کراچی (سٹاف رپورٹر)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں حالیہ غیر قانونی اقدامات کا اثر جنوبی ایشیاکی مجموعی سلامتی کی صورتحال پر پڑے گا، پاکستان مسئلہ کشمیر کے حل تک بھارتی مظالم کو ہر سطح پر اجاگر کرے گا، ملک کا دفاع مضبوط ہاتھوں میں ہے ، پاکستان کی معاشی ترقی سمندر سے بلاتعطل تجارت پر منحصر ہے جس کے لئے پاک بحریہ کا کردار اہمیت کا حامل ہے ۔ پیر کو کراچی میں بحری مشق ’’شمشیر البحر ہفتم‘ ‘ اور’ ’ترسیل بحر دوم‘‘ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدرعلوی نے کہا کہ پاکستان ایسے اندرونی و بیرونی چیلنجز کا سامنا کر رہا ہے جواجتماعی قومی انداز فکر کے متقاضی ہیں۔بھارتی حکومت کی جانب سے بھارتی آئین سے آرٹیکل 370 اور 35A کے غیر قانونی خاتمے کے حالیہ یکطرفہ فیصلے سے نہ صرف مقبوضہ کشمیر میں شدید بے چینی ہے بلکہ پاکستان کو بھی اس پر شدید تحفظات ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فاشسٹ کنٹرول نافذ کرنے کی یہ کوشش مقبوضہ کشمیر میں اندرونی سکیورٹی کی صورتحال پرسنگین اثرات مرتب کرے گی اور نتیجتاً جنوبی ایشیائی اورعالمی امن بھی متاثر ہوگا۔ ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل کی قرار داد وں کی روشنی میں مسئلہ کشمیر کے حل تک پاکستان مقبوضہ کشمیر میں بھارتی بربریت کو بے نقاب کرتا اورتمام ممکنہ حد تک سیاسی و سفارتی محاذ پر بھر پور جواب دیتا رہے گا۔ تقریب میں افواج پاکستان کے اعلیٰ حکام، بیوروکریٹس اور وفاقی وزارتوں کے نمائندگان کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔پاک بحریہ کے ترجمان کے مطابق تقریب کے مہمان خصوصی صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی کی آمد پر چیف آف دی نیول سٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے استقبال کیا۔صدر مملکت کو پاک بحریہ کی جنگی اور آپریشنل تیاریوں پر بریفنگ دی گئی۔صدرعلوی نے فورس کمانڈرزکی جانب سے پیش کردہ حقیقت پسندانہ تجزئیے اور دوراندیشی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہ پاکستان کی میری ٹائم سکیورٹی اور بحری دفاع کے منصوبوں کی تیاری میں اہم کردار ادا کریں گے ۔