کالم



آج کے کالم 


  


کالم آرکیو



تم جہاں کہیں ہوگے موت تمہیں آکرپکڑے گی

بدھ 01 اپریل 2020ء
محمد حسین ہنز ل
موت کو تھوک کے حساب سے بانٹنے والا کرونا وائرس پوری آب وتاب کے ساتھ ملک دَرملک ، شہر شہراور قریہ قریہ محو ِ سفر ہے ۔جائے پیدائش اس کا چینی شہر ووہان تھا لیکن اب اس کا ایپی سنٹر یورپ اور امریکہ بن چکاہے۔ تازہ ترین اطلاعات کی رو سے اس وبا سے صرف یورپ کے شہراٹلی میں اب تک دس ہزار سات سونواسی افراد ہلاک جبکہ ساڑھے ستانوے ہزار افراد متاثر ہوئے ہیں۔گزشتہ چند دنوں سے تو وہاں پر یہ وبا اتنی شدت اختیار کرگئی ہے کہ ایک ہی دن میں نوسوسے ایک ہزار افراد جان کی بازی
مزید پڑھیے


کرونا وائرس، وزیر اعظم کا خطاب

بدھ 01 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
کرونا وائرس کے بارے میں وزیر اعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے کرونا ریلیف فنڈ قائم کر دیا ہے اور ٹائیگر فورس کے قیام کا اعلان کیا ہے۔ وزیر اعظم نے یہ بھی کہا ہے کہ ملازمین کو فارغ نہ کرنے والے اداروں کو اسٹیٹ بینک سستے قرضے فراہم کرے گا۔ ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کو ریاست سخت سزا دے گی۔ انہوں نے کہا کہ وائرس کے خلاف جنگ جیتیں گے۔ کرفیو نافذ نہیں ہو گا۔ وزیر اعظم نے ہمسایہ ملک بھارت کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ بھارت میں لاک ڈائون کی سختی کی گئی تو
مزید پڑھیے


کروناسے مقبوضہ کشمیرکی صورتحال مخدوش

بدھ 01 اپریل 2020ء
عبدالرفع رسول
90لاکھ کشمیری مسلمان گزشتہ سات ماہ سے لاک ڈائون میں محصور ہیںاس پرمستزادیہ کہ کروناوائرس کے حملوں کے باعث وہ نفسیاتی دبائو کا شکار ہیں جبکہ ہرطرف تنائو ،سراسیمگی،انجانے خوف اوراضطرب کی کیفیت ہے ۔سری نگرکے سی ڈی ہسپتال سرینگر میں زیر علاج کرنا وائرس مریض کی موت واقع ہونے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں مرنے والوں کی تعداد 2تک جا پہنچی ہے۔ضلع بارہمولہ کے ٹنگمرگ علاقے سے تعلق رکھنے والے 60سالہ شخص کروناوائرس کاشکارہوکرموت کے منہ میں چلاگیااسے تین یوم قبل سری نگرمیںایک 65سالہ شہری کروناسے دم توڑ چکاہے۔سری نگرکے سی ڈی اسپتال میں زیر علاج کورنا وائرس مریض
مزید پڑھیے


کورونا : اگلا پلان کیا ہوسکتا ہے؟

منگل 31 مارچ 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا وائرس کے حوالے سے بنیادی دو سوال ہیں، ہمیں کیا کرنا چاہیے اور ہم کیا کیا کچھ کرسکتے ہیں؟ آئیڈیل صورت حال کیا ہونی چاہیے اور عملی طور پر ہم کیا کر سکتے ہیں؟ ان دونوں کے درمیان کہیں جا کر ہمیں اپنی پالیسیاں بنانی چاہئیں۔ حکومتیں اس نکتے کا خیال رکھیں اور انفرادی طور پربھی ہم یہ سوچیں۔ بات کو مزید واضح کرتے ہیں۔کورونا وائرس سے لوگوں کو بچانے اور اس کے سدباب کا بہترین طریقہ یہی ہے کہ ہر ایک کو گھروں تک محدود رکھا جائے ۔ کورونا باہر سے مریضوں کے ذریعے آیا۔ اصل بات یہ
مزید پڑھیے


