لاہور(سٹاف رپورٹر) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاہے وزیراعظم کوئی ایسا گر بتائیں جس سے ایک گھرانے کا تین ہزار میں گزارہ ہوجائے ۔ سندھ اور پنجاب سے تعلق رکھنے والے امرائے اضلاع سے ٹیلی فونک گفتگومیں انہوں نے کہاوزیراعظم خود کہتے تھے میرا دو لاکھ میں گزارہ نہیں ہوتا ،غریب عوام کو مزید مشکل میں نہ ڈالا جائے اور کم از کم انہیں اتنا گزار ہ الاؤنس ضرور دیا جائے جس سے وہ دو وقت کا کھانا کھا سکیں۔ ہم بحیثیت قوم اس وبائی مرض سے متحد ہوکر لڑیں گے اور ان شائاللہ کامیابی سے ہمکنا ر ہونگے ۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور ہر جگہ انتظامیہ کی ہدایات پرعملدرآمد کو یقینی بنایا جائے تاکہ کرونا کے پھیلاؤ کو روکا جا سکے ۔سراج الحق نے کہا اجتماعی توبہ و استغفار اور رجوع الی اللہ سے ہی اس وبائسے نجات حاصل کرسکتے ہیں،عوام جمعرات کو شب دعا اور جمعتہ المبارک کو یوم توبہ و استغفار کے طور پرمنائیں،اپنے دن رات عبادت و ریاضت میں گزاریں اور اللہ تعالیٰ سے عاجزی و انکساری کے ساتھ دعائیں کریں۔ سراج الحق نے امرائاضلاع کو ہدایت کی کہ مشکل کی اس گھڑی میں عوام کے ساتھ قریبی رابطہ میں رہنے اور ان کی مشکلات حل کرنے کے لیے جماعت اسلامی اور الخدمت کے رضا کاروں کی کمیٹیوں کو محلوں کی سطح پر منظم کیا جائے اورہر ضلع کے بڑے شہروں میں کنٹرول سینٹرز بنائے جائیں،مقامی انتظامیہ کے ساتھ مکمل تعاون کیااورمخیر حضرات کو خدمت کے کاموں میں شامل کیا جائے ۔جماعت اسلامی کے امرائدیہاڑی دار مزدوروں کے گھروں میں راشن پہنچائیں اور مقامی انتظامیہ کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہیں۔