مکرمی ! مزدور کی اُجرت سے زیادہ اخراجات اور اُس تنخواہ میں اُن کے اہل و عیال بمشکل گزر بسر کر سکتے ہیں۔سکول کی فیس ،ادویات تو دور کی بات، بنیادی ضروریات پوری نہیں ہو پاتیں۔ظُلم و سِتم سے تنگ آکر بہت سے مزدور خود کشی کر لیتے ہیں۔اور اُن کے اہل خانہ سِسک سِسک کر زندگی گزارتے ہیں۔ ہمیں وزیر اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان عمران خان صاحب سے ایسی توقعات ہیں کہ بجٹ فری ٹیکس میں غریبوں اور مستحق حقداروں کی رہنمائی پر بلا سود قرضے،ہیلتھ صحت کارڈ ،راشن کارڈ،کسانوں کو ریلیف اور پسماندہ علاقوں میں نیا پاکستان ہاوسنگ سکیم اور اعلیٰ تعلیم کے نوجوانوں کے لیے نو کریاں میرٹ پر، اور مزدور کی اُجرت پر گریڈ ایک سے لے کر سولہ گریڈ تک دس فیصد اضافہ غریبوں کو راشن کا اجرا، معذوروں کو وہیل چیئرکی تقسیم سے لگتا ہے کہ ملک پاکستان کے وزیراعظم عمران خان صاحب خیر خواہ ہونگے۔ (محمد الیاس ڈار، بدوملہی تحصیل و ضلع،نارووال)