کورونا کی تیسری لہر کے باعث ایک دن میں 114افراد کے جاں بحق ہونے کا نیا ریکارڈ قائم ہو گیا ہے۔ کورونا کی یہ تیسری لہر کسی بھی طرح کم نہیں ہو رہی ہے اور ہر دن اموات کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے جو حکومت اورملک کے ہر شہری کے لیے لمحۂ فکریہ ہونا چاہیے۔ اب ملک بھر میں کورونا سے جاں بحق ہونے کی مجموعی تعداد بڑھ کر 15443تک پہنچ چکی ہے جبکہ 24گھنٹوں میں 5050نئے کیسز بھی رپورٹ ہوئے ہیں۔ یہ گھمبیر اور خطرناک صورتحال ہمارے لیے غوروفکر کے ساتھ ساتھ عملی اقدامات کی متقاضی ہے۔ لہٰذا ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومتی ایس او پیز پر سختی سے عمل کیا جائے۔ ملک کا ہر شہری ماسک کا استعمال کرے، اجتماعات میں شرکت اور بازاروں میں بے جا جانے سے اجتناب کیا جائے۔ اپنے جسم کے دفاعی نظام کو بہتر بنانے کے لیے اچھی اور صاف ستھری غذا کا استعمال کیا جائے ۔بچوں اور معمر افراد کے کورونا سے بچائو کے لئے خصوصی توجہ دی جائے تا کہ کورونا کی اس شدید تیسری لہر کی تباہ کاریوں کو کم سے کم کیا جا سکے۔ محکمہ صحت نے حالات کی سنگینی دیکھتے ہوئے مکمل لاک ڈائون کی سفارش بھی کر دی ہے ۔ موجودہ صرتحال میں شہریوں کو چاہیے کہ وہ حکومتی ہدایت اوراحتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کریں ورنہ مکمل لاک ڈائون کی صورت میں بہت سی معاشی اور دیگر مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