لاہور،کراچی(سٹاف رپورٹر،کرائم رپورٹر، سپیشل رپورٹر،نمائندہ خصوصی سے ، جنرل رپورٹر،اپنے سٹاف رپورٹرسے ، خبرنگار ، 92 نیوز رپورٹر،92نیوزرپورٹ،این این آئی)حضرت امام حسین رضی اﷲ تعالی عنہ اورانکے ساتھیوں کی اسلام کی سربلندی اور حق وصداقت کیلئے میدان کربلا میں دی گئی عظیم قربانی کی یاد میں آج یوم عاشور مذہبی عقیدت و احترام سے منایا جائیگا ۔ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں، قصبوں میں ذوالجناح اور تعزیے کے جلوس برآمد ہونگے ،مرکزی امام بارگاہوں سے نویں اور دسویں محرم کی درمیانی شب مرکزی جلوس برآمد ہو گئے جو اپنے روایتی راستوں سے ہوتے ہوئے آج 10محرم الحرام کواپنی منزل مقصود پر پہنچ کر اختتام پذیر ہوں گے جس کے بعدشام غریباں برپا کی جائیں گی۔لاہور میں شبیہ ذوالجناح کا مرکزی جلوس نثار حویلی سے برآمد ہوا جو آج اپنے مقرر کردہ راستوں سے ہوتا ہو مغرب کے وقت کربلا گامے شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوگا۔جلوس کی سکیورٹی کیلئے 5ہزار سے زائد اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے ،جلوس کے روٹ پر موبائل فون سروس بند رہے گی۔سی سی پی او لاہور بی اے ناصر مرکزی کنڑول روم سے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیں گے جبکہ ڈی آئی جی آپریشن لاہور اشفاق احمد،ایس ایس پی آپریشن اسماعیل کھاڑک اور ایس پی سٹی سید غضنفر علی شاہ سمیت دیگر افسرموقع پر موجود رہینگے ۔9 محرم الحرام کا شبیہ ذوالجناح کا لاہور کا سب سے قدیمی جلوس پانڈو سٹریٹ اسلام پورہ سے برآ مد ہو کر اپنے روایتی راستوں سے ہوتا ہوا رات بارہ بجے سعدی روڈ امام بارگاہ پانڈو سٹریٹ پر ختم ہوا۔علاوہ ازیں امامیہ کالونی ،ٹھوکر نیاز بیگ ،لٹن روڈ ،چوہنگ،شادباغ ،مغلپورہ ،سمن آباد،یتیم خانہ، سبزہ زار،قلعہ گجر سنگھ ،بی بی پاکدامن ،وحدت روڈپر مجالس کا اہتمام کیا گیا اور جلوس نکالے گئے ۔۔ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی طرف سے یوم عاشور پر سکیورٹی کیلئے فول پروف انتظامات کئے گئے ہیں۔ ماتمی جلوسوں کے روٹس اور اطراف میں موبائل فون سروس جلوسوں کے اختتام تک معطل رہیگی۔ملک بھر میں امن وامان کو یقینی بنانے کی غرض سے پولیس کیساتھ پاک فوج ، رینجرز اور ایف سی کے دستے بھی حفاظتی ڈیوٹیوں پر تعینات ہیں۔لاہور ، کراچی ، پشاور سمیت ملک کے بڑے شہروں میں نویں محرم الحرام کی طرح دس محرم کو بھی ڈبل سواری پر مکمل پابندی ہو گی ۔دس محرم الحرام کو مرکزی جلوسوں میں شامل ہونے والے مختلف مقامات پر جامع تلاشی کے بعد شامل ہو سکیں گے اس کے لئے واک تھرو گیٹس بھی نصب کیے گئے ہیں جبکہ جلوسوں کے منتظمین اور رضا کار بھی حفاظتی ڈیوٹیوں پر تعینات ہیں۔ جلوس کے راستوں میں بغیر اجاز ت پانی اور دودھ کی سبیلیں لگانے اور نیاز تقسیم کرنے کی اجازت نہیں اور اس سلسلہ میں منتظمین کو ذمہ داری سونپی گئی ہے کہ وہ اس پر پابندی کے ذمہ داری ہوں گے کہ کوئی بھی اجنبی شخص اپنے طور پر کھانے پینے کی اشیا تقسیم نہ کرے ۔جلوسوں کے راستوں میں آنے والے تجارتی مراکز اور رہائشگاہوں کی جامع تلاشی کے بعد ان کی چھتوں پر سنائپرز تعینات کئے گئے ہیں ۔