تہران( آن لائن ، این این آ ئی ، نیٹ نیوز ) ایرانی سر کاری میڈیا کے مطابق ایران نے گز شتہ روز زمین سے فضا میں مار کرنے والے جدید بور۔373 دفاعی میزائل نظام کو فوج کے حوالے کر دیا گیا ہے ۔بور۔373 بیک وقت 100 اہداف کی نشاندہی اور ان پر 6 مختلف اقسام کے ہتھیاروں سے حملہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔ایران نے اس میزائل سسٹم کو روسی ایس۔300 کی اپ گریڈ صورت قرار دیا ہے ۔میزائل سسٹم فوج کے حوالے کر نے کی تقر یب کے موقع پر اپنے خطاب میں ایرانی صدر حسن روحانی نے امر یکہ کیلئے ایک مرتبہ پھر سخت لہجہ استعمال کرتے ہوئے کہا ہے کہ امر یکہ کے ساتھ مذاکرات بے کار ہیں کیونکہ تہران اور عالمی طاقتوں کے درمیان طے پانے والا جوہری معاہدہ اب خدشات کا شکار ہوچکا ہے ۔ ٹیلی ویژن پر نشر ہونے والی تقریر میں ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ اب ہمارے دشمن عقل کی بات نہیں سمجھ رہے اس لیے ہم عقل سے انہیں جواب دے بھی نہیں سکتے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر ہمارا دشمن ہمارے خلاف میزائل چلائے گا تو ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ جناب راکٹ، مہربانی کر کے ہمیں یا ہمارے ملک کے معصوم عوام کو نشانہ نہیں بنائیے گا۔انہوں نے کہا کہ ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ راکٹ لانچنگ سر، کیا آپ مہربانی کر کے ایک بٹن دبا کر فضا میں ہی میزائل خود تباہ کرسکتے ہیں۔ خیال رہے کہ 1992سے ایران مقامی سطح پر دفاعی صنعت کو جدید طریقے سے استوار کر رہا ہے اور اس سلسلے میں ہلکے اور بھاری ہتھیاربنا چکا ہے جس میں مارٹرز، تارپیڈوز، ٹینکس کے ساتھ ساتھ آبدوزیں بھی شامل ہیں۔یاد رہے کہ گزشتہ برس ایران کے میزائل پروگرام اور علاقائی اثر و رسوخ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے امر یکہ نے جوہری معاہدے سے دستبرداری اختیار کرنے کے بعد ایران پر دوبارہ پابندیاں عائد کردی تھیں۔اس حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ یہ معاہدہ ایران کا بیلسٹک میزائل پروگرام محدود نہیں کر سکا۔