لاہور(سپورٹس رپورٹر) دورہ پاکستان کے لئے نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم 18 سال بعد اسلام آباد پہنچ گئی، نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم ڈھاکہ سے چارٹرڈ فلائٹ پر اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچی ۔اسلام آباد پہنچنے پر مہمان ٹیم کو سخت سکیورٹی میں نجی ہوٹل منتقل کیا گیا جہاں نیوزی لینڈ سکواڈ ارکان کاکورونا وائرس ٹیسٹ کیا گیا اور سکواڈ ایک دن کی روم آئسولیشن میں چلا گیا۔ کورونا ٹیسٹ منفی آنے پر مہمان ٹیم کوایک روز بعد13 ستمبر کوپریکٹس کی اجازت ملے گی۔مہمان ٹیم دورہ میں تین ایک روزہ اور پانچ ٹی ٹونٹی میچ کھیلے گی۔ نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کا 15 ستمبر کو انٹر سکواڈ میچ شیڈول ہے اور تینوں ون ڈے میچ پنڈی سٹیڈیم میں کھیلے جائیں گے ۔ پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان پہلا ون ڈے 17 ستمبر کوپنڈی سٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔ دوسری طرف پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ون ڈے انٹرنیشنل سیریز کا سٹیٹس تبدیل کردیا گیا۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق آئندہ ہفتے کھیلے جانے والے 3 ون ڈے اب آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ سپر لیگ کا حصہ نہیں ہوں گے ۔پی سی بی اعلامیہ کے مطابق تینوں ایک روزہ میچ دو طرفہ سیریز کے میچز شمار کیے جائیں گے ۔یہ فیصلہ ڈی آر ایس کی عدم دستیابی کے باعث کیا گیا ہے کیونکہ آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ سپر لیگ کی پلیئنگ کنڈیشنز کے لئے ڈی آر ایس ایک لازم جوز ہے ۔ یہ تینوں میچز اب آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ سپر لیگ کی بجائے دو طرفہ سیریز کے میچز شمار کیے جائیں گے ۔نیوزی لینڈ کو اب 2 ٹیسٹ اور 3 ون ڈے انٹرنیشنل میچز پر مشتمل سیریز کھیلنے کے لیے دوبارہ 2022 ء میں پاکستان کا دورہ کرنا ہے ۔ لہٰذا دونوں بورڈز نے اتفاق کیا ہے کہ اب اُس سیریز میں شامل تین ون ڈے انٹرنیشنل میچز آئی سی سی مینز کرکٹ ورلڈ کپ 2023 ئکی کوالیفیکشین کہلائیں گے ۔