اسلام آباد ،کراچی (خصوصی رپورٹ ) کونسل آف پاکستان نیوز پیپرز ایڈیٹرز (سی پی این ای) نے ملک کی تمام میڈیا تنظیموں کی جانب سے میڈیا ٹربیونلز قائم کرنے کے فیصلے کو یکسر مسترد کرنے کا خیرمقدم کرتے ہوئے اپنی بھرپور حمایت کا اعلان کیا ہے ۔ سی پی این ای نے ایک مرتبہ پھر واضح کیا ہے کہ میڈیا ٹربیونلز قائم کرنے کا فیصلہ فوری طور پر واپس لیا جائے ورنہ احتجاج کیا جائے گا ۔ یہ اعلان سی پی این ای کے نائب صدر اور اسلام آباد کمیٹی کے چیئرمین سردار خان نیازی کی زیر صدارت اسلام آباد کمیٹی کے غیر معمولی اجلاس میں کیا گیا، اجلاس میں سی پی این ای کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر جبار خٹک ، جوائنٹ سیکرٹری شکیل احمد ترابی، ممبران عامر الیاس رانا، سید سفیر حسین شاہ، ممتاز احمد صادق ، عبدالاسلام باٹھ ، طارق سمیر، سجاد عباسی اور سید نقی کاظمی نے شرکت کی ۔ اجلاس میں میڈیا ٹربیونلز کے قیام کے فیصلے کے مضمرات پر تبادلہ خیال کیا گیا ،اس موقع پر کہا گیا ہے کہ وفاقی حکومت کا یہ فیصلہ میڈیا کی آزادی سلب کرنے کی کوشش اور میڈیا مخالف پالیسیوں کا تسلسل ہے ،اسے کسی طورپر قبول نہیں کیا جائے گا، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تمام میڈیا تنظیموں کی مشترکہ جدوجہد کا بھرپور ساتھ دیا جائیگا اور کسی صورت میڈیا پر قدغن برداشت نہیں کیا جائے گا اور اس سلسلے میں مشترکہ سٹینڈنگ کمیٹی کے ہر فیصلے کی حمایت کی جائیگی ،سی پی این ای آزادی اظہار رائے اور آزادی صحافت پر قدغنیں لگانے کی ہر کوشش کے خلاف بھرپور احتجاج کریگی ، سی پی این ای نے فیصلہ کیا کہ حکومتی فیصلے کیخلاف صحافی برادری کے نمائندوں اور تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت بعد آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائیگا ،اجلاس میں حکومت سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ سینٹرل میڈیا لسٹ کا خیال رکھتے ہوئے سرکاری اشتہارات میرٹ پر جاری کئے جائیں اور سرکاری اشتہارات کے اجراء میں میڈیا اداروں کیلئے میرٹ پر مساوات کی پالیسی اپنائی جائے ، سی پی این ای اسلام آباد کمیٹی کو مزید فعال بنایا جائے گا اور ہر ماہ اسلام آباد میں کم ازکم دو پروگراموں کا انعقاد کیا جائے گا جن میں حکومتی و سیاسی شخصیات کو بھی بلایا جائے گا ۔