کراچی(سٹاف رپورٹر ،مانیٹرنگ ڈیسک ) چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ انتخابی اصلاحات ضروری لیکن حکومتی موقف کو کوئی سنجیدہ نہیں لیتا ۔بلاول ہاؤس کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ الیکشن اصلاحات وقت کی ضرورت ہے ، الیکشن میں دھاندلی ختم کرنے کیلئے قانون سازی کی بھی ضرورت ہے جو بھی انتخابی اصلاحات لانی ہیں ان کیلئے تیار ہیں، (ن) لیگ نے ایک سیٹ ہاری ہے تو چاہ رہی ہے فوج مداخلت کرے ،(ن) لیگ کی طرف سے غیر ذمے دارانہ مطالبہ ہے کہ پولنگ باکسز فوج کے حوالے کئے جائیں، اس سے الیکشنز بھی متنازع ہوتے ہیں اور فوج بھی متنازع ہوتی ہے ، البتہ (ن) لیگ کے پاس اگر کوئی ٹھوس ثبوت ہیں توالیکشن کمیشن سے رجوع کرے ، اسٹیبلشمنٹ کو انتخابی عمل سے دور رکھیں تو فائدہ ہو گا،انتخابی اصلاحات کا بنیاد ی کام اسٹیبلشمنٹ کا الیکشن میں کردار ختم کرنا ہے ،انتخابی اصلاحات کے لیے الیکشن کمیشن کردارادا کرے ،دھاندلی کرنے والے انتخابی اصلاحات اوردھاندلی روکنے کے لیے کچھ نہیں کرسکتے ،انتخابات میں دھاندلی روکنا اہم مسئلہ ہے ،حکومت کاموقف کوئی سنجیدہ نہیں لیتا،جب تک اسٹیبلشمنٹ انتخابات میں مداخلت کرتی رہے گی شفاف انتخابات کا انعقاد ممکن نہیں ہے ، فضل الرحمنٰ سے ہمارا کوئی رابطہ نہیں ، ن لیگ کے پاس این اے 249 میں دھاندلی کا ثبوت ہے تو وہ سامنے لائیں، الیکشن کمیشن فیصلہ کرے گی ، ای او بی آئی کا ورکرز فنڈز فوری طور سندھ کو دیا جائے تاکہ سندھ پھرسے فلاحی کام کرسکے ، بینظیرانکم سپورٹ پروگرام کیلئے خواتین کیلئے انقلابی قدم کا آغازہواتھا، مزدوروں کو صحت اور تعلیم کی سہولت فراہم کر رہے ہیں ۔ قبل ازیں بلاول بھٹو سے مزدور رہنماؤں نے ملاقات کی جس میں مزدور رہنماؤں نے ملک میں موجودہ مہنگائی کے تناظر میں مزدوروں کے حالات پر بریفنگ دی۔