غزہ ،بیجنگ(صباح نیوز،این این آئی) اسرائیلی طیاروں نے غزہ میں بمباری کی جس سے متعدد عمارتیں تباہ ہوگئیں،چین اور سلوینیا نے فلسطین میں یہودی آبادکاری کی مذمت کی ہے ۔ فلسطینی حکام کے مطابق جنگی طیاروں نے شمالی غزہ کے مشرقی جبالیا میں متعدد میزائل داغے ، غیرمعمولی دھماکے بھی تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا دوسری جانب اسرائیل نے دعوی ٰ کیا ہے کہ غزہ سے داغے گئے 2راکٹ آئرن ڈون نے فضا ہی میں تباہ کردیئے ۔ایک رپور ٹ میں کہا گیا ہے کہ نومبر میں صہیونیوں کے ہاتھوں انسانی حقوق کی 2149 پامالیاں ، فلسطینیوں کے 24 مکان مسمار، حملوں میں 261 فلسطینی زخمی ہوئے ،یہودی آباد کاروں نے 321 شہریوں کو حراست میں لیا ۔چین کے خصوصی ایلچی چائی گیون نے فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی ریاست کی توسیع پسندی اور یہودی بستیوں کی تعمیرو توسیع کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دریائے اردن کے مغربی کنارے بالخصوص تاریخی شہر الخلیل میں یہودی بستیوں کے تعمیر کا اسرائیلی منصوبہ انتہائی خطرناک اور عالمی معاہدوں کی توہین ہے ، امریکی تکبر نے مشرق وسطیٰ میں امن تباہ کیا ہے ،امریکہ بین الاقوامی تعلقات کو تباہ کرنے اور عالمی انصاف پر ظلم کے فیصلے مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے ۔مائیک پومپیو کا فلسطین میں یہودی آباد کاری کی حمایت میں بیان بین الاقوامی معاہدوں اور عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے ۔یورپی ملک سلوینیا کے وزیر خارجہ میروسلائو سیرار نے بھی فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی ریاست کی انتقامی اور جارحانہ سرگرمیوں کی شدید مذمت کی ۔فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس نے کہا ہے کہ غزہ میں امریکی ہسپتال کا منصوبہ کامیاب نہیں ہونے دینگے ۔