اسلام آباد،نئی دہلی(سپیشل رپورٹر،مانیٹرنک ڈیسک ،آن لائن) پاکستان کیخلاف بھارتی وزیر اعظم نریندرا مودی کی ہرزہ سرائی اورناگروٹامقبوضہ کشمیرمیں حملے کی مبینہ منصوبہ بندی میں ملوث کرنے پر پاکستانی دفترخارجہ نے بھارتی ناظم الامور کودفترخارجہ طلب کرکے شدید احتجاج کیا ۔ گزشتہ روزترجمان دفترخارجہ زاہد حفیظ چودھری نے کہاکہ پاکستان کو ناگروٹا مقبوضہ کشمیر میں مبینہ حملے کی منصوبہ بند ی میں ملوث کرنے کی بھارتی سازش مسترد کرتے ہیں۔ ترجمان نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم، وزارت خارجہ نے پوری منصوبہ بندی سے پاکستان پر الزامات تھونپنے کی کوشش کی،بھارتی وزیر اعظم کے بے بنیاد الزامات بوکھلاہٹ کا نتیجہ اور مقبوضہ کشمیر میں جاری بربریت سے دنیا کی توجہ ہٹانے کی کوشش ہے ،بھارتی الزامات کا مقصد پاکستان مخالف ریاستی دہشتگردی کو چھپانا ہے ،ہندوستان پاکستان کو بدنام کرنے کیلئے ہر حربہ استعمال کر رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر اور داخلی سطح پر پاکستان کو بدنام کرنے سے متعلق بھارت کی پوری تاریخ ہے ،پاکستان کو کسی بھی جعلی آپریشن یا حملے میں ملوث کرنے کی کسی کوشش کی کوئی حیثیت نہیں، ہندوستان کسی بھی قسم کی مہم جوئی کی کوشش سے پہلے 2019ء یاد رکھے ،بھارت کے مقبوضہ کشمیر اور داخلی سطح پر فالس فلیگ آپریشنز سب کو معلوم ہیں۔ترجمان نے کہا کہ پاکستان پہلے ہی ڈوزیئر میں بھارتی ریاستی دہشتگردی کے ناقابل تردید شواہد پیش کرچکا ہے ،بھارت نے ڈوزیئر آنے کے بعد پاکستان مخالف پروپیگنڈا میں اضافہ کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ ڈوزیئر نے بھارت کے دہشتگردوں سے رابطوں کی قلعی کھول کر رکھ دی،بھارتی تردید اور الزامات کی پرانی رٹ سے حقائق تبدیل نہیں ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردتنظیمو ں کی پشت پناہی کرنیوالے بھارت کا محاسبہ عالمی برادری کی مجموعی ذمہ داری ہے ۔اقوام متحدہ پاکستان کے فراہم کردہ شواہد پر بھارت کیخلاف موثر اقدامات کرے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت، پاکستان کیخلاف دہشتگردی کیلئے دیگر ممالک کی سرزمین کا استعمال بند کرے ،کشمیریوں کو اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت حق خودارادیت دیا جائے ۔ادھر بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے علاقے ناگروٹا میں دہشتگردانہ حملے کی نام نہاد منصوبہ بندی میں پاکستان کے کردار کا الزم عائد کرتے ہوئے دہلی میں پاکستانی ناظم الامورکو طلب کیا اور ایک احتجاجی مراسلہ بھی انکے حوالے کیا ۔احتجاجی مراسلہ میں بھارت نے کہا ہے کہ ہرزہ سرائی کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان سرحد پار دہشتگردوں کی معاونت بند کرے جبکہ اپنی سرزمین پر دہشتگردوں کے ٹھکانے ختم کرنے کے لئے موثر کارروائیاں کرے ۔