لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)معاون خصوصی علی نواز اعوان نے کہاہے ہماراالمیہ یہ ہے ہم ہرچیز کاعارضی حل تلاش کرتے ہیں،ممتازقادری، آسیہ بی بی ہویا الیکشن بل میں تبدیلی دیکھ لیں، وزیراعظم نے اس پرکمپری ہنسو بات کی۔پرگرام نائٹ ایڈیشن اینکرپرسن شازیہ ذیشان سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا عمران خان نے عالمی برادری کی توجہ ناموس رسالتﷺ کی طرف دلائی،ہولو کاسٹ کاذکر کیا،معیشت بہت بڑی چیزہے ،اگرہم فرانسیسی سفیرکونکال دیتے ہیں توکیا یہ کام رک جائیگا؟ٹی ایل پی اورپی ٹی آئی کاایک موقف ہے ،اسکے اوپرڈیبیٹ ہوکرحتمی نتیجہ نکلنا چاہئے ۔حکومت کی طرف سے تحفظ ناموس رسالتﷺ کے معاملہ پردنیابھرمیں سٹینڈلیاجائیگا،بھرپورمہم چلائی جائیگی۔مذاکرات کامیاب ہوچکے ،آگے بہتری ہی بہتری نظرآئیگی۔رہنما پیپلزپارٹی قمرزمان کائرہ نے کہا حکومت کی طرف سے کسی اپوزیشن جماعت کوبلاکراعتمادمیں لیاگیانہ قراردادشیئرکی گئی،جب وزیراعظم اپنے خطاب میں کہہ چکے توپھراس قراردادکی کیا حیثیت؟کیاوہ صرف وزیراعظم کے فیصلوں پرمہرلگواناچاہتے ہیں؟ میرے اندازے کے مطابق فریقین نے اپناایک راستہ نکالاکہ ایک قراردادلادیں،یہ دونوں طرف کیلئے فیس سیونگ ہے ،اگرکسی نے توہین رسالت کی ہے تواس کافیصلہ حکومت پاکستان کے ذمے میں ہوناچاہئے ،اسکافورم پارلیمان ہوناچاہئے سڑکیں نہیں۔ماہرمعاشیات ڈاکٹرفرخ سلیم نے کہا پاکستانی معیشت اورخزانہ چلاننا کسی دکان یاکھوکھے چلانے جیسانہیں ،اس کیلئے ٹیم تشکیل دینا پڑتی ہے ،ٹیم منصوبہ بندی کرتی اورمنصوبہ بندی پرعمل ہوتا،تب جاکرنتائج سامنے آتے ہیں،آئی ایم ایف کیساتھ معاہدے کے مطابق 900ارب کا اضافی بوجھ بجلی بلوں کی مدمیں سامنے آئیگا،جس کامطلب ہرپاکستانی پر 35ہزارروپیہ کا بجلی کااضافی بوجھ پڑے گا۔وزیراعظم نے فرانسیسی سفیرکونکالنے کے حوالے سے جونقصانات اورخدشات بیان کئے وہ سوفیصددرست ہیں،حکومت کی فیصلہ سازی کاطریقہ کارسمجھ نہیں آرہا،ایک وزیرایک وزارت نہیں چلارہاتودوسری میں کیسے کامیاب ہوگا۔معاون خصوصی برائے اوورسیز زلفی بخاری نے کہاہم نے بھی برطانیہ کوایک ریڈلسٹ میں ڈالاہوتھاپھراین سی اوسی نے فیصلہ کیاانکوہٹادیا،برطانیہ میں قرنطینہ کے حوالے سے پاکستانیوں کی مشکلات کامعاملہ برطانوی حکام کیساتھ اٹھایاہے ،اگرمجبوری نہیں توپاکستانی شہری برطانیہ کاسفرنہ کریں،اوورسیزپاکستانیوں کوووٹ کاحق دینے کا پراسیس 2023کے الیکشن تک مکمل ہوجائیگا،جہانگیرترین گروپ کے ایم پی ایزاورایم این ایز کیساتھ ملنے کاتووزیراعظم نے تین چاردن پہلے ہی کہہ دیاتھا۔