BN

کالم



آج کے کالم 


  


کالم آرکیو



اصل بحران

منگل 21 جنوری 2020ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
ملک میں اس وقت آٹے کا شدید بحران ہے‘ حسن انتظام کا بحران ہے اور نہ جانے کیا کیا بحران ہیں۔ مگر اصل بحران کیا ہے۔ آج کے کالم میں اسے ہی سمجھنے کی کوشش کریں گے۔ خود اعتمادی جب حد سے بڑھتی ہے تو خود پسندی میں بدل جاتی ہے۔ خود پسندی ایک ایسی عینک ہے جسے لگا کر انسان یہ سمجھتا ہے کہ وہ کسی بلندی پر متمکن ہے اور اس کے سامنے بونوں کی فوج ظفر موج ہے۔ وہ اپنے آپ کو عقل کل اور حرف آخر سمجھنے لگتا ہے۔ تب اس شخص کی ایک ہی خواہش ہوتی
مزید پڑھیے


دیوندر سنگھ سے اوتار سنگھ تک

منگل 21 جنوری 2020ء
افتخار گیلانی
بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں اپنے 27سالہ صحافتی کیریئر کے دوران میں نے نہ صرف وقائع نگار کی حیثیت سے کشمیر یا بھارت اور پاکستان کے حوالے سے رونما ہونے والے متعدد اعلانیہ یا پس پردہ واقعات کا مشاہدہ کیا،بلکہ نہ چاہتے ہوئے بھی بسا ا وقات حالات و حوادثات کا کردار بن گیا۔ پچھلے ہفتے جب خبر آئی کہ جموں و کشمیر پولیس نے اپنے ہی ایک ڈپٹی اسپرنٹنڈنٹ دیوندر سنگھ کو دو عسکریت پسندوں کو جموں لے جاتے ہوئے گرفتار کیا، تو میرے لئے اچنبھے کی بات نہیں تھی۔ پچھلے 30برسوں میںکشمیر میںمتعدد ایسے واقعات رونما ہوئے، جو
مزید پڑھیے


قافلہ حجاز میں ایک حسین بھی نہیں

منگل 21 جنوری 2020ء
اوریا مقبول جان
شاہ اسماعیل شہید دلّی میں اپنے علم وفضل، تقویٰ اور طاغوت کے مقابل ایک تلوارِ بے نیام کے طور پر مشہور تھے۔ ان کی کتاب ''منصب امامت'' برصغیر ہی نہیں بلکہ اس دور کی خوابیدہ مسلم امہ کے دلوں میں نشاۃ ثانیہ اور خلافت علیٰ منہاج النبوہ کی اولین ترغیب تھی۔ برصغیر پاک وہند کے عظیم فرزند شاہ ولی اللہ کے پوتے، 29اپریل 1779ء کو پیدا ہوئے۔ یہ وہی سال ہے جب رنجیت سنگھ نے پنجاب میں اپنی پہلی فتح حاصل کر کے اپنے اقتدار کی بنیاد رکھی تھی۔انہوں نے سلوک کی منزلیں شہیدِ بالاکوٹ سید احمد شہید کی مریدی
مزید پڑھیے


گندم وافر ہے تو آٹے کا بحران کیوں؟

منگل 21 جنوری 2020ء
اداریہ
ملک بھر میں آٹے کا بحران سنگین تر ہوتا جا رہا ہے‘ ایک طرف وفاقی وزیر تحفظ خوراک خسرو بختیار کا کہنا ہے کہ ملک میں گندم کے بحران کا تاثر غلط ہے کیونکہ کئی لاکھ ٹن گندم حکومت کے پاس محفوظ ہے اور دوسری طرف حکومت آٹے کے بحران پر قابو پانے کے لئے آئندہ ماہ کے وسط تک 3لاکھ ٹن گندم درآمد کر رہی ہے۔ یوں لگتا ہے کہ جو گندم ہم 30روپے کلو کے حساب سے برآمد کرتے ہیں وہ اب 60سے 70روپے کلو تک درآمد کی جائے گی۔ گندم کے ملوں میں جانے کے عمل اور
مزید پڑھیے


