لاہور، گوجرانوالہ، اسلام آباد(سٹاف رپورٹر،این این آئی) کالعدم جماعۃ الدعوۃ کے نائب امیر اور سربراہ حافظ سعید کے برادر نسبتی مولانا عبد الرحمٰن مکی کو گوجرانوالہ سے گرفتار کرکے جیل منتقل کردیاگیا جبکہ جماعۃالدعوۃ کے ترجمان یحییٰ مجاہد اورملی یکجہتی کونسل کے رہنمائوں نے عبدالرحمٰن مکی کی گرفتاری پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت بھارت سرکار اور دیگر بیرونی قوتوں کی خوشنودی کیلئے بزدلانہ اقدامات کر رہی ہے ۔ تفصیل کے مطابق کالعدم جماعۃ الدعو ۃکے سربراہ حافظ سعید کے برادر نسبتی عبدالرحمٰن مکی کو گوجرانوالہ سے گرفتار کرلیا گیا ۔وزارت داخلہ کے مطابق عبدالرحمٰن مکی کی گرفتاری کالعدم تنظیموں کے خلاف جاری کریک ڈا ئون کے سلسلے میں کی گئی جب کہ انہیں اشتعال انگیز تقریریں اور نقص امن عامہ کے تحت گرفتار کیا گیا ہے ۔وزارت داخلہ کے مطابق مولانا عبد الرحمٰن نے کا لعدم تنظیموں کیخلاف جاری کریک ڈا ئون پر گوجرانوالہ میں اشتعال انگیز تقریر کی تھی اور انہوں نے عوام سے اپنی تنظیم فلاح انسانیت کے نام پر چندے کی اپیل کی۔وزارت داخلہ کے مطابق مولانا عبدالرحمٰن مکی نے ایف اے ٹی ایف کے اقدامات کو بھی کڑی تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ عبدالرحمٰن مکی کالعدم جماعۃ الدعو ۃ کے سیاسی اور خارجہ امور کے نگران بھی مقرر ہیں۔ ترجمان جماعۃالدعوۃ یحییٰ مجاہد نے اپنے بیان میں مزید کہاکہ حافظ عبدالرحمٰن مکی پر اشتعال انگیز تقریریں کرنیکا الزام سراسر جھوٹ پر مبنی ہے ۔ ایف اے ٹی ایف اجلاس کے موقع پر بیرونی آقائوں کو خوش کرنے کیلئے انکی گرفتاری کا تحفہ پیش کیا گیا۔ انتہائی افسوسناک ہے کہ جب بھی بھارت اور دیگر ملکوں کا دبائو بڑھتا ہے تو کبھی جماعۃالدعوۃ پر پابندی لگاکر اثاثے قبضے میں لئے جاتے ہیں تو کبھی گرفتاریاں کی جاتی ہیں۔ علاوہ ازیں ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی قائدین ابوالخیر زبیر، سراج الحق، علامہ ساجد نقوی، لیاقت بلوچ، پیر ہارون گیلانی، یعقوب شیخ، خواجہ معین الدین کوریجہ، علامہ عارف واحدی، علامہ ثاقب اکبرودیگر نے مشترکہ بیان میں عبدالرحمٰن مکی کی گرفتاری پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ جید علماء کرام کی گرفتاریاں اور محب وطن جماعتوں پر پابندیاں بھارت وامریکہ کی خوشنودی کیلئے لگائی جارہی ہیں۔