BN

کالم



آج کے کالم 


  


کالم آرکیو



بجا کہتے ہو سچ کہتے ہو

پیر 17 فروری 2020ء
عبداللہ طارق سہیل
بجا ارشاد ہوا کہ آٹا چینی کا بحران ہماری کوتاہی کا نتیجہ تھا۔ واردات کا حجم دیکھیے اور پھر کوتاہی کے لفظ کو داد دیجیے… ع کسی کی جان گئی آپ کی ادا ٹھہری ایک سو چالیس ارب روپے کی واردات ہوئی ہے اور یہ ساری رقم غریب قوم کی جیبوں سے نکلوا کر چند پیاروں کے کھاتے بھرے گئے ہیں۔ غریب قوم کی کیا مجال جو اسے ڈکیتی قرار دے سکے۔ اس کی خیریت اسی میں ہے کہ اسے کوتاہی مان لے اور کوتاہی کا کیا‘ ہو ہی جاتی ہے۔ اس بار ہو گئی اب نہیں ہو گی‘اچھا جائو معاف کیا‘
مزید پڑھیے


جن و بشر سلام کو حاضر ہیں‘ السلام

پیر 17 فروری 2020ء
جسٹس نذیر غازی
مذہب کی ضرورت تو بہرحال رہتی ہے۔ تسلیم یا عدم تسلیم کا اختیار تو انسان کا نفس ازخود حاصل کرنے کی کوشش کرتا ہے۔زندگی کی ابتدا ولادت سے ہوتی ہے اور انتہا موت پر ہوتی ہے۔ پھر ایک نئی سوچ‘نئے انداز‘ نیا جہاں‘نئے معمولات اور نئے سماج سے واسطہ پڑتا ہے‘ پھر نجانے کتنے زمانے گزرتے ہیں۔ ان زمانوں کے سفر میں روزمرہ کا معمول ہے کہ لاکھوں انسان جنم لیتے ہیں اور لاکھوں بتدریج سفر فطرت کی ہمنوائی کرتے ہوئے قبر اور حشر کی منازل کی جانب رواں دواں رہتے ہیں۔ مذہب حقیقت آشنائی کے لئے دائمی رہنما ہے۔ پھر مذہب
مزید پڑھیے


’’سقیفہ بن ساعدہ‘‘

پیر 17 فروری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
"سقیفہ"۔ سَقَفٌ سے ہے، جس کے معنی "سایہ دارجگہ "کے ہیں، یعنی ایسا سائبان ، چھَپریا سایہ دار جگہ۔۔۔ جہاں لوگ رسمی یا غیر رسمی طور پر اکٹھے ہو کر اپنے مختلف امور پر تبادلہ خیال کرتے ہوں، جیسے ہمارے دیہاتی یا دیسی ماحول میں "ڈیرہ"یا چوپال وغیرہ ، جہاں سرِشام ۔۔۔ یا سردیوں کی ایسی دھوپ اور چمکتے دنوں میں لوگدن میں بھی اکٹھے ہو جاتے اور نجی، ذاتی ، علاقائی اور قومی امور پر تبادلہ خیال کرلیتے ہیں، بالعموم قبیلہ/خاندان کے بزرگ یا سربراہ اپنے ہاں اس نوعیت کے مقام کا اہتمام ضرور کرتے۔ اسی طرح قبائلی نظام
مزید پڑھیے


جہالت

پیر 17 فروری 2020ء
ہارون الرشید
اور سب سے اہم وہی کہ سب سے بڑی بیماری جہالت ہے‘ جہالت۔ کیسی کیسی آزمائش میں زندگی ڈالتی ہے۔ بقولِ اقبالؔ‘ بجلیاں، زلزلے، قحط اور آلام۔ سیلابوں اور طوفانوں سے بھی بڑا امتحان شاید یہ ہے کہ اپنے جہل اور بے خبری کے سبب کوئی قوم رسوائی، او ر اس کے نتیجے میں مایوسی کا شکار ہونے لگے۔ کوئی ابتلا بے سبب نہیں اترتی اورادنیٰ انسانوں سے لے کر پیغمبرانِ عظام تک کے لیے اس میں کوئی استثنیٰ نہیں۔ ہر آزمائش مختلف ہوتی ہے۔ رحمتہ اللعالمینؐ پر طائف کے بازاروں میں پتھر برسائے گئے۔ وہ بھی آوارہ بازاری
مزید پڑھیے


