لاہور(اپنے سٹاف رپورٹر سے )ضلعی انتظامیہ لاہور نے کرونا وائرس کے خدشات کے پیش نظرپناہ گاہوں کی تعداد میں اضافہ کر دیا ہے ۔ پانچ مزید عارضی پناہ گاہیں بنا دی گئیں ہیں۔ضلعی انتظامیہ لاہور نے عارضی طور پر پناہ گاہوں میں مقیم افراد کی 21 مارچ تا 23 مارچ تک کی رپورٹ جاری کردی ہے ۔ ڈی سی لاہور دانش افضال نے کہا کہ شہر میں اس وقت پانچ مستقل اور پانچ عارضی پناہ گاہیں ہیں۔مستقل اور عارضی پناہ گاہوں میں مجموعی طور پر 779 افراد نے قیام کیا۔مین روڈ شاہدرہ عارضی پناہ گاہ میں 39 افراد نے قیام کیا ۔صدر چوک کینٹ میں قائم عارضی پناہ گاہ میں 40 افراد نے قیام کیا، انہیں ناشتہ اور رات کا کھانا بھی فراہم کیا گیا۔فتح گڑھ عارضی پناہ گاہ میں 26 افراد نے قیام کیا ۔گورنمنٹ ہائی سکول فار بوائز گجومتہ لاہور میں عارضی پناہ گاہ میں 44 افراد نے قیام کیا ۔یو سی آفس رائیونڈ میں 22 افراد نے قیام کیا ۔ ڈی سی نے کہاکہ مین شاہدرہ روڈ پناہ گاہ، صدر چوک کینٹ، فتح گڑھ میں 1 رات کے لئے کم ازکم 20 افراد، جبکہ گورنمنٹ بوائز سکول گجومتہ میں 30 افراد اور یو سی آفس رائیونڈ میں 15 افراد قیام کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مستقل طور پر قائم بھاٹی گیٹ پناہ گاہ میں 144 افراد، بادامی باغ فروٹ و سبزی مارکیٹ پناہ گاہ میں 100 افراد نے قیام کیا۔ لاری اڈہ 100، ٹھوکر نیاز بیگ میں 100، ریلوے سٹیشن پناہ گاہ میں 144 جبکہ ایچ بلاک ماڈل ٹاؤن میں 30 افراد نے قیام کیا۔