سرینگر(این این آئی)مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسز نے صحافیوں کو تشدد کا نشانہ بنایااورانہیں ہراساں کیا۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں نے صحافیوں کو سرینگر کے علاقے سونہ وار میں قابض انتظامیہ کی طرف سے عالمی برادری کو گمراہ کرنے کیلئے قائم کئے گئے نام نہاد میڈیا فیسیلی ٹیشن سینٹر آنے کی اجازت نہیں دی ۔ صحافیوں اور فوٹو جرنلسٹس نے کہابھارتی اہلکاروں نے کرفیو اور میڈیا پاسز دکھانے کے باوجود آگے جانے نہیں دیا ۔ پولیس اہلکاروں کی بدتمیزی اور بدسلوکی کا نشانہ بننے والی خاتون صحافی رفعت محی الدین نے کہا پولیس اہلکاروں نے میرے اور میرے اہلخانہ کے خلاف غلیظ زبان استعمال کی ۔ جب انہیں اپنا کرفیو پاس دکھایا تو اہلکاروں نے میری گاڑی کو نقصان پہنچایا اور اسے قبضے میں لینے اور سنگین نتائج کا سامنا کرنے کی دھمکی دی، پولیس اہلکاروں نے مجھے گاڑی سے نکال کر باہر بٹھا دیا اورایک فوٹو جرنلسٹ کا کیمرہ توڑ دیا جبکہ ایک اور کو تشدد کا نشانہ بنایا ۔ میڈیا فیسیلی ٹیشن سینٹرمیں متعدد صحافیوں نے پولیس کی طرف سے ہراساں کرنے کی بھی شکایت کی ۔ ایک اور صحافی نے کہا پولیس اہلکاروں نے مجھے اپنی گاڑی دو کلومیٹر دور کھڑی کرنے پر مجبور کیا۔