یمن:خون ریزی روکنے کی ناکافی کوششیں

منگل 21 جنوری 2020ء
اداریہ
یمن میں حوثیوں کے مسجد پرمیزائل حملے میں 100فوجی جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔2014ء سے جاری یمن کی خانہ جنگی 20ہزار بے گناہوں کی جان لے چکی ہے اور 22لاکھ افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔ عالمی اداروں کی رپورٹس کے مطابق یمن کے 22لاکھ بچے خوراک کی شدید قلت کا شکار ہیں ۔صرف 2017ء میں آلودہ پانی کے باعث 2135بچے لقمہ اجل بن گئے تھے۔ اقوام متحدہ کی تمام تر کوششوں کے باوجود یمن کا بحران حل ہوتا نظر نہیں آتا۔ غیر جانبدارعالمی مبصرین کے نزدیک عالمی قوتوں کی باہمی مخاصمت نے یمن کو تباہ و
مزید پڑھیے


وزیر اعظم کا بھارت کو انتباہ

منگل 21 جنوری 2020ء
اداریہ
وزیر اعظم عمران خان نے عالمی برادری کی توجہ ایک بار پھر مقبوضہ کشمیر کی المناک صورت حال کی جانب دلائی ہے۔ وزیر اعظم نے اپنے ٹویٹس میںبھارت کو خبردار کیا ہے کہ سرحد پار نہتے کشمیریوں کے بہیمانہ قتل عام کا سلسلہ نہ رکا تو پاکستان کے لئے خاموش تماشائی بن کر بیٹھے رہنا مشکل ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ قابض بھارتی افواج کے شدت پکڑتے حملوں کے پیش نظر لازم ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل فوری طور پر اپنا فوجی مبصر مشن مقبوضہ کشمیر میں واپس بھیجے۔ وزیر اعظم نے عالمی برادری سے اپیل
مزید پڑھیے


معاشی تعلیم کی اہمیت و ضرورت

منگل 21 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نوجوانوں کی تعلیم تک آسان رسائی کو یقینی بنانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ تمام معاشی مشکلات کے باوجود ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے حوالے سے مالی ضروریات کو پورا کیا جائے گا ۔ تعلیم کا بجٹ دو گنا تو ہو سکتا ہے ، کم نہیں ہو سکتا ۔ ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے حوالے اجلاس کی صدارت کے دوران گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت میں تعلیم کا ترقیاتی بجٹ محض 14 ارب روپے تھا ۔ جو ہم نے 29 ارب روپے تک بڑھا دیا ۔ مجموعی طورپر
مزید پڑھیے


تری زلفوں کا سونا کیا کروں میں

منگل 21 جنوری 2020ء
سعد الله شاہ
کہتے ہیں ایک دانشور بادشاہ کے لئے تقریر لکھا کرتا تھا ایک روز بادشاہ کی تقریر میں ایک مختصر سا جملہ لکھا ہوا دیکھا گیا کہ ’’آٹا ندارد‘‘ یعنی آٹا نہیں ہے۔ بادشاہ بھی تب سمجھدار ہوا کرتے تھے۔ بادشاہ نے پتہ چلوایا تو حقیقت کھلی کہ اس دانشور نے بے خیالی میں گھر کی صورت حال دو لفظوں میں لکھ دی۔ بادشاہ نے اس کے گھر گندم بھجوائی اور انعام و اکرام ۔ ادھر تو ساری عوام ہی چیخ رہی ہے کہ آٹا ندارد کوئی بندوبست کرنے کی بجائے بادشاہ کے سارے رتن مسخریاں کر رہے ہیں۔ آٹے سے
مزید پڑھیے


جناح کا گمشدہ پاکستان ( 2)