کون کون کرونا ؟

منگل 31 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
خدا کی پناہ! ان دنوں کسی تقریب، نوکری یا شاپنگ وغیرہ پہ کھلے منھ نہ جا سکنے کی سہولت، تساہل یا بے فکری اور کسی طرح کے مہمان کے نہ آ سکنے کی یقین دہانی نے دو ہفتوں سے مستقل طور پر گھر بیٹھے خواتین و حضرات کو تزئین آرائش، زینت و زیبائش سے اس قدر بے نیاز و بے پروا کر دیا ہے کہ ازلوں سے اکٹھے رہتے میاں بیویوں نے غالباً زندگی میں پہلی بار نہ صرف ایک دوسرے کی شکلوں پہ باقاعدہ غور کرنا شروع کر دیا ہے بلکہ کرونا سے زیادہ ایک دوسرے سے
مزید پڑھیے


کیا کرونا ایک حیاتیاتی ہتھیار ہے؟

منگل 31 مارچ 2020ء
آصف محمود
کیا کرونا وائرس ایک حیاتیاتی ہتھیار ہے اور یہ کسی لیبارٹری میں تیار کیا گیا؟ اس سوال کا جواب اثبات میں دینا مشکل ہے۔ تو کیا کرونا ایک قدرتی وائرس ہے جو کسی لیبارٹری میں تیار نہیں کیا گیا؟ میرے نزدیک اس سوال کا جواب اثبات میں دینا انتہائی مشکل ہے۔ہر دو کے امکانات موجود ہیں اور جب تک کوئی چیز واضح طور ہمارے سامنے نہیں آتی تب تک کسی سازشی تھیوری کا ، کامل یقین کر لینا یا اسے آخری درجے میں رد کرنا ، دونوں ہی نا معتبر رویے ہیں۔ حیاتیاتی اسلحہ یا حیاتیاتی جنگ ، یہ کسی خیال
مزید پڑھیے


امداد کا اعلان اور وہ سنجیدہ ہو گئے

منگل 31 مارچ 2020ء
عبداللہ طارق سہیل
کرونا متاثرین کی مدد کے لئے مختلف شہروں سے گمنام افراد سرگرم ہیں۔ یہ لوگ چہرہ نہیں دکھاتے‘ نام نہیں بتاتے سیلفی بنا کر تصویر بھی اپ لوڈ نہیں کرتے۔ بس خاموشی سے مستحق افراد کو راشن اور دوسری چیزیں دے کر یا ان کے گھروں کے باہر رکھ کر چلے جاتے ہیں۔اس سے بڑا تجربہ ترکی میں ہو رہا ہے۔ مالدار افراد راشن کے تھیلے سڑکوں کے کنارے رکھ جاتے ہیں۔ بہت سی شاہراہیں سامان کے ان تھیلوں سے اٹی پڑی ہیں۔ پاکستانی بطور قوم خیرات صدقات اور رفاہ کے لئے رقم دینے میں بہت پیچھے ہے۔عالمی انڈکس کے
مزید پڑھیے


قیدیوں کی بھی فکر کیجیے

منگل 31 مارچ 2020ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
زنداں کے ساتھیوں نے قید خانے میں حضرت یوسفؑ سے خوابوں کی تعبیر پوچھی جو آپ نے وضاحت و صراحت کے ساتھ بتا دی۔ پھر قرآن کے الفاظ میں سنیے کہ حضرت یوسف نے کیا فرمایا۔پھر ان میں سے جس کے متعلق خیال تھا کہ وہ رہا ہو جائے گا۔ اس سے یوسف علیہ السلام نے کہا’’اپنے رب(شاہ مصر) سے میرا ذکر کرنا مگر شیطان نے اسے ایسا غفلت میں ڈالا کہ وہ اپنے رب(شاہ مصر) سے اس کا ذکر کرنا بھول گیا اور یوسفؑ کئی سال قید خانے میں پڑا رہا۔ موت کا ذائقہ تو ہر انسان نے چکھنا ہے
مزید پڑھیے


