صوابی،اسلام آباد (نمائندہ 92 نیوز ،مانیٹرنگ ڈیسک،92 نیوز رپورٹ ) کار پر فائرنگ سے جج بیوی ،بیٹی، نواسے سمیت جاں بحق ہو گئے ۔ تفصیلات کے مطابق پشاور اسلام آباد موٹر وے پر صوابی انبار انٹر چینج کے قریب گاڑی پر نامعلوم افراد کی فائرنگ سے انسداد دہشت گردی عدالت سوات کے جج آفتاب آفریدی ، بیوی ، بیٹی اور نواسے سمیت جاں بحق، گن مین اور ڈرائیور شدید زخمی ہو گئے ۔ چھوٹا لاہور پولیس کی رپورٹ کے مطابق آفتاب آفریدی اتوار کی شام اپنے خاندان کے ہمراہ گاڑی میں پشاور سے اسلام آباد جارہے تھے جب ان کی گاڑی صوابی انبار انٹرچینج کے قریب دریائے سندھ کے پل پر پہنچی تو ملزموں نے اندھا دھند فائرنگ شروع کی جس کے نتیجے میں آفتاب آفریدی، ان کی اہلیہ زینب ،بیٹی کرن زوجہ عبدالواحد اور نواسہ سنان ولد عبدالواجد موقع پر جاں بحق ہو گئے جبکہ فائرنگ سے اے ٹی سی جج کا ڈرائیور ذاکر اور گن مین دائود شدید زخمی ہو گئے ،انسداد دہشت گردی عدالت کے جج آفتاب آفریدی کے قتل کا مقدمہ ان کے بیٹے کی مدعیت میں تھانہ چھوٹا لاہور میں درج کرلیا گیا ۔مقدمے میں عبداللطیف، جمیل دانش آفریدی، جمال آفریدی اورعابد محمد شفیق کے علاوہ چار نامعلوم افراد کو نامزد کیا گیا۔ دریں اثنا وزیراعظم عمران خان نے صوابی میں انسداددہشتگردی کی عدالت کے جج آفتاب آفریدی کے قتل کی شدیدمذمت کی،اپنی ٹویٹ میں ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ جج آفتاب آفریدی اوراہلخانہ کے قاتلوں کو جلد گرفتار کیا جائیگا، ملوث افرادکو قانون کے مطابق سخت سزادی جائے گی۔