BN

سہیل دانش


آئی اے رحمان باکمال انسان تھے


کیا کیا باکمال اور پیارے لوگ ہمارے درمیان سے اٹھ گئے۔ یہ انسانوں کے اس قبیلے سے تعلق رکھتے تھے جو اپنے اپنے حوالے سے خیر‘ محبت اور انسپائریشن کا استعارہ بن کر جگمگاتے رہیں گے۔ یہ ذرائع ابلاغ کے اس تیز ترین دور میں اپنی جادوگری جیسی صلاحیت اور زندگی کے حسن کے نمائندے کہلانے کے حقدار تھے۔ یہ درست ہے کہ بڑے لوگ دنیا میں پیدا ہوتے رہیں گے اور یہ دنیا عظیم کرداروں سے کبھی خالی نہیں ہو گی۔ لیکن جب یہ کردار دنیا سے رخصت ہوتے ہیں تو ہم اداس ہو جاتے ہیں۔ یہ اپنی محنت
جمعه 16 اپریل 2021ء

مہنگائی ۔حکومت کے لئے بڑا چیلنج

جمعه 09 اپریل 2021ء
سہیل دانش
جب طاہر القادری اپنا دھرنا سمیٹ کر چلے گئے تو عمران خان اکیلے رہ گئے۔ اس کے بعد کنٹینر کے سامنے چند کرسیاں جن پر سرشام کچھ لوگ آ کر بیٹھ جاتے عمران کی تقریر کے درمیان موسیقی پر بے ڈھنگا سا ڈانس کرتے اور گھروں کو رخصت ہو جاتے۔ عمران خان دھرنے کے ذریعے حکومت گرانے کا خواب لے کر آئے تھے۔ اسمبلیوں سے مستعفی ہونے‘ سرحد اسمبلی توڑنے کی دھمکی اور امپائر کی انگلی جو ان کی سیاست کا استعارہ بن گئی تھی کا انتظار کرتے رہے۔ پھر پشاور میں آرمی پبلک سکول کے سانحہ کے بعد یہ
مزید پڑھیے


مکالمہ وقت کی ضرورت ہے

جمعه 02 اپریل 2021ء
سہیل دانش
ملک میں سیاسی کشمکش آج پورے جوبن پر ہے۔ نواز شریف ملک کی مقتدرہ کے خلاف جو کچھ کہہ رہے ہیں، لیکن اس حقیقت سے کون انکار کر سکتا ہے کہ وہ اسی نظام کے ذریعے آگے بڑھے اور اسی نظام کا حصہ رہے، آصف زرداری کو آپ سیاسی شطرنج کا چمپئن کہیں۔آپ کہہ سکتے ہیں کہ وہ ان کی بعض سیاسی چالوں نے بچھی بساط کے تمام کھلاڑیوں کو حیران و پریشان کر دیا۔ لیکن ذرا غور فرمائیے کہ ان کی طرز سیاست نے اس پارٹی کو جسے بدترین آمر ختم تو دور کی بات محدود نہ کر سکا
مزید پڑھیے


عمران کے لئے سب کچھ اچھا نہیں

جمعه 26 مارچ 2021ء
سہیل دانش
ہم من حیث القوم نئے فکری تہذیبی،اقتصادی اور سیاسی افق کی جانب بڑھ رہے ہیں،میں ہمارا پورا معاشرہ، انگڑیاں لے رہا ہے، ملک بھر میں مہنگائی کا سونامی آچکا، مہنگائی نے تمام سابقہ ریکارڈ توڑ دیئے ہیں۔ روپیہ ڈالر کی محکومیت کا شکار ہے، اس پر سیاسی موسم بھی عجیب و غریب روپ دھار رہا ہے، حکومت ڈیلیور کرنے میںناکام ہے، اپوزیشن حکومت کو اتار پھینکنے کی کوشش میں، خود باہم الجھ پڑی ہے، تیسرا فریق حکومت کو ڈکٹیٹ کر نے میں بے بسی کا شکاردکھائی دے رہا ہے،ہر روز منظر بدل رہا ہے،فیصلہ کن قوتوں کو اپنے شانہ بشانہ
مزید پڑھیے


حقوق نسواں۔عورت مارچ

جمعه 19 مارچ 2021ء
سہیل دانش
8مارچ حقوق نسواں کا عالمی دن منایا گیا۔ پاکستان کے ہر چھوٹے بڑے شہر میں عورت مارچ ہوئے ،مختلف تقریبات اور سیمینار منعقد کئے گئے۔ عورت کے حقوق عورت کی آزادی اور عورت کی برابری کے نعرے لگائے گئے۔ پاکستانی عورت کی مظلومیت ثابت کرنے کے لئے امریکہ یورپ آسٹریلیا اور مشرق بعید کی رپورٹوں کے حوالے دیے گئے۔ زچگیوں کے دوران مرنے والی خواتین‘ خاوندوں سے پٹنے والی عورتوں‘ دفاتر میں جنسی ہراسانی کے واقعات‘ گھروں میں کام کرنے والی خواتین کے ساتھ روا رکھے جانے والی ظلم و زیادتیاں‘ مجبوری کے عالم میں گھروں سے بھاگنے والی لڑکیوں
مزید پڑھیے