نیرو، وائرلوجسٹ سے گفتگو ، صحت و قومی سلامتی

منگل 31 مارچ 2020ء
افتخار گیلانی
کہتے ہیں کہ شہنشاہ نیرو کے زمانے میں سلطنت روم میں سخت قحط آن پڑا۔ نیرو کا 13سالہ دور حکومت54)سے 68عیسوی) اسکی اپنی والدہ و اہلیہ کے قتل، بے جا اسراف، شہر روم کی آگ زنی کیلئے تاریخ میں خاصا بدنام ہے۔ قحط کا مقابلہ کرنے کیلئے عمائدین نے بادشاہ کو مشورہ دیا کہ بحری جہازوں کو مصر اور دیگر ممالک میں بھیج کر گندم منگوائی جائے، تاکہ فاقہ زدہ عوام کو راحت مل سکے۔ جہاز روم سے روانہ تو ہوئے، مگر واپسی پر ان پر گندم کے بجائے، مصر کے ریگستانوں کی باریک ریت لدی ہوئی تھی
مزید پڑھیے


زنجیریں پگھل سکتی ہیں

منگل 31 مارچ 2020ء
ہارون الرشید
سمت نصیب ہو تو ابتلا سے قومیں اور بھی طاقتور بن کے ابھرتی ہیں۔ زخم ہی نہیں دھلتے بلکہ نئے جہان نمودار ہوتے ہیں۔صدیوں سے چلی آتی زنجیریں پگھل جاتی ہیں۔ آدمی اپنے رجحانات کا اسیر ہوتاہے۔ کوئی بڑا خوف،خطرہ اور دھچکا ہی ذہن کے منجمد سانچے پگھلاتا ہے۔ کبھی کسی نے کہا تھا:I have grown a jungle in my mind'I dare not to enter in۔ اپنے سر میں ایک جنگل میں نے اگا لیا ہے، جس میں داخل ہونے کی ہمت نہیں پاتا۔ نفی ء ذات کی ضرورت یہیں ہوتی ہے۔عارف نے کہا تھا:زیاں بہت ہے، انسانی زندگی میں زیاں
مزید پڑھیے


راشن تقسیم کمیٹیاں

منگل 31 مارچ 2020ء
اداریہ
پنجاب حکومت نے مستحقین میں مفت راشن کے لئے رقم تقسیم کرنے کے لئے کمیٹیاں قائم کر دی ہیں جن کے ذریعے 48گھنٹوں میں 4ہزار روپے فی گھر مستحقین کی دہلیز پر تقسیم کئے جائیں گے۔ حکومت کرونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے ملک بھر میں مکمل لاک ڈائون سے اس لئے گریزاں تھی کہ ایسا کرنے سے لوگ گھروں میں فاقوں پر مجبور ہو جائیں گے۔ وزیر اعظم عمران خاں بھی متعدد بار مکمل لاک ڈائون سے پہلے لوگوں کے گھروں میں کھانا پہنچانے کا بندوبست کرنے کی بات کرتے رہے ہیں اس مقصد کے لئے وزیر اعظم
مزید پڑھیے


خون کی بیماریوں میں مبتلا بچوں کو نہ بھولیے!

منگل 31 مارچ 2020ء
اداریہ
کرونا وائرس سے لوگوں کی سرگرمیاں اور آمدورفت محدود ہو نے کے باعث خون کا عطیہ کرنے والوں کی تعداد بھی کم ہو گئی ہے۔ اس صورتحال میں تھیلسیمیا، ہیموفیلیااور دوسرے ایسے مریض بچوں کی جان پر بن آئی ہے جنہیں وقفے وقفے سے خون ملنا ضروری ہوتا ہے۔ روزنامہ 92 نیوز کی رپورٹ کے مطابق تعلیمی ادارے، فیکٹریاں، دفاتر اور کام کی دیگرجگہیں چونکہ بند ہیں اسلئے خون عطیہ کرنے والے بھی گھروں تک محدود ہو کر رہ گئے ہیں۔ اس وقت صورتحال یہ ہے کہ بہت سی این جی اوز خون کی بیماریوں میں مبتلا بچوں کیلئے اپنے
مزید پڑھیے


