لاہور(کامرس رپورٹر)ن لیگ نے حمزہ شہباز کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین نہ بنانے پر3قائمہ کمیٹیوں کے سربراہوں کے چناؤ کیلئے ہونے والے اجلاسوں کا بائیکاٹ کر دیا جس کی وجہ سے انتخاب ملتوی کر دیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے اراکین نے قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کو پبلک اکائونٹس کمیٹی ون کا چیئرمین نہ بنانے پر گزشتہ روز قائمہ کمیٹی برائے داخلہ، پراسیکیوشن اور ریو نیو کے سربراہوں کے چناؤکے لئے ہونے والے اجلاسوں کا بائیکاٹ کر دیا ۔ مسلم لیگ (ن)نے کہا ہے کہ جب تک حمزہ شہباز کو پی اے سی ون کا چیئرمین نہیں بنایا جائے گا باقی ماندہ قائمہ کمیٹیوں کے سربراہوں کے لئے ہونے والے اجلاسوں میں شرکت نہیں کریں گے ۔اس موقع پر میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے صوبائی وزیر قانون وبلدیات بشارت راجہ نے کہا کہ حکومت کے پنجاب اسمبلی میں قائمہ کمیٹیوں کی تقسیم پر اپوزیشن کے ساتھ معاملات طے شدہ ہیں، طے شدہ فارمولہ کے مطابق 19قائمہ کمیٹیوں کی سربراہی اپوزیشن اور 21قائمہ کمیٹیوں کی حکومت کو ملنی ہے ، اب جو قائمہ کمیٹیاں حکومت کے حصے میں آئی ہیں ان کے معاملات میں اپوزیشن جان بوجھ کر رکاوٹیں ڈال کر اصولوں کی خلاف ورزی کر رہی ہے جبکہ حکومت قائمہ کمیٹیوں کے طے شدہ فارمولے پراب بھی قائم ہے ، پی اے سی ون کا معاملہ بھی وقت آنے پر حل کر لیں گے ۔ذرائع کے مطابق بشارت راجہ نے آج حکومتی اراکین کو کورم پورارکھنے کی ہدایت کردی۔