اُصول کا علم کپتان نے تھام رکھا ہے وہ سربلند رہے اور یوسف رضا گیلانی بھی جیت نہ پائیں‘ شیخ رشید احمد اگرچہ حسب عادت سنجرانی کی بڑے مارجن سے کامیابی کے دعوے
مزید پڑھیے


مقابلہ سخت ہے، وقت کم

منگل 09 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
توقع کے عین مطابق پی ڈی ایم نے سابق وزیر اعظم مخدوم یوسف رضا گیلانی کو چیئرمین سینٹ کے لیے امیدوار نامزد کر دیا، تحریک انصاف اور حکومت اپوزیشن میں پھوٹ ڈال کر پی ڈی ایم اتحاد میں شامل بی این پی مینگل اور اب تک غیر جانبدار رہنے والی جماعت اسلامی کو ساتھ نہیں ملاتی تو بظاہر یوسف رضا گیلانی کی کامیابی یقینی ہے، اپوزیشن اتحاد کو باون ارکان کی حمایت حاصل ہے جبکہ حکومتی اتحاد سینٹ میں سینتالیس ارکان پر مشتمل ہے ؎ جمہوریت اِک طرز حکومت ہے کہ جس میں بندوں کو گنا کرتے ہیں، تولا نہیں
مزید پڑھیے


سب یہاں پر جناب بکتے ہیں

جمعه 05 مارچ 2021ء
ارشاد احمد عارف
اسلام میں رشوت دینے اور لینے والے دونوں جہنمی ہیں‘اسلام آباد میں رشوت دینے اور لینے والے پارلیمنٹ کی رکنیت کے حقدار۔ یقین نہ آئے تو سینٹ کے انتخابی نتائج بالخصوص اسلام آباد کی نشست کا جائزہ لے لیجیے۔سینٹ انتخابات میں پیسہ پہلی بار نہیں چلا‘ ہر سینٹ الیکشن دولت کی ریل پیل سے داغدار ہوا‘ قومی سیاست میں ضمیر فروشی اور پیسے کا چلن سکّہ رائج الوقت ہے اور مقبول سیاستدانوں اور سیاسی جماعتوں نے اس رجحان کی حوصلہ شکنی کے بجائے ہمیشہ حوصلہ افزائی کی‘ عشروں قبل حبیب جالب نے کہا تھا ؎ اب
مزید پڑھیے








اہم خبریں