ریلوے حکام نے حاضری لگا کر غائب ہونے اور اپنی مرضی سے ڈیوٹی پر آنے والے ملازمین کو وقت کا پابند بنانے کے لئے پلاننگ کر لی ہے حکام نے بائیو میٹرک سسٹم کی ناکامی کے بعد چہرہ شناسی سسٹم کا سلسلہ شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سرکاری دفاتر میں کام چوری بڑا المیہ ہے۔جن دفاتر میں ہزاروں کی تعداد میں ملازمین ہیں وہاں پر تو صبح حاضری لگا کر فیلڈ میں کام کا بہانہ بنا کر غائب ہونے کی روٹین عام ہے۔ سول سیکرٹریٹ میں اکثر ملازمین ایسا ہی کرتے ہیں حاضری لگا کر کوئی کسی محکمے میں چلا جاتا ہے تو کوئی مٹر گشت کرنا شروع کر دیتا ہے۔ گو حکومت نے اس کا توڑ کرنے کے لئے بائیو میٹرک حاضری کا سلسلہ شروع کیا تھا لیکن وہ بھی ناکام ہو چکا ہے۔ ریلوے حکام نے اس پریشانی کا یہ حل نکالا ہے کہ اب آئندہ ملازمین کی حاضری یقینی بنانے کے لئے چہرہ شناسی سسٹم لگایا جائے گا۔ اس سسٹم میںدھوکہ کے چانس نہ ہونے کے برابر ہیں۔ ملازمین اس کا توڑ بھی نکا لیں گے اس لئے ضروری ہے کہ اس کے ساتھ ایک حاضری رجسٹر رکھا جائے جس پر حاضری کے وقت بڑا افسر موجود ہو جب تک یہ دونوں کام نہیں ہونگے تب تک ملازمین کی حاضری میں سوفیصد جعل سازی روکنا مشکل ہو گا دیگر محکموں میں بھی یہ سلسلہ شروع کیا جائے تاکہ سرکاری ملازمین ایمانداری سے اپنے فرائض سرانجام دے سکیں۔