منگل 21 جنوری 2020ء
عا بد قر یشی
قیام پاکستان کے بعد سوائے پاک فوج کے بقیہ اداروں میں شکست، ریخت کا عمل جاری رہا۔ فوج نے اپنے اندرونی نظم و نسق اور ڈسپلن کی وجہ سے بطور ادارہ مضبوط ہونے کا ثبوت دیا۔ لہذا ہمارے سول اداروں کی کارگزاری کچھ قابل رشک نہ رہی۔ سول بیورکریسی براہ راست محلاتی سازشوں کا حصہ تھی تو عدلیہ جسٹس مینر کی سر کردگی میں نظریہ ضرورت کے بوجھ تلے دبی ہوئی تھی۔ تشکیل آئین کا کام رک رک کر چلتا رہا اور چل چل کر رکتا رہا۔ 1962ء میں فیلڈ مارشل ایوب خاں نے صدارتی طرز حکومت کو
مزید پڑھیے


بیس روپے من آٹا

پیر 20 جنوری 2020ء
سجاد میر
آج کل پاکستان میں نہیں بھارت میں بھی حبیب جالب کا بہت چرچا ہے۔ پاکستان میں جالب کی شہرت کی ابتدا مادر ملت کے انتخابات میں ہوئی جس کی نظمیں صدر ایوب خاں کے خلاف سب سے موثر وار ہوا کرتی تھیں۔ ان میں ایک نظم صدر ایوب زندہ باد تھی۔ ہم بھی وہ نظم بہت لہک لہک کر پڑھا کرتے تھے۔ مادر ملت کے قافلہ جمہوریت کے ہمراہ بھی جالب یہ نظم اپنے مخصوص انداز میں سنایا کرتے تھے۔ ایک یہ نظم اور ایک بچوں پہ چلی گولی ماں دیکھ کے یہ بولی۔ بہت مقبول تھیں۔ اس نظم کا
مزید پڑھیے


مرشد کوں آکھیں آکے ساڈا حال ڈیکھ ونج

پیر 20 جنوری 2020ء
اشرف شریف
سیدمسعود حسنین زیدی ادب دوست زمیندار تھے اس لئے محکمہ امیگریشن سے قبل از وقت ریٹائرمنٹ لی اور اپنے والد ڈاکٹر نظیر حسنین زیدی کے نام پر ایک مجلس بنا کر نوادر کا اجرا کیا۔ نوادر کا نام مشفق خواجہ نے تجویز کیا۔ اس مجلس کو مشفق خواجہ کے علاوہ ڈاکٹر وحید قریشی اور ڈاکٹر گوہر نوشاہی کی سرپرستی حاصل رہی۔ زیدی صاحب کو اہل علم و فضل کی میزبانی کا ازحد شوق تھا۔ ایک بار کراچی سے ڈاکٹر سحر انصاری لاہور تشریف لائے۔ زیدی صاحب نے انہیں اپنے ٹھہرایا‘ ممتاز کالم نگارہ رئیس فاطمہ اور ان کے شوہر صحافی
مزید پڑھیے


بھارت کی داخلی ٹوٹ پھوٹ

پیر 20 جنوری 2020ء
ارشاد محمود
بی جے پی نے گزشتہ الیکشن میں دوتہائی اکثریت تو حاصل کرلی لیکن بھارت کو زبردست بحران کا شکار کردیا۔ ملک کی ان اساسی نظریاتی اور آئینی بنیادوں کو ہلاکر دیا جن پر ایک کثیر القومی، نسلی اور مذہبی ریاست کی عمارت استوار کی گئی تھی۔آج کی بی جے پی اٹل بہاری واجپائی کی سوچ سے نہ صرف مختلف ہے بلکہ متصادم نظریے کی پارٹی بن چکی ہے ۔ اس کی مہار آرایس ایس کے ہاتھ میں ہے جو جرائم پیشہ مافیا اور سخت گیر اوراقلیتو ں کے مخالف سرکاری حکام کے گٹھ جوڑسے ملک پر حکومت کرتی ہے۔
مزید پڑھیے


