اسلام آباد(آن لائن )وفاقی وزیر منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات مخدوم خسرو بختیار سے چینی بزنس اور سرمایہ کاروں کے وفد نے گزشتہ روز ملاقات کی جس میں دوطرفہ تجارت اور سرمایہ کاری سے متعلق اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ ملاقات کے دوران چینی بزنس وفد نے پاکستان میں مختلف شعبوں میں پہلے مرحلے میں تقریباً ایک ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری کی خواہش کا اظہار کیا۔اجلاس میں پراجیکٹ ڈائریکٹر سی پیک حسان داؤد اور وزارت کے اعلی حکام نے بھی شرکت کی ۔اس موقع پر وفاقی وزیر خسرو بختیار نے کہا کہ پاکستان اور چین کے سرمایہ کار مشترکہ منصوبے شروع کر کے باہمی صنعتی تعاون کو مزید فروغ دے سکتے ہیں اور موجودہ حکومت چین کے تعاون سے سپیشل اکنامک زونز کی جلد تکمیل کیلئے کوشاں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے بیرونی سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے سرمایہ کار دوست پالیسیاں متعارف کرائی ہیں۔سپیشل اکنامک زونز سے پاکستان کی صنعتی ترقی کو نئی جہت ملے گی،سپیشل اکنامک زونز سے روزگار کے مواقع، ٹیکنالوجی کی منتقلی اور مقامی صنعتوں کی ترقی اور اقتصادی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا۔ خسرو بختیارنے کہا کہ سی پیک اب دوسرے مرحلے میں داخل ہو رہا ہے جس میں بزنس ٹو بزنس تعاون، گوادر کی ترقی، سماجی و معاشی ترقی، صنعتی اور زرعی تعاون پر فوکس کیا جائے گا۔