لاہور(نامہ نگارخصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے بنکوں کے قرضوں کی ریکوری سے متعلق دائر درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔سینئر ترین جج جسٹس مامون رشید شیخ کی سربراہی میں پانچ رکنی بنچ نے عمران خان، شعیب ارشد سمیت دیگر کی درخواستوں پر سماعت کی۔ درخواست گزاروں کے وکیل شاہد اکرام صدیقی نے گزشتہ روز دلائل مکمل کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ تین سال سے وفاقی حکومت نے مرکزی کیس میں جواب داخل نہیں کرایا ۔رولز میں ترمیم کرکے چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس کو جج کے اختیارات دیدئیے گئے ۔عدالتی حکم امتناعی سے ریکوری متاثر نہیں ہو رہی۔قرض خواہوں کے خلاف بینک صرف بینکنگ عدالت کے پاس شکایت کرسکتا ہے ۔ادھر لاہورہائیکورٹ کے جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں دورکنی بینچ نے سمبڑیال میں صحافی ذیشان کے قتل کیس میں دہشت گردی کی دفعات ختم کرنے کے خلاف درخواست پر مقدمے کا ریکارڈ طلب کرلیا۔