جنیوا (اے ایف پی) چین میں ایغور مسلمانوں کی حالت زار پر 22 ممالک نے اظہار تشویش کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق حکام کو خط لکھا ہے جس میں ایغور مسلمانوں سے ہونے والے سلوک کی مذمت کی گئی ہے ۔اقوام متحدہ میں آسٹریلیا، برطانیہ، کینیڈا، فرانس، جرمنی اور جاپان سمیت 22 ممالک نے ہیومن رائٹس کونسل کے صدر اور ہائی کمشنر فار ہیومن رائٹس کو لکھے گئے خط میں ایغور مسلمانوں کو تربیتی کیمپوں میں رکھنے ، وسیع پیمانے پر ان کی جاسوسی کرنے اور سنکیانگ میں مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں پر پابندی کیخلاف تحفظات کا اظہار کیا ہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سنکیانگ کے تربیتی کیمپوں میں دس لاکھ ایغور مسلمانوں کو رکھا گیا ہے اور انسانی حقوق کے ادارے انہیں کنسنٹریشن کیمپس قرار دیتی ہے ۔خط میں چین سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ ان کیمپوں کو ختم کرے اور سنکیانگ میں ایغور مسلمانوں اور دیگر اقلیتوں کو نقل و حرکت کی آزادی دے ۔