تعمیراتی اور مال برداری سیکٹر کو فعال کرنے کا فیصلہ

منگل 31 مارچ 2020ء
اداریہ
وفاقی حکومت نے تعمیراتی صنعت کو فوری طور پر فعال کرنے‘ مال بردار گاڑیوں کے لئے شاہراہیں کھولنے‘فوڈ سپلائی چین بحال کرنے اور سرمایہ کاروں کو تعمیراتی شعبے میں رعایت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیر اعظم نے ساتھ ہی ذخیرہ اندوزوں کو انتباہ کیا ہے کہ وہ اگر اپنے مذموم کام سے باز نہ آئے تو ان پر سختی کی جائے گی۔کرونا وائرس کی وجہ سے تمام شعبے دبائو کا شکار ہیں اندریں حالات اگر بہتری کے لئے کچھ تدابیر اختیار کی جا سکتی ہیں تو ان سے ضرور رجوع کیا جانا چاہیے۔ حکومت کی طرف سے ابتدائی فیصلوں
مزید پڑھیے


رحم کر اپنے نہ آئینِ کرم کو بھول جا

منگل 31 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
حکومت پر تنقید بہت ہو چکی‘ کرونا کی وبا سے نمٹنے میں کس سے کہاں غلطی ہوئی؟سب عیاں ہے ۔اجتماعی اور انفرادی سطح پر توبہ و استغفار کا سلسلہ جاری ہے ۔گھروں اور مساجد میں رات کے وقت اذانوں کی دیرینہ روائت کا احیا ہوا ۔بیت اللہ‘ مسجد نبویؐ اور دنیا کے ایک کونے سے دوسرے کونے تک پھیلی مساجد کی بندش سے اہل ایمان کو یہ پیغام ملا کہ پہلے اللہ تعالیٰ موذن کے ذریعے ہر کلمہ گو کو اپنے گھر بلاتا تھا مگر غافل‘ کاہل اور زود فراموش انسان نے اس بلاوے کی پروا نہ کی اب لوگ
مزید پڑھیے


زندگی محفوظ ہے

منگل 31 مارچ 2020ء
سعد الله شاہ
انسان کے بس میں کچھ بھی نہیں‘ بس جستجو واجب ہے مالی دا کم پانی لانا بھر بھر مشکاں پاوے۔ مالک دا کم پھل پھل لانا لاوے یا نہ لاوے۔ قدرت نے فطرت میں بہت کچھ رکھا ہے۔ یہ دوست بھی اور استاد بھی۔انسان کی افتاد طبع بھی مگر عجیب ہے ۔بے نیازی‘ لاپرواہی یا بغاوت اس کی زنبیل میں مگر ناکامیاں ہیں اور اس کے سامنے ابدی پیغام بھی ہے کہ وہ خسارے میں ہے وہ کرے بھی تو کیا کرے کہ صنوبر باغ میں آزاد بھی ہے پابہ گل بھی ہے اور پھر غالب کے بقول مرنے اور
مزید پڑھیے






کالم نگار

اداریہ
اداریہ





سجاد میر
شہر آشوب




مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں

مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ



افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے

رضا رومی
رومی نامہ




سعید خا ور
حر ف درما ں


راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ





ارشاد محمود
بات یہ ہے

عا بد قر یشی
تجا ہل عا دلا نہ



ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

عابد قریشی
تجاہل عادلانہ

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ

شاہین صہبائی
چلتے چلتے


سعید خاور
حرفِ درماں


مظفر بخاری
گستاخی معاف

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
دروا‍‌زہ

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

وسی بابا
باتاں


محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم