مکر می!عید تو ہر سا ل ہی آتی ہے مگر اس با ر کی عید پہلے کی تما م عیدوں سے بالکل مختلف ہے کیو نکہ اس سال حا لات نا رمل نہیں ہیں۔ کو رونا و ائر س نے پو ری دنیا میں تبا ہی مچا ر کھی ہے اور پا کستا ن میں بھی کورونا و ائر س سے کافی نقصان ہو ا ہے۔اس لئے ہمیں بہت ا حتیا ط سے کام لینا ہو گا ۔ہر سا ل ہم عید پر کا فی شاپنگ کرتے ہیں ڈھیروں ڈھیر کپڑ ے بھی خر یدتے ہیں مگر اس سال ہمیں اپنے لئے نہیں بلکہ دوسروں کے لئے عید سا د گی سے گز ارنا ہو گی۔ کیا ہم نے کبھی ان غر یب ا فر اد کے با رے میں سو چا ہے جو بچارے اپنی خو داری کے سبب کسی کے سا منے ہاتھ تک نہیں پھیلا تے ہیں اور اپنی محنت مزدوری کر کے بڑ ی مشکل سے گز ارا کر تے ہیں ایسے لوگوں کا ہم پر حق ہے کہ ہم انکی مدد کر یں۔اس سا ل ہمیں چا ہیے کہ عید کی شا پنگ کر نے کی بجائے اپنے ار دگر د ر ہنے و الے غر یب اور مستحق افر اد کی مد د کر یں ان کو ر اشن دیں نئے کپڑے خرید کر دیںتا کہ ان لو گو ں کے کم از کم کچھ مسائل تو کم ہو پائیں ۔ (فر حا ن ایو ب ۔ لا ہور)