نیویارک ( ندیم منظور سلہری سے ) وزیراعظم عمران خان کی جانب سے گزشتہ دنوں نریندر مودی کے حق میں بیان کے بعد چین نے بھی نریندر مودی کو اپنا بہترین دوست قرار دیا ہے ۔ چین کے سرکاری اخبار گلوبل ٹائمز نے اپنے ادارئیے میں لکھا کہ بھارت میں جس پارٹی کی بھی سرکار بنے چین اسکے ساتھ اپنے بہترین مراسم قائم رکھے گا۔ نریندر مودی نے اپنے گزشتہ سالوں میں چین کے ساتھ بہترین تعلقات قائم کرنے کا کوئی بھی موقع ہاتھ سے ضائع نہیں ہونے دیا۔ یہی وجہ ہے مودی اپنے اس مثالی کردار کی وجہ سے نہرو سے بھی آگے نکل گئے ۔ تمام اُتار چڑھاؤ کے باوجود بیجنگ اور نئی دہلی کے رشتوں میں گزشتہ پانچ سال میں زبردست پیشرفت ہوئی ہے ۔ مودی کی انہی کوششوں کی وجہ سے 2014ء میں دونوں ممالک نے 70 ارب ڈالر تجارت کی لیکن 2018ء کے اختتام پر اس کا حجم 95.54 ارب ڈالر تک پہنچ گیا ۔امریکی اور بھارتی ماہرین کا کہنا ہے کہ پاک چین لیڈرشپ کی جانب سے نریندر مودی اور ان کی پارٹی کیلئے خیر سگالی جذبات نے بھارت کے اندر ایک نئی سیاسی بحث چھیڑ دی ہے ۔ بھارتی اپوزیشن جماعتیں بی جے پی قیادت کو آڑے ہاتھوں لے رہی ہیں ۔کانگریس کا کہنا ہے پاکستان اور چین کی جانب سے بی جے پی کے حق میں بیانات سے ثابت ہو گیا کہ اندرون خانہ مودی پاکستان اور چین سے ملے ہوئے ہیں۔