مشاہد اللہ خاں: کچھ یادیں،کچھ باتیں

جمعه 05 مارچ 2021ء
سہیل دانش
انہیں یہ تو پتہ چل گیا تھا کہ مقدر میں رزق کا ذخیرہ ختم ہونے کو ہے۔ لیکن وہ بھی کیا زندہ دل شخص تھے۔ زندگی ان کے انگ انگ سے نشر ہوتی تھی ایک ایک لفظ سے جھلکتی تھی۔وہ آخر وقت تک یہی کہتے رہے کہ موت سب سے بڑی حقیقت ہے لیکن زندگی اس سے بھی بڑی حقیقت ہے اور وہ لوگ بڑے بے وقوف ہوتے ہیں جو چمکتی دوپہر ہی سے رات کے اندیشے سے کانپتے رہتے ہیں یہ زندہ دل شخص مشاہد اللہ کے علاوہ اور کون ہو سکتا ہے یہ تو حقیقت ہے کہ اللہ
مزید پڑھیے


ہم معاشرتی بحران کا شکار ہو گئے

جمعه 12 فروری 2021ء
سہیل دانش
اسلام آباد ہائی کورٹ میں وکلا کے دھاوے کو ان کا اضطراب کہیں گے یا پھر قومی اسمبلی میں ہونے والی دھینگا مشتی میں جس طرح عوام کے منتخب نمائندے آتش فشاں کی طرح پھٹے اورلاوے کی طرح بہتے چلے گئے اسے کیا کہیں گے ا۔نصاف کرنے والے فورم اور قانون سازی کرنے والے ایوان میں جو کچھ ہوا اس سے ذہن میں ایک سوال اٹھتا ہے کہ ہمارا معاشرہ کس قدر عدم برداشت کا شکار ہو گیاہے۔ بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح بھی قانون دان تھے اور ان کا ذر یعہ معاش بھی وکالت تھا لیکن اسلام
مزید پڑھیے


لیری کنگ لایئو۔ایک عہد تمام ہوا

جمعه 05 فروری 2021ء
سہیل دانش

وہ پڑھتے پڑھتے تھک جاتا تو لمبی لمبی سانسیں لینے لگتا تھا، دنیا بھر کے حالات اسے دکھی کر دیتے تھے اور اسکی آنکھوں میں شکوے جمع ہوتے رہتے تھے۔ جنگوں میں زندگی کی ارزانی اور کم وسائل والے لوگوں کی بے قدری دیکھ کر وہ سوچتا تھا کہ یہ تو کوئی انصاف نہیں ہے۔ اس کا دل اور ذہن تلخ ہو جاتے اور وہ خود سے سوال کرنے لگ جاتا ۔ وہ کوئی ذہین شخص تھا لیکن سوچتا بہت تھا، وہ کتابوں پر سر پٹخ پٹخ کر زچ ہو جاتا پھر اس نے سوچا کہ آخر بڑے لوگ بھی
مزید پڑھیے


جوبائیڈن۔امریکی صدر کیا کر سکتا ہے؟

جمعه 22 جنوری 2021ء
سہیل دانش
اگر کوئی پوچھے کہ امریکہ کے نئے صدر جوبائیڈن کی سب سے نمایاں خوبی کیا ہے تو میں بلاتردد کہوں گا کہ وہ جو بھی ہے، جہاں بھی ہے، ان کے لب و لہجے اور عمل میں شائستگی‘بردباری اور محبت جھلکتی ہے۔ سابق صدر بارک اوباما کی طرح نچلے متوسط طبقے سے تعلق رکھتے ہیں، ہم اس بات کا جائزہ آگے چل کر لیتے ہیں کہ 3نومبر 2020ء کو ہونے والے صدارتی انتخابات میں بائیڈن کی جیت اور ڈونلڈ ٹرمپ کی ہار کے بنیادی محرکات اور عوامل کیا تھے، دیکھتے ہیں وہائٹ ہائوس کا مکین کیا کر سکتا ہے، وہ
مزید پڑھیے


نصیر ترابی ۔ وہ ہمسفر تھا مگر اس سے ہمنوائی نہ تھی

جمعه 15 جنوری 2021ء
سہیل دانش
مٹی کے انسان نے با لآخر مٹی ہونا ہوتا ہے۔ 15جون 1945کو حیدر آباد دکن میں پیدا ہونے والے نصیر ترابی 10جنوری 2021کو کراچی میں ہم سے جدا ہو گئے۔ خانوادہ علامہ رشید ترابی کے چشم و چراغ اردو کے درخشاں ستارے اور نئی نسل کے نمائندے شاعر اب ہم میں نہیں رہے۔ نہ اپنا رنج نہ اوروں کا دکھ نہ تیرا ملال شب فراق کبھی ہم نے یوں گنوائی نہ تھی بچھڑتے وقت ان آنکھوں میں تھی ہماری غزل غزل بھی وہ جو کسی اور کو ابھی سنائی نہ تھی نصیر ترابی کے لئے اعزاز کی پہلی سند ہی یہ تھی
مزید پڑھیے








اہم خبریں