اب انہیں ڈھونڈ…

پیر 20 جنوری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
جمعتہ المبارک کی سعید ساعتوں میں‘ بادشاہی مسجد کا اجلا‘ نکھرا اور سنورا سا ماحول طبیعت میں فرحت اور گداز پیدا کر رہا تھا۔ ہمارے وزیر محترم پیر سید سعید الحسن شاہ صاحب یہاں آمد پر ہمیشہ اورنگزیب عالمگیر کو یاد کرتے ہیں‘ بلاشبہ اس مسجد کا بانی اورنگ زیب سُنی ‘ حنفی عقائد کا امین اور نقشبندی اسلوب طریقت کا حامل تھا‘ اس نے ’’فتاویٰ عالمگیری‘‘ کی ترتیب و تدوین کے لئے ایک سو ساٹھ علماء اور مفتیان پر مشتمل بورڈ تشکیل دیا‘ جس کی سربراہی اپنے استاد ملاجیون کو سونپی اور یہی شخصیت بادشاہی مسجد کے اولین خطیب
مزید پڑھیے


سندھ پولیس کی بغاوت خطرے کی گھنٹی

پیر 20 جنوری 2020ء
سعید خا ور
یہ ورلڈ ریسلنگ اینٹرٹینمنٹ کی کسی نورا کشتی کامنظر نہیں بلکہ یہ پاکستان کے حق میں پہلی قرارداد منظور کرنے والے صوبہ سندھ کی حکومت اورسندھ پولیس کی باہمی لڑائی اور اٹھا پٹخ کے حقیقی مناظر ہیں جو ان دنوں آپ کو ٹی وی کی اسکرینوں اور اخبارات کی شہ سرخیوں میں دکھائی دے رہے ہیں۔ آئی جی سندھ اور سندھ حکومت کی اس کھلم کھلا لڑائی میں شکار پور کے ایس ایس پی ڈاکٹر رضوان احمد نے اپنی خفیہ رپورٹوں میں سندھ کابینہ کے دو اہم وزیروں امتیازاحمد شیخ اور سعید غنی کی نیک نامی پرسوالیہ نشان اٹھا
مزید پڑھیے


کپتان کے گُن نادان کیا جانیں

پیر 20 جنوری 2020ء
عبداللہ طارق سہیل
حکومت نے کہا ہے کہ آٹے کا بحران جلد ختم ہو جائے گا۔ آپریشن کا حکم دے دیا گیاہے۔ ٹھیک ہے۔ بحران پیدا کرنے کا مقصد تو حاصل ہو گیا جیسا کہ بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ وزیر اعظم نے ’’دوستوں‘‘ کو نوازنے کے لئے بحران خود پیدا کیا۔ سنا ہے‘ بعض مقدس ’’اے ٹی ایم‘‘ کے ذخائر وفور زر سے چھلک اٹھے ہیں اور کیوں نہ چھلک اٹھتے ۔گندم کی حالیہ فصل پر خریداری کا سرکاری ریٹ 11سو روپے من تھا۔ یہی گندم حکومت نے 28سو روپے من بیچی۔1700روپے فی من کا جائز منافع آخر کہیں تو پہنچا
مزید پڑھیے






کالم نگار

اداریہ
اداریہ









سجاد میر
شہر آشوب

مستنصر حسین تارڑ
ہزار داستان

مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں


مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ


بشریٰ رحمان
چادر چاردیواری اور چاندنی

نو شی گیلا نی
کا لم کہا نی


افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے


رضا رومی
رومی نامہ

انجم نیاز
یادداشت از امریکا



خاور گھمن
گھمن گھیریاں


سعید خا ور
حر ف درما ں


راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ

ایچ اقبال
ایچ اقبال


قدسیہ ممتاز
حرف تازہ





سعود عثمانی
دل سے دل تک

اثر چوہان
سیاست نامہ

عامر متین
عامر متین

ارشاد محمود
بات یہ ہے

عا بد قر یشی
تجا ہل عا دلا نہ


ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ

شاہین صہبائی
چلتے چلتے



سعید خاور
حرفِ درماں


مظفر بخاری
گستاخی معاف

رعایت اللہ فاروقی
گفتار و پندار

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
دروا‍‌زہ

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

رحمت علی رازی
درون پردہ

وسی بابا
باتاں


راحیل اظہر
غبارِخاطر

محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم