اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر، نیوزایجنسیاں ) وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) سیاسی منافقت کا شکار ہے ، یہ بوکھلاہٹ اور افراتفری کے عالم میں ہیں، انہیں کچھ سمجھ نہیں آ رہا کیا کہیں اور کیا نہ کہیں۔ایک طرف کہتے ہیں وزیراعظم کی حیثیت کیا ہے ؟ دوسری طرف واویلا مچارہے ہیں سب کچھ عمران خان کرا رہے ہیں۔ تضادات سے بھر پور دعووں والی جماعت کا بیانیہ پنکچر ہو چکا ہے ۔بیگم صفدر صاحبہ!آپ اور آپ کی جماعت کی تاریخ سمجھوتوں سے عبارت ہے ،وہ سمجھوتے چاہے ذاتی ہوں یا سیاسی ہوں ۔اپنے بیان میں فردوس عاشق اعوان نے کہا تاریخی سمجھوتوں کا شکار خاندان کس منہ سے اصولوں کی بات کرتا ہے ،مسلم لیگ ن کبھی عوام کی جماعت نہیں رہی،مزاحمت اور اصول پسندی آپ کے خمیر میں ہی نہیں۔ آپ حکومت میں ہو ں تو لوگوں کے گلے پکڑتے ہیں اور اقتدار سے باہر ہوں تو پائوں پڑ جاتے ہیں۔ ایک انٹرویو میں فردوس عاشق اعوان نے کہا ایک حکومت کا بیانیہ اور دوسرا اپوزیشن کا ہے ، اپوزیشن نے ملکی خزانے کو نقصان پہنچایا ہے ، احتجاج کرنا اپوزیشن کا حق ہے اور ہم اس حق کو تسلیم کرتے ہیں۔ ملک میں ادارے آزاد ہیں، عمران خان ڈی چوک پر قانون کی حکمرانی اور اداروں کی مضبوطی کیلئے نکلے تھے ، چاہتے ہیں ملک میں ادارے مضبوط اور قانون کی حکمرانی ہو۔ پہلی مرتبہ طاقتور لوگ احتساب کے شکنجے میں آئے ہیں ۔انہوں نے کہاحقیقی عوامی وزیر اعظم کی کمرشل فلائٹ سے امریکہ روانگی مغلیہ طرز حکمرانی والوں کیلئے ایک مثال ہے ۔ وزیراعظم دورہ سے متعلقہ لوگوں کا مختصر وفد ساتھ لیکر امریکہ جا رہے ہیں۔ اپنے ٹویٹس میں انہوں نے کہاکمرشل فلائٹ سے عوامی وزیر اعظم کی روانگی مغلیہ طرز حکمرانی والوں کیلئے ایک مثال ہے ، وہ اس اہم دورے میں پاکستان اور اس کے عوام کی نگہبانی کا فرض اداکرنے جارہے ہیں۔ ظل سبحانی راجکماری اور کرپشن کے ولی عہد سمیت درباریوں کا جہاز بھر کر دوروں پر جاتے تھے لیکن وزیر اعظم عمران خان مختصر وفد کے ساتھ امریکہ جارہے ہیں، یہ ہوتا ہے قیادتوں اور ان کی سوچ کا فرق۔ عمران خان نے قانون کی حکمرانی کو یقینی بنا کر قوم سے کیا گیاوعدہ پورا کیا اور لوٹے مال کی واپسی کے خواب کوعملی جامہ پہنایا ۔پاکستان کی تاریخ میں یہ انہونی پہلی بار ہونے جارہی ہے کہ قوم کا لوٹا ہوامال واپس ہورہا ہے ۔قانون کی عملداری رنگ دکھا رہی ہے اور چوروں کے 100دنوں کے بعد شاہ کا ایک دن آن پہنچا ہے ۔