لاہور ( انٹر ویو : رانا محمد عظیم، محمد فاروق جوہری) پاکستان اور سعودی عرب کا رشتہ صرف لازوال ہے اور دونوں ایک دوسرے کی دکھ اور درد میں بھرپور ساتھ دیتے ہیں ۔ پاکستان میں خدا نخواستہ کوئی آفت آئے اسے سعودی عرب اپنی تکلیف سمجھتا ہے اور اس دکھ کی گھڑی میں ہمیشہ سعودی عرب پاکستان کے ساتھ رہا ہے ۔ سعودی شاہ اور سعودی ولی عہد کی خصوصی ہدایت پر پاکستان کے اندر مختلف شہروں میں مستحق افراد کیلئے ہاؤسنگ پراجیکٹ شروع کر دیئے گئے ہیں جبکہ اس سے پہلے کئی ہسپتال رفاعی ادارے پاکستان کے اندر سعودی حکومت کی زیرسر پرستی چل رہے ہیں ۔ پاکستان میں ہونے والی ہر دہشت گردی کی مذمت کرتے ہیں دہشت گرد کسی بھی جگہ ہو اس کے خلاف بھرپور کردار ادا کریں گے موجودہ سعودی حکمران قیادت نے امت مسلمہ کو ایک جگہ اکٹھا کر لیا ہے اور اب بہت جلد موجودہ سعودی حکمران ایسے تمام اسلامی ممالک جو مالی طور پر کمزور ہیں ان کی مدد کے ساتھ ساتھ ان کی ہر حوالے سے سپورٹ کریں گے ۔ جس طرح سعودی عرب سے کرپشن کا خاتمہ ہوا ہے اور سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے سخت احتساب کا عمل شروع کیا آج پوری دنیا کی طرح پاکستان میں بھی اس کو سراہا اور اس جیسے احتساب کرنے کی باتیں کی جا رہی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان میں سعودی عرب کے سفیر نواف بن سعید المالکی نے روزنامہ 92 سے خصوصی انٹرویو میں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی معیشت کو بہتر کرنے میں سعودی عرب اپنا پورا کردار ادا کر رہا ہے اور سعودی ولی عہدمحمد بن سلمان نے اسی وجہ سے دورہ پاکستان میں نہ صرف بڑے منصوبوں کے معاہدے کئے بلکہ پاکستان کی معیشت کو بہتر کرنے کیلئے وعدوں سے بھی بڑھ کر مدد کی۔ سعودی سفیر نے گفتگو کرتے ہوئے کیا کہ اس مرتبہ عمرہ اور حج کے موقع پر سعودی ولی عہد کی خصوصی ہدایت پر عازمین حج اور عمرہ کیلئے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں جبکہ ای ویزہ کی سہولت دینے سے زائرین عمرہ انتہائی خوش ہیں اور ہزاروں کی تعداد میں روزانہ شکریہ کی میلز آ رہی ہیں ۔ روزنامہ 92 اخبار اور ٹی وی کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ بہترین میڈیا گروپ ہے اور جس طرح سعودی عرب اور حرمین شریفین کیلئے اس میڈیا گروپ نے اپنا کردار ادا کیا، وہ قابل تحسین ہے ۔