لاہور( کر ائم ر پو رٹر ) اربوں روپے سے لگا ئے جا نے والے سیف سٹی پراجیکٹ کے مین شاہراہوں پرلگا ئے جا نے والے کیمرے خراب ہو نے کے باعث جرائم پیشہ افراد نے کارروائیاں تیز کر دیں جبکہ چند شاہراہوں پر کام کر نے والے کیمروں کی مدد سے ڈکیتی،فائرنگ ، چوری اور ٹریفک حادثات سمیت مختلف سنگین جرائم کے واقعات کی 5سو سے زائد،ویڈیو ریکارڈنگز تفتیشی افسروں سمیت مختلف متعلقہ اداروں کو فراہم کی گئی ہیں جو ان پر کارروائیاں کر رہے ہیں تاہم اصل ملزمان کی گر فتاری عمل میں نہ آ سکی ہے ۔ذرائع کے مطا بق لاہور کے مختلف شاہراہوں پر اربوں روپے ما لیت سے لگا ئے جا نے والے سیف سٹی پراجیکٹ جدید ٹیکنالوجی کا شاہکار منصوبہ صرف مین شاہراہوں پر چل رہا ہے جس کی وجہ سے سیف سٹی کی جانب سے سول لائنز ڈویژن کو 162، سٹی ڈویژن کو 90،صدر ڈویژن کو 39،کینٹ ڈویژن کو 30،اقبال ٹاؤن ڈویژن کو 48،ماڈل ٹاؤن ڈویژن 109اور دیگر اداروں کو 90 ریکارڈنگز فراہم کی گئی ہیں۔