اسلام آباد(سپیشل رپورٹر ،مانیٹرنگ ڈیسک ) حکومت نے خیبر پختونخوا میں کورونا کیسز بڑھنے پرجلسوں کے منتظمین کے خلاف مقدمے درج کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے ٹویٹ میں کہا کہاپوزیشن غیر ذمہ داری کا ثبوت دینے پر تلی ہوئی ہے ، جلسے منعقد کرنے پر بضد ہونا ان کی غیر جمہوری سوچ ، غیر ذمہ دارانہ رویے کا عکاس ہے ، عدالتی، حکومتی احکامات کے بعد جلسے منعقد کرنے کا کوئی قانونی ، اخلاقی جوازنہیں بنتا، ذاتی مفاد کے لئے عوام کی صحت اور زندگیوں سے کھیلنا سب سے بڑی خود غرضی ہے ۔ سینیٹر فیصل جاوید نے ٹویٹ میں کہا کہ پی ڈی ایم معصوم لوگوں کی جانوں کو خطرے میں ڈال رہے ہیں ، ریاست مخالف تقاریر کرنے والے کرپشن زدہ اتحاد کا کوئی مستقبل نہیں ہے ۔ وفاقی وزیر برائے مواصلات وپوسٹل سروسز مراد سعید نے ٹویٹ میں کہا کہ کورونا پر قابو پانے اور معاشی نقصان سے بچنے کے لیے این سی او سی کی تجاویز پر عمل ضروری ہے ، اپوزیشن عوام سے اپنی شکست کا بدلہ لینا چا ر ہی ہے ۔ معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ بختاور کی منگنی پر کورونا ٹیسٹ لازم لیکن عوام کی جانوں کا خیال نہیں ہے ، یہ ہے وہ فرعونیت اور ظالمانہ سوچ جو عوام کو کم تر سمجھتے ہیں۔ مشیر احتساب شہزاد اکبر ،اسد عمر، علی زیدی نے بھی جلسوں کو روکنے کیلئے ٹوئٹر کا سہارا لے لیا ، صرف ایک گھنٹے کے دوران حکومتی ارکان نے پی ڈی ایم جلسوں پر کڑی تنقید کی اور اسے عوام کی صحت سے کھلواڑ قرار دیدیا ۔ شیخ رشید نے کہاہے کہ ووٹ کو عزت دو ،لیکن ووٹر کو کورونا سے مرنے دو یہ ہے ہمارا دوہرا معیار۔ کورونا سے ملک کی بنیادیں ہل جائے اپوزیشن کو کوئی فرق نہیں پڑتا کیونکہ ان کی اولادیں اور خونی رشتے دار ملک سے باہر ہیں اور غریب کا بچہ قربانی کے لئے انہیں درکار ہے ۔