لاہور(جنرل رپورٹر،کرائم رپورٹر)سول سیکرٹریٹ کے باہر محکمہ پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیر کے کنٹریکٹ ملازمین کا دھرنا دوسرے روز بھی جاری رہا جبکہ مختلف ہسپتالوں کے ڈاکٹرز، پیرامیڈیکل سٹاف بھی اپنے مطالبات کیلئے سڑکوں پر نکل آئے ۔احتجاج کے باعث سول سیکرٹریٹ چوک سمیت شہر کی مختلف شاہراہوں پر ٹریفک جام ہوگیا۔سیکرٹریٹ کے باہر مظاہر ے میں شریک 3خواتین بے ہوش ہو گئیں جن کو فوری طبی امداد کے بعد میو ہسپتال شفٹ کیا گیا ۔ مظاہرین کا کہناہے کہ مستقل کرنے کے مطالبہ پر ہر بار تسلیاں دی جاتی ہیں، مگر اب مطالبات پورے ہونے تک دھرنا جاری رہے گا۔ادھر ٹریفک پولیس کی اضافی نفری ٹریفک کا نظام بحال کرانے کے لئے تعینات کی گئی۔ جنرل ہسپتال کے باہر گرینڈ ہیلتھ الائنس کا احتجاج ہوا۔ ینگ ڈاکٹرز نے فیروزپور روڈ کو ٹریفک کیلئے بند کردیا۔ فیروزپور روڈ پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔ جناح ہسپتال میں گرینڈ ہیلتھ الائنس نے او پی ڈی بند اورکینال روڈ بلاک کردی جس سے ٹریفک کا نظام متاثر ہو کر رہ گیا۔