اسلام آباد ( خبر نگار خصوصی) ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ گرفتاری ہو یا نظر بندی ،کسی بھی صورت میں آزادی مارچ ملتوی نہیں ہو گا ۔انہوں نے کہا میری گرفتاری کی صورت میں سیکنڈ آپشن کے تحت حکمت عملی وضع کی جائے گی۔ ذرائع کے مطابق اکتوبر میں اسلام آباد میں آزادی مارچ سے قبل مولانا فضل الرحمن کی ممکنہ گرفتاری کے بعد مارچ کی قیادت کیلئے ناموں پر غور شروع کر دیا گیا۔ مولانا فضل الرحمن کی ممکنہ گرفتاری کے بعد کمانڈ کیلئے مولانا عبدالغفور حیدری، اکرم خان درانی، راشد خالد سومرو ، مولانا اسعد محمود کا نام زیر غور ہیں۔ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمن نے اکتوبر میں اسلام آباد لاک ڈاؤن کے لیے سیاسی رابطوں کا آغاز کر رکھا ہے اور انہیں بعض سیاسی جماعتوں کے کچھ قائدین کی طرف سے گرین سنگل بھی مل رہے ہیں۔