مصنوعی مہنگائی کے ذمے دار بے نقاب کئے جائیں

پیر 17 فروری 2020ء
اداریہ
وزیر اعظم عمران خان نے چینی‘آٹا مہنگا ہونے پر اپنی حکومت کی کوتاہی تسلیم کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ جانتے ہیں کس نے مہنگائی کر کے فائدہ اٹھایا ہے۔ سب پتہ چل گیا ہے۔ اشیاء خوردونوش کا مصنوعی بحران پیدا کر کے مافیا نہ صرف عوام کے لئے مشکلات پیدا کرتا ہے بلکہ حکومت کو بھی ناکام بناتا ہے۔ یہ عام افراد کا گروہ نہیں ہوتا بلکہ اس کے تعلقات بڑے ایوانوں سے لے کر بیورو کریسی تک ہوتے ہیں اسی لئے انتظامیہ ان کے خلاف کارروائی کرتی ہے نہ ہی انہیں پکڑا جا سکتا ہے۔ ملک میں آٹے
مزید پڑھیے


ٹڈی دل کے خاتمے کے لئے ایف اے او سے معاہدہ

پیر 17 فروری 2020ء
اداریہ
اقوام متحد کے ادارہ برائے خوراک و زراعت نے ٹڈی دل کے خاتمے کے لئے پاکستان سے معاہدہ کیا ہے جبکہ پاکستان نے ٹڈی دل پر قابو پانے کے لئے فوری ایمرجنسی کا اعلان کیا ہے۔صورتحال یہ ہے کہ پاکستان اس وقت ٹڈی دل کے خوفناک حملے کی زدمیں ہے۔ افریقہ سے ایران اور پھر بلوچستان کے راستے سندھ اور پنجاب میں داخل ہونے والے ٹڈی دل نے ہماری فصلوں کو بہت نقصان پہنچایا جس کی وجہ سے کسان انتہائی مشکلات کا شکار ہیں۔ ٹڈی دل کی روک تھام کے لئے اس کے لئے بہت پہلے سے قومی سطح پر
مزید پڑھیے


مقبوضہ کشمیر :یورپی یونین کا پابندیاں ہٹانے کا مطالبہ

پیر 17 فروری 2020ء
اداریہ
یورپی یونین نے بھارت سے کہا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں چھ ماہ سے عائد پابندیاں فوری طور پر ختم کرے۔قبل ازیں یورپی یونین کے 626اراکین نے مقبوضہ کشمیر میں پابندیوں اور بھارت میں شہریت قانون کے خلاف گزشتہ ماہ کے آخر میں ایک قرار داد پیش کی تھی۔مظلوم کشمیریوں اوربھارتی مسلمانوں کے حق میں بین الاقوامی برادری کی یہ پہلی آواز اٹھی ہے جس نے بھارت کو بدحواس کر دیا ہے۔عالمی سطح پر بھارت کو مسلسل خفت کا سامنا ہے۔ یورپی یونین ایک بڑا تجارتی بلاک ہے۔ بھارت نے یورپی مارکیٹ میں جگہ بنانے کے لئے بڑے پاپڑ
مزید پڑھیے


سوشل میڈیا پر پابندی کا قانون یا؟

پیر 17 فروری 2020ء
عا رف نظا می
جب سے موجودہ حکومت برسر اقتدار آئی ہے میڈیا کی طنابیں مسلسل کَسی جا رہی ہیں اور اب سوشل میڈیا کی باری بھی آ گئی ہے ۔کابینہ کے حالیہ اجلاس میں سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔اس مجوزہ قانون کے تحت یو ٹیوب ،فیس بک ،ٹویٹر ،ٹک ٹاک اور دیگر سوشل میڈیا کمپنیوںکے لئے تین ماہ میں پاکستان میں دفاتر کھولنا لازمی قرار دیا گیا ہے ۔اس سلسلے میں قانون توکافی عرصے سے تیار کیا جا رہا تھا گویا کہ وہ اینکر خواتین وحضرات جن کے لیے مروجہ چینلز کے راستے بند کرا دیئے گئے
مزید پڑھیے


