اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر،وقائع نگار)مشیرخزانہ ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ اورمشیرصنعت وپیداواروتجارت عبدالرزاق دائود اوروفاقی وزیرتوانائی عمرایوب خان سے امریکی وزیر تجارت ولبرراس نے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں،جس میں دونوں ممالک کے مابین دوطرفہ تجارت وسرمایہ کاری کو بڑھانے کے مواقع پر تبادلہ خیال کیاگیا۔گزشتہ روز مشیرخزانہ ومحصولات ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ سے امریکی وزیرتجارت ولبرراس نے ملاقات کی۔اس موقع پرامریکی وزیر تجارت ولبر راس نے کہا کہ وہ پاکستان کے ساتھ تعمیری شراکت داری کا عمل مزید مضبوط بنانے کیلئے پاکستان آئے ہیں۔مشیرخزانہ نے امریکی وزیرتجارت کوملک کی اقتصادی صورتحال اورمعیشت کی بہتری کیلئے موجودہ حکومت کی جانب سے مختلف اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان میں غیرملکی سرمایہ کاری کیلئے سازگارماحول فراہم کردیاگیا جس کا اعتراف بھی کیا جارہاہے ۔ ملاقات میں سیکرٹری خزانہ نویدکامران بلوچ اوردیگر اعلیٰ افسران بھی موجود تھے ۔دریں اثنامشیرصنعت وپیداوارعبدالرزاق دائودسے امریکی وزیرتجارت نے ملاقات کی۔ا س موقع پرعبدالرزاق دائودنے امریکی وزیرتجارت کو برآمدات اورکاروبارکے فروغ کیلئے موجودہ حکومت کی جانب سے کئے جانیوالے اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے کہاکہ حکومت ملک میں برآمدی سرگرمیوں میں اضافے کیلئے برآمد کنندگان کو سہولیات فراہم کررہی ہے ۔ امریکی تاجروں اور صنعتکاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کے خاطرخواہ مواقعوں سے استفادہ کرنا چاہئے ۔اس موقع پر امریکی وزیرتجارت نے کہا کہ امریکہ پاکستان کی تعمیر و ترقی میں بھرپور کردار ادا کرنا چاہتا ہے ،امریکی کمپنیاں پاکستان میں اپنی سرمایہ کاری کو بڑھانے کی خواہاں ہیں ، پاکستان کو امریکہ کے ساتھ مل کر دوطرفہ تجارتی حجم بڑھانے کی ضرورت ہے ۔مشیرتجارت نے کہا کہ پاکستانی مصنوعات کی بڑی تعداد امریکہ سے حاصل جی ایس پی سہولت سے مستفید نہیں، ٹیکسٹائل سمیت ان مصنوعات کو بھی ترجیحی تجارتی سہولت فراہم کی جائے ۔ انہوں نے کہاکہ امریکی کمپنیاں پاکستان میں اپنی مصنوعات تیار کرکے دیگر منڈیوں کو برآمد کرسکتی ہیں ۔ادھر وفاقی وزیر عمر ایوب خان نے امریکی وزیرتجارت سے گفتگو میں کہا کہ امریکی سرمایہ کار بجلی کی پیداوار، ترسیل، تقسیم، مصنوعی ذہانت، قابل تجدید توانائی اور تربیتی معاملات سمیت توانائی کے شعبہ میں سرمایہ کاری کر سکتے ہیں۔ عمر ایوب خان نے امریکی وزیر تجارت کی زیر قیادت وفد کو پاکستان کے توانائی کے شعبہ کی بہتری اور اس شعبہ میں اصلاحات کیلئے کی جانے والی کوششوں سے متعلق آگاہ کیا۔ اس موقع پر ندیم بابر نے امریکی وفد کو پاکستان میں کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے کے حوالہ سے کئے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا اور پاکستان میں ایکسن موبل کمپنی کی دوبارہ سرمایہ کاری کا خیرمقدم کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بنیادی ڈھانچہ کی ترقی اور تیل و گیس کی تلاش و پیداوار کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع ہیں۔ امریکی وزیر تجارت نے کہا کہ ان کا دورہ پاکستان کے ساتھ تجارتی روابط کو فروغ دینے کی امریکی حکومت کی خواہش کا حصہ ہے ۔ اس موقع پر فریقین نے توانائی کے شعبہ میں تعاون تیز کرنے پر اتفاق کیا۔