عاشور کے موقع پر کسی بھی نا خوشگوار واقعہ سے نمٹنے کے لئے امام بارگاہوں، مساجد، عبادت گاہوں اور مزارات کی سکیورٹی بھی سخت کر دی گئی ہے ۔جبکہ کسی بھی نا خوشگوار واقعہ کے پیش نظر تمام سرکاری ہسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ ہے اور تمام ایم ایس صاحبان کو ڈاکٹروں اورپیرا میڈیکل سٹاف کو الرٹ رکھنے اور ادویات کا متعلقہ سٹاک پورا رکھنے کی ہدایات بھی جاری کی گئی ہیں ۔پنجاب حکومت نے یوم عاشور کے موقع پر جلوسوں کی فول پروف سکیورٹی کے حوالے سے تمام انتظامات پیشگی مکمل کر لئے ہیں ۔ جلوسوں کے روٹس اور حساس مقامات پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب ہیں ۔یوم عاشور کے موقع پر شعبہ ہیلتھ کی جانب سے لاہور میں مرکزی جلوس کے روٹ پر تین عارضی ہسپتال قائم کئے جائیں گے ۔ محکمہ داخلہ کے حکم نامے کے مطابق نو محرم الحرام کو ڈبل سواری پر پابندی کے فیصلے کی خلا ف ورزی کرنے پر متعددموٹرسائیکل سواروں کو تھانوں میں بند کر دیا گیا جبکہ جرمانے بھی کئے گئے ۔ڈی سی لاہور صالحہ سعیدکا کہنا ہے کہ جلوسوں میں عوام الناس اپنے اردگرد مشکوک افراد پر نظر رکھیں۔حضرت اما م حسینؓ کے جوان فرزند حضرت علی اکبرؓکی شہادت کی مناسبت سے کراچی میں نویں محرم الحرام کا جلوس نشتر پارک سے برآمد ہوا۔10 محرم الحرام کے جلوسوں کے روٹ پرکراچی سمیت سندھ بھرمیں484 مقامات پرموبائل فون سروس جزوی بند رہیگی،کچھ شہروں میں انٹرنیٹ سروس بھی جزوی طور پر بند کی جائیگی۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں میں 9 محرم الحرام کا مرکزی جلوس جی سکس ٹو مرکزی امام بارگاہ اثنا عشری سے برآمد ہوکر مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا واپس مرکزی امام بارگاہ میں ہی اختتام پذیر ہو گیا۔ خیبرپختونخواکے مختلف شہروں میں 9 محرم کو موبائل فون سروس جزوی طور پر معطل رہی۔ پشاور میں نویں محرم کی عزاداری اور شبیہ ذوالجناح کا سب سے بڑا جلوس امام بارگاہ حسینہ ہال صدر سے برآمد ہو ا۔ نماز مغرب سے قبل جلوس واپس امام بارگاہ حسینہ ہال پہنچ کر اختتام پذیر ہو ا ۔سرگودھا میں9 محرم کامرکزی جلوس شیرازی منزل بلاک نمبر23سے شروع ہوکرمرکزی امام بارگاہ بلاک نمبر 7میں اختتام پذیرہوا۔ کوئٹہ میں نویں محرم الحرام کا شبیہ ذوالجناح ، علم اور تعزیوں کا جلوس میگانگی روڈ پرامام بارگاہ ناصرالعزا سے برآمدہوا جو پرنس روڈ پرامام بارگاہ کلاں ہزارہ پر پہنچ کر اختتام پذیرہوا۔ راولپنڈی میں بھی یوم عاشور عقیدت و احترام سے منایا جائیگا، مرکزی جلوس ذوالجناح امامبارگاہ عاشق حسین تیلی محلہ سے برآمد ہوگا ۔

