لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پیپلزپارٹی کے رہنما چودھری اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ دھرنے کے حوالے سے ن لیگ اور پی پی نے ابھی تک حتمی فیصلہ نہیں کیا ۔انہوں نے کہا رہبر کمیٹی کے فیصلے نے سپریم باڈی میں جانا ہے لیکن میں حیران ہوں کہ فضل الرحمان جس نے 2 فیصدووٹ لئے ہیں وہ کہتے ہیں کہ تن تنہا سب کچھ نظام کو لپیٹ دیں گے ،92نیوز کے پروگرام ہو کیا رہا ہے میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا دھرناکو مذہبی رنگ دیئے جانے کا امکان ہے سنا ہے کہ جے یوا ٓئی نے مذہبی بنیاد پر ترانے بنائے ہیں ہم کوئی اسلام سے بھاگ نہیں رہے ،اگر سسٹم چلا جاتا ہے تو ہمارے لیڈر جو قید میں ہیں انہیں ملنے والا موجودہ انصاف بھی نہیں ملے گا ہم نہیں چاہتے کہ سارا نظام ہی چلا جائے ،شہبازشریف سمجھتے ہیں کہ دھرنے سے سارے سسٹم کو نقصان پہنچ سکتا ہے ، میں یہ سمجھتاہوں کہ اقامہ پانامہ سے زیادہ سنگین جرم ہے ،مسلم لیگ ن نے ہمیشہ دھوکہ دیا سی او ڈی کیا لیکن میموگیٹ میں خود وکیل بن کرعدالت گئے ۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ شریف برادران نے آصف زرداری سے اینٹ سے اینٹ والا بیان دلوایا اور خود پیچھے ہٹ گئے اس لئے میں تو بلاول بھٹو اور پی پی کو شریف برادران سے محتاط رہنے کا مشورہ دیتاہوں،میر ی نگاہ میں اقوام متحدہ میں عمران خان کی تقریر بہت اچھی تھی دوسرا انہوں نے کرتار پورراہداری کھول کر بہت اچھا کیایہ کریڈٹ ان کو جاتاہے ،میرے خیال میں عثمان بزدار کی حلف برداری کے بعد عمران خان سے ملاقات ہوئی اس سے پہلے عمران خان ان کو جانتے بھی نہیں تھے ، اس وقت سے سب سے زیادہ سیاسی کامیابی بلاول بھٹو نے حاصل کی ہے جبکہ مریم نواز کچھ دبائو میں ہیں،جی ٹی روڈ کی سیاست سے نوازشریف کی سیاست زندہ ہوئی لیکن جب دونوں باپ بیٹی جب خاموش ہوگئے تو پھر عوام میں شکوک شبہات پیداہوئے ۔