لاہور، نارووال(کر ائم رپورٹر ، نمائندہ 92 نیوز/ انوارالحق چودھری) انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے کہاہے کہ ٹورسٹ کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے پنجاب ٹورسٹ پولیس کا قیام عمل میں لایا گیاہے ۔کرتارپور آنے والے سکھ یاتریوں کی سکیورٹی کو یقینی بنایا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے نارووال میں پنجاب ٹورسٹ پولیس کے باقاعدہ افتتاح کے بعد تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا ماضی میں پنجاب سمیت ملک بھر میں دہشتگردی کی وجہ سے ٹورسٹ کی تعداد نہ ہونے کے برابر تھی ۔ مسلح افواج ، پولیس اور دیگر فورسز نے ملکر دہشتگردی کا خاتمہ کیاہے ۔ دہشتگردی کے خاتمہ کیلئے تمام فورسز نے شہادتیں دیں اور ملک میں امن قائم کیا، پنجاب میں 1500 پنجاب پولیس اہلکاروں نے قربانیاں دی ہیں۔دہشت گردوں کے خاتمہ کے بعد اب امید ہے غیر ملکی ٹورسٹ پاکستان کا رخ کریں گے ۔ پنجاب ٹورسٹ پولیس کرتارپور آنے والے سکھ یاتریوں اور دیگر ٹورسٹ کو مکمل تحفظ فراہم کرے گی ۔ کرتار پور کے بعد مری، فورٹ منرو اور ننکانہ صاحب و دیگر اضلاع میں بھی ٹورسٹ پولیس کا آغاز کیا جائے گا۔ کرتارپور آنے والے سکھ یاتریوں اور ٹورسٹ کو مکمل تحفظ اور سکیورٹی فراہم کی جائے گی۔ عارف نواز نے کہا پنجاب میں آبادی کے تناسب سے پولیس نفر ی انتہائی کم ہے ، پنجاب کے 726پولیس سٹیشن میں سے 120پولیس سٹیشن کرائے کی عمارت میں ہیں ۔ پولیس ملازمین کے رویہ کی اکثر شکایات ملتی ہیں ، پولیس ملازمین 24گھنٹے ڈیوٹی کرکے شہریوں کی جان ومال کی حفاظت کرتے ہیں ان کو ہفتے میں ایک چھٹی ملتی ہے ۔حکومت کے پاس وسائل کم ہیں جس کی وجہ سے 2009کے بعد ہماری پولیس میں ایک بھی کانسٹیبل کا اضافہ نہیں ہوا ۔ نارووال سے شروع کی گئی ٹورسٹ پولیس کے پہلے دستے میں100جوان شامل ہیں جنہیں پولیس کالج چوہنگ سے پبلک ڈیلنگ اور کرائم فائٹنگ کی خصوصی تربیت دی گئی ہے جبکہ انہیں جدید ہیوی بائیکس سمیت تمام درکار سہولیات بھی فراہم کی گئی ہیں۔آئی جی پنجاب نے دربار صاحب کرتار پورکا بھی دورہ کیا اور کل ہونے والی افتتاحی تقریب کے حوالے سے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیا۔ آئی جی پنجاب نے ڈسٹرکٹ پولیس لائنز نارووال کا دورہ کیا جہاں پولیس کے چاق و چوبند دستے نے سلامی پیش کی۔ آئی جی پنجاب نے یادگار شہدا پر پھول چڑھائے اور شہداء کے درجات کی بلندی کیلئے فاتحہ خوانی بھی کی۔