لاہور (فورم رپورٹ : رانا محمد عظیم ، محمد فاروق جوہری )کرتار پور راہداری کے کھلنے سے پوری دنیا میں یہ پیغام گیا ہے کہ پاکستان اقلیتوں کا کتنا احترام کرتا ہے ، سکھ کمیونٹی کو کرتار پور میں مخصوص جگہ دی جا رہی ہے ، بھارت سے آ نے والے سکھ اس کمپاونڈ سے باہر نہیں نکل سکیں گے ، بیرون ممالک میں مودی کے خلاف احتجاج ہوئے ، اس میں پاکستانی کمیونٹی کے ساتھ سکھوں نے بھی بھرپور احتجاج کیا ، یہ پاکستان کی بڑی سفارتی کامیابی ہے ، ان خیالا ت کا اظہار خارجہ امور اور دفاعی امور کے ماہرین نے روزنامہ92نیوز فورم سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ، سابق سیکرٹری خارجہ شمشاد احمد خان نے کہا پاکستان نے کرتار پور راہداری کو کھول کر بہت اچھا اقدام کیا ، پاکستان کی جانب سے دنیا بھر میں بہت اچھا تاثر گیا، پاکستان کا امیج دنیا بھر میں بہت بہتر ہوا ، دنیا کو پتہ چل گیا پاکستان میں اقلیتوں کا کتنااحترام کیا جاتا ہے ، دوسری طرف بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ عیسائیوں اور سکھوں کے ساتھ بھی کتنا ظلم کیا جا رہا ہے ، موجودہ اقدام بہترین اقدام ہے اور بھارت اس اقدام کی وجہ سے بیک فٹ پر گیا ہے ، جنرل (ر)امجد شیعب نے کہا پاکستان نے کرتار پور راہدری کھول کر سمجھداری کا کام کیا ، اس اقدام سے دو تین ایشو پر پاکستان بہترین کھیلا ہے ، ایک تو سکھوں کے ساتھ ہماری گڈ ول قائم ہوئی ، ہم نے مذہبی رواداری کے ساتھ رستہ دیا ہے اس سے ہمارے کھلے ذہن کا اندازہ ہوتا ہے ، دنیا کو ایک پیغام گیا کہ ہم تنگ نظر نہیں ہیں ، دوسرا یہ اقدام اس طرح بھی ہمارے حق میں جائے گا کشمیریوں کے معاملے پر دنیا بھر میں سکھ کمیونٹی ہماری حمایت کر رہی ہے ، سکھوں کو کرتار پور میں جو جگہ دی جا رہی ہے وہ کنٹرولڈ جگہ ہے ، بھارت سے آ نے والے سکھ صرف ایک کمپاونڈ کے اندر ہی رہیں گے ۔ پاکستان نے نہ ہونے کے برابر فیس رکھی ہے ۔ جنرل (ر)محمد منشاء نے کہا پاکستان نے کرتار پور راہداری کھولی یہ بہت مثبت قدم ہے ، پاکستان نے دنیا بھر کو پیغام دیا ہم اقلیتوں کے حقوق کی عزت کرتے ہیں اور سکھوں کیلئے بھی بہت اچھا گڈ ول پیغام گیا ، سکھ کمیونٹی کینیڈا ، آ سٹریلیا اور یو کے میں بڑی تعداد میں اور اچھے عہدوں پر فائز ہیں ، یہ سکھ ہماری دنیا بھر میں آ واز بن جائیں گے ، بھارت سے آنیوالی سکھ برادری کیلئے فیس رکھی گئی ، اس سے ریونیو بھی ملے گا۔