بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک ، آن لائن ) فنانشل ایکشن ٹاسک فورس( ایف اے ٹی ایف) کے اجلاس میں پاکستان نے بھارت کو منہ توڑ جواب دے دیا۔ ذرائع کے مطابق چین کے شہر گوانگ زو میں ہونے والے ایف اے ٹی ایف اجلاس میں سیکرٹری خزانہ یونس ڈھاگہ کی قیادت میں 12 رکنی پاکستانی وفد نے شرکت کی۔ آسٹریلیا، ملائیشیا، ترکی، امریکہ ، چین ، بھارت، جرمنی اور برطانیہ کے نمائندے بھی اجلاس میں شریک ہوئے جبکہ بھارت پاکستان کیخلاف اجلاس میں 6 رکنی وفد لے کر آیا۔ بھارتی وفد میں کسٹم ، بینکنگ اور ٹیکس کے ماہرین شامل تھے ۔ذرائع کا کہنا ہے اجلاس کے دوران پاکستان نے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کو دہشتگردی کیخلاف اقدامات سے آگاہ کیا۔ کرنسی سمگلنگ کی روک تھام اورمدارس اصلاحات پر بریفنگ دی ۔ اجلاس کے دوران بھارتی ماہرین نے غیر ضروری اعتراضات بھی اٹھائے لیکن پاکستان نے بھرپور جواب دیا۔ذرائع کا کہنا ہے پاکستان نے یقین دہانی کرائی کہ کرنسی سمگلنگ روکنے کیلئے اندرونی اور بیرونی راستوں کو فعال کیا جائے گا۔ مذاکرات کے دو سیشن ہوئے جس میں پاکستان نے 27نکاتی ایکشن پلان پر عملدرآمد کے بارے میں پیشرفت رپورٹ بھی پیش کی۔پاکستان اور ایشیا پیسفک گروپ کے درمیان مذاکرات آ ج بھی جاری رہیں گے جنہیں’’ فیس ٹو فیس‘‘ کا نام دیا گیا ہے ۔ذرائع کے مطابق چین میں پاکستانی وفد کے ایف اے ٹی ایف حکام سے غیر رسمی مذکرات بھی ہوئے جو ساڑھے چھ گھنٹے تک جاری رہے ۔پاکستانی وفد کو ایشیاپیسفک گروپ کی جانب سے آج ہونے والے باضابطہ مذاکرات کے بارے میں رہنمائی بھی فراہم کی گئی تھی اور امریکی نمائندوں نے پاکستانی وفد کو مختلف معاملات پر کونسلنگ فراہم کی۔ذرائع کا کہنا ہے دو رز تک جاری رہنے والے مذاکرات میں ایف اے ٹی ایف سے پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے پر بھی بات ہوگی۔