لاہور(انور حسین سمرا ) پنجاب میں تھانہ کلچر میں مطلوبہ تبدیلی پر خاطر خواہ پیش رفت نہیں ہوسکی، جس کے بعد وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے چیف سیکرٹری پنجاب اور انسپکٹر جنرل پولیس کو ماہانہ ہر ضلع سے 20بدمعاش، سنگین جرائم میں ملوث افراد اور اشتہاری گرفتار کرنے کا ٹاسک دے دیا تاکہ عام شہری کی زندگی میں امن لایا جاسکے ، وزیر اعظم نے ان اقدامات پر عمل کے لئے پنجاب حکومت کو دو ہفتہ کا وقت دیا ہے ، تفصیلات کے مطابق ایوان وزیر اعظم سے چیف سیکرٹری پنجاب اور آئی جی کو لکھے گئے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ وہ تمام ڈسٹرکٹ پولیس افسران کو پابند کریں کہ وہ ماہانہ ضلع کے ٹاپ 20بدمعاش، عادی مجرمان اور اشتہاریوں کو گرفتار کریں ، حکم دیا گیا ہے سمندر پار پاکستانیوں کے لئے ہر ضلع میں ایک وقف پولیس سٹیشن قائم کریں ، جہاں ان کی شکایات کا ازالہ فوری طور پر کیا جائے ، وزیر اعظم نے چیف سیکرٹری پنجاب کو حکم دیا کہ لینڈ مافیا اور منظم قبضہ گروپس کے خلاف بلا امتیاز کاروائی شروع کی جائے جس کی رپورٹ ایوان وزیر اعظم کو بھیجی جائے ، صوبے میں نفرت پھیلانے والے لٹریچر کو پھیلانے اور شعلہ بیان مولویوں کے خلاف بھی کاروائی کی جائے ، وزیراعظم نے تھانوں میں تفتیش کے دوران تشدد پر سخت نوٹس لیتے ہوئے وزیر اعظم نے آئی جی پنجاب کو حکم دیا کہ آئندہ پولیس تشدد برداشت نہیں کیا جائے ، اس حکمت عملی کو فوری طور پر بند کیا جائے ، پنجاب پولیس بہتر کمیونیکیشن حکمت عملی بنائے ، ذرائع نے بتایا کہ ایوان وزیر اعظم ان تمام اقدامات کی خود مانیٹرنگ کرے گا۔ 20 جرائم پیشہ گرفتار