جھول(نامہ نگار) سندھ میں سانگھڑ کے قصبہ جھول اور نواح میں شدید گرمی اوربجلی کی طویل لوڈ شیڈنگ کے باعث 11 افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ، جھول ٹاؤن اورنواحی علاقوں میں گرمی کی شدت کے باعث متعدد افراد کی حالت غیر ہوگئی اورکئی بے ہوش ہوگئے ، گاؤں ولی محمد کیریو میں 65 سالہ ہاشم خاصخیلی،14سالہ اعجاز،50سالہ کرشنا کماری، دیہہ بوبی میں 40 سالہ مزدورساہڑ،25 سالہ البیلومیگھواڑ،یوسی صبغت اللہ شاہ میں 30سالہ رادھا کرشن،یوسی عباس آباد کے دیہہ لاکھا میں حاکم اورمنگل بھیل،کوٹری کا ٹیکسی ڈرائیورعرفان دم توڑگئے ،بجلی کے طویل بریک ڈاؤن نے عوام کی مشکلات بڑھادیں ، مچھروں اورمکھیوں کی بہتات سے بھی لوگ پریشان رہے ،شدید گرمی میں برف بھی نایاب رہی،آئس فیکٹری مالکان نے برف کی قیمت 250روپے فی 80 کلوگرام سے بڑھاکر800سے 850 روپے کردی،جس سے فیکٹری مالکان اورعوام میں جھڑپیں ہوتی رہیں، اس دوران 10 سے زائدافراد کے زخمی ہونیکی اطلاعات موصول ہوئیں۔