اسلام آباد (آن لائن)سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر نے مختلف مذاہب کیخلاف غیر اخلاقی زبان استعمال کرنے پر پابندی لگا دی جس کا اطلاق بعد ازاں نسل پرستی اور صنفی امتیاز کیخلاف بھی کیا جائے گا۔کمپنی نے اعلان کیا سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر کسی بھی مذہب کیخلاف ٹوئٹ کرنے کی اجازت نہیں دی جائیگی اوراس پابندی کے بعد دنیا میں کسی بھی مذہبی گروہ یا فرد واحد کو مذہب کی بنیاد پر تضحیک کا نشانہ بنانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ٹوئٹر نے ویب سائٹ پر اپنے صارفین سے سوال کیا تھا کہ نفرت انگیز مواد کیخلاف پالیسی میں مزید بہتری کیسے لائی جائے ؟،جس کے جواب میں ہزاروں افراد نے اپنے رائے کا اظہار کیا جن کو مد نظر رکھتی ہوئے نئی پالیسی ترتیب دی گئی ہے ،ٹوئٹر کی اس حکمت عملی کو سراہا جارہا ہے ۔