کشمیر اورچناکلے ایک جیسے ہیں

پیر 17 فروری 2020ء
عبدالرفع رسول
14فروری 2020ء جمعہ کی صبح گیارہ بجے پاکستان کی قومی اسمبلی کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر جناب رجب طیب اردوان نے کشمیرپر کھل کر بات کرتے ہوئے اہل کشمیرکے مسئلہ حق خودارادیت پرترکی کے دو ٹوک حمایت کااعلان کرتے ہوئے کہاکہ کشمیر ترکی کے لئے ایسا ہی ہے جیسا پاکستان کے لئے ہے۔ترک صدر نے بھارت کے یکطرفہ اقدامات کو کشمیری بھائیوں کی تکلیف میں اضافے کا موجب قرار دیتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا حل جبری پالیسیوں سے نہیں بلکہ انصاف سے ممکن ہے۔ انہوں نے ببانگ دہل کہا کہ ترکی کے نزدیک
مزید پڑھیے


ذکرماہنامہ الحمرا کے سالنامے کا

پیر 17 فروری 2020ء
سعد الله شاہ
ماہنامہ الحمرا کا سالانہ شمارہ 2020ء میرے سامنے ہے۔ اس کی علمی حیثیت تو اپنی جگہ بلند و اعلیٰ ہے مگر اس کا معیاری ہونا اور اجرا کا تسلسل بھی حیران کن ہے۔ اگر میں یہ کہوں کہ اپنی تزئین میں یہ اپنے ایڈیٹر شاہد علی خاں کی طرح خوبصورت ہے تو غلط نہ ہو گا۔ اصل میں اس پرچے کی اپنی درخشندہ و تابندہ تاریخ ہے کہ اس کے بانی نامور شاعر مولانا حامد علی خاں ہیں جن کا شعر بھی اس ماہنامہ کے صفحہ تین پر چھپا ہوتا ہے۔ صبح ازل سے ہوں تن گیتی میں مثل روح۔ مجھ
مزید پڑھیے


شکار پر پابندی ۔ عملدرآمد ضروری ہے

پیر 17 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
قانون کوئی بھی ہو اصل بات عمل درآمد کی ہے ۔ ہمارے ہاں قوانین تو موجود ہیں اور آئین بھی موجود ہے مگر دیکھنا یہ ہے کہ اس پر کتنا عمل ہوتا ہے ۔ پاکستان میں دوسرے قوانین کی طرح شکار پر پابندی کا قانون بھی موجود ہے مگر اس پر کبھی عمل درآمد نہیں ہوا اور اس قانون کی سب سے زیادہ خلاف ورزی دوسروں کے ساتھ ساتھ آئین ساز ادارے سے وابستہ لوگ بھی کرتے ہیں ۔ ویسے تو پورے ملک میں شکار پر پابندی کے قانون کو توڑا جاتا ہے مگر پاکستان کے وسیع صحرا چولستان
مزید پڑھیے


خدا کو مانو‘پولیو کے خلاف ڈٹ جائو

پیر 17 فروری 2020ء
سجاد میر
جب مجھ سے یہ کہا جائے کہ فلاں موضوع پر کالم لکھ دو تو میری اندر کی خودسری حرکت میں آ جاتی ہے کہ کہیں یہ فرمائشی تحریری تو نہیں ہو جائے گی۔ مگر آج جب مجھ سے کہا گیا کہ تم پولیو پر کیوں نہیں لکھتے تو خیال آیا کہ یہ فرمائش نہیں‘ذمہ داری کا احساس دلاتا ہے۔ کتنے بڑے ظلم کی بات ہے کہ پاکستان ان تین ممالک میں شامل ہے جہاں پولیو اب بھی موجود ہے۔ دوسرے دو ممالک افغانستان اور نائجیریا ہیں۔ ایٹم بم بنانے والی قوم ایک چھوٹے سے ذرے کے ہاتھوں بے بس ہے۔
مزید پڑھیے


