وزیر اعظم عمران خان نے ایک اجلاس کے دوران، جس میں آرمی چیف نے بھی شرکت کی، پاکستان میں سائوتھ ایشین گیمز کے انعقاد کا گرین سگنل دے دیا ہے۔ وزیر اعظم نے سائوتھ ایشین گیمز سے متعلق ایک سٹیئرنگ کمیٹی بنانے کی بھی ہدایت کی ہے۔ پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال اس وقت بہترین ہیں، کسی ملک کے لیے بھی پاکستان میں آ کر کھیلنے میں بظاہرکوئی مسئلہ نہیںہے ،پاکستان پہلے بھی غیر ملکی کھلاڑیوں اور آفیشلز کو سکیورٹی فراہم کرتا رہا ہے۔ سائوتھ ایشین گیمز کا انعقاد پاکستان کے لیے بہت بڑا اعزاز ہو گا۔ اس سے نہ صرف اتھلیٹکس،کبڈی، ہاکی، ،فٹ بال ،بیڈمنٹن، ٹینس، تیراکی، ویٹ لفٹنگ سمیت علاقائی اور دیگر کھیلوں کو فروغ ملے گا بلکہ اس سے جنوبی ایشیائی ممالک سے پاکستان کے تعلقات مزید مضبوط ہوں گے اور سرمایہ کاری کو بھی فروغ ملے گا۔ ہاکی پاکستان کا قومی کھیل ہے لیکن آج وہ جس تنزلی کا شکار ہے اس کے لیے ضروری ہے کہ ملکی و غیر ملکی سطح پر اس کے مقابلوں کا انعقاد تسلسل کے ساتھ کرایا جائے، بلا شبہ کرکٹ کا کھیل بھی ہمارے قومی وقار کی علامت ہے لیکن سارا زور کرکٹ میچوں پر لگانے کے بجائے دوسری کھیلوں کے مقابلوں کا بھی انعقاد کیا جائے ،اس سلسلہ میں سا ئو تھ ایشین گیمز اہم کردار ادا کر سکتی ہیں۔ پاکستان میں جنوبی ایشیائی کھیلوں کی کامیابی کے لئے ضروری ہے کہ پاکستان میں عالمی سطح کے گرا ئونڈز سمیت کھیلوں کے انفرا سٹرکچر کو بہتر بنایا جائے اور تمام بین الصوبائی ادارے اس سلسلہ میں ایک دوسرے سے تعاون کریں۔