اسلام آباد ،لاہور،کراچی(سپیشل رپورٹر، وقائع نگار خصوصی، سٹاف رپورٹر، وقائع نگار، نیوزایجنسیاں) صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی اوروزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ شہادت امام حسینؓ حقیقت میں انسانیت کی فتح اور اسلامی اصولوں کی سربلندی ہے ۔ یوم عاشور پر قوم کے نام اپنے پیغام میں صدر عارف علوی نے مزید کہا کہ آئیے آج کے دن تجدید عہد کریں کہ ہم اُسوہ حسینؓ کی روشنی میں ہر وہ کام کریں گے جو اعلائے کلمۃ اللہ ، فروغ حق، اسلامی روایات کی پاسداری اور ملک کی ترقی و خوشحالی کیلئے مفید ہو۔ وزیر اعظم عمران نے پیغام میں مزیدکہا کہ جذبہ شبیری ؓ مسلمانوں کے ایمان و یقین، سچائی اور اصول پرستی کی روایت کو جلا بخشتا ہے ۔ یوم عاشور پرہمیں کشمیر میں بھارتی سامراج سے برسرپیکار عوام کی قربانیوں کو بھی خراجِ تحسین پیش کرنا چاہئے جنہوں نے سنتِ امام حسینؓ کو زندہ رکھا اور کربلا کی طرح کشمیر کو بھی معرکہ حق و باطل کی ایک عظیم مثال بنادیا۔ سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا کہ حضرت امام حسینؓ اورانکے ساتھی قرآنی تعلیمات،برداشت، قربانی اور جذبہ شہادت کی ایک لازوال مثال ہیں۔مسلم لیگ ن کے صدر اور قائد حزب اختلاف قومی اسمبلی شہبازشریف نے اپنے پیغام میں یوم عاشور پر حضرت امام حسین ؓاور انکے عظیم ساتھیوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امام حسینؓ نے درس دیا کہ سچائی، حق اور اصول پر سمجھوتہ نہ کرو۔فلسطین، کشمیر، روہنگیا سمیت پوری دنیا میں ہر مظلوم کے قائد حضرت حسینؓ ہیں۔مودی نے مقبوضہ کشمیرکے محصارے ، عوام پر خوراک کی بندش، ان کے قتل عام سے کربلا کی یاد تازہ کردی ہے ۔چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے اپنے پیغام میں کہا کہ حضرت امام حسین اور ان کی ساتھیوں کی عظیم قربانی ہمیں یہ درس دیتی ہے کہ ظلم و جبر اور جھوٹ کیخلاف مزاحمت کرنی چاہئے ۔ ہم کربلا کے تمام شہداء کو سلام پیش کرتے ہیں۔سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ آج جب ہم امام عالی مقام اور کربلا کے دیگر شہداء کو خراج عقیدت پیش کر رہے ہیں تو ہمیں ان لوگوں کو بھی یاد رکھانا چاہئے جو مقبوضہ کشمیر اور فلسطین میں ظلم کا شکار ہیں۔ سابق صدر نے ملک میں سیاسی مخالفین کیخلاف ظلم اور ناانصافی کی مذمت بھی کی۔مسلم لیگ ق کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین، سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی اور مونس الٰہی نے کہا کہ بھارت نے کشمیریوں کو بنیادی ضروریات زندگی سے محروم کر کے مقبوضہ کشمیر کو کربلا بنا دیا ہے ۔ کشمیریوں کو مودی حکومت کے ظلم و تشدد، غیرانسانی سلوک اور غیرقانونی چنگل سے نجات دلانے کیلئے ملت اسلامیہ باالخصوص پاکستانی قوم کی جانب سے جذبہ حسینی کے مظاہرہ کی اشد ضرورت ہے ۔ قائد تحریک منہاج القرآن ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ حسینؓ حق یزید جھوٹ تھا ۔سیدنا امام حسین ؓ نے جان کا نذرانہ پیش کرکے قیامت تک کیلئے ظلم، فسق فجور،حرص و ہوس اور فسطائیت کے سامنے نہ جھکنے کا پیغام دیا۔ پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما خورشید شاہ نے کہا کہ واقعہ کربلا میں حضرت امام حسین کی قربانی نے دین اسلام کو پھر سے زندہ کیا۔گورنرسندھ عمران اسماعیل نے یوم عاشورپراپنے پیغام میں کہا کہ امام حسین ؓ نے شہادت کا راستہ اختیار کیا اور اسلام کی راہ میں اپنا سر کٹوا کرایثار و قربانی ، شجاعت و شہادت کی ایک نئی داستان رقم کی۔