پارلیمینٹ اورسیاسی مغلظات۔۔۔۔

اتوار 16 فروری 2020ء
محمد حسین ہنز ل
قومی اسمبلی یا ایوان زیریں ایک قانون سازجمہوری ادارہ ہے ۔یعنی قوم اور ملک کے وسیع تر مفاد میں اس ایوان کے منتخب ارکان اس کشادہ ایوان میں بیٹھ کر قانون سازی جیسے غیر معمولی امور کو سرانجام دیتے ہیں۔بائیس کروڑ کی آبادی میں سے صرف تین سو بیالیس افرادکا اہمیت کے حامل اس ہاوس کا رکن بننا کوئی غیر معمولی سعادت نہیں کہ اسے نظر انداز کردیا جائے ۔لیکن بدقسمتی ہمارے ہاں یہ روش در آئی ہے کہ اس ادارے کی ساکھ کو بھی وقتاًفوقتاً مجروح کیاجارہاہے ۔ پچھلے روز منگل کو اس ایوان کی کارروائی ٹی وی پر
مزید پڑھیے


’’جھاؤ‘‘

اتوار 16 فروری 2020ء
احمد اعجاز
یہ ایک دِن کا واقعہ ہے کہ ہمارے وزیرِ اعظم نے ہمیشہ کی طرح بہت ’’شاندار اور انوکھی‘‘تقریر کی۔فرمایا’’نوجوان تنخواہ اور پنشن والی نوکری کے پیچھے نہ بھاگیں،ایسی نوکری کا مطلب اپنی صلاحیتوں کو تباہ کرنا ہے،ذہنی غلام کبھی ترقی نہیں کرسکتا،آزاد ذہن ہی نئی سوچ ،نئے راستوں کا تعیّن کرتے ہیں ،نوجوانوں کوآزادی دینے والا معاشرہ ہی آگے بڑھتا ہے،چیلنجز سے نبردآزما ہونے کے بعد کامیابی آپ کا مقدر بنتی ہے‘‘ اُسی دِن یک عجیب سا لفظ’’جھائو‘‘میرے مطالعہ میں آیا۔ میری کم علمی کی بدولت اس کے معانی معلوم نہ تھے،یوں اِدھر اُدھر سے اس لفظ کا تعاقب کیا تو
مزید پڑھیے


’’ترک کاردش‘‘

اتوار 16 فروری 2020ء
احسان الرحمٰن
گاڑی جیسے ہی پٹرول پمپ پر رکی میں نے دروازہ کھولا اور نیچے اتر آیا سڑکیں کیسی ہی ہموار اور سواری کتنی ہی آرام دہ ہو سفر پھر سفر ہی ہوتا ہے ،ترک ڈرائیور جدید مرسڈیز وین چلا رہا تھا لیکن وہ جتنی بھی جدید ہوتی سفرنے تو سفرہی رہنا تھا ،میں گاڑی سے نیچے اترا تو دیگر ساتھی بھی نیچے اتر آئے ہم میں سے اکثر نے قمیض شلوار پہن رکھی تھی ،دیار غیر میںگھٹنوں تک لمبی قمیضیں اور کھلی ڈھلی شلواریں پہلی بار دیکھنے والوں کو دوبارہ مڑ کر دیکھنے پر ضرور مجبور کرتی ہیں ہم وہاں
مزید پڑھیے






کالم نگار

اداریہ
اداریہ





سجاد میر
شہر آشوب




مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں

مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ



افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے

رضا رومی
رومی نامہ




سعید خا ور
حر ف درما ں


راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ





ارشاد محمود
بات یہ ہے

عا بد قر یشی
تجا ہل عا دلا نہ


ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

عابد قریشی
تجاہل عادلانہ

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ

شاہین صہبائی
چلتے چلتے


سعید خاور
حرفِ درماں


مظفر بخاری
گستاخی معاف

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
دروا‍‌زہ

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

وسی بابا
باتاں


محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم