اسلام آباد؍ لاہور (وقائع نگار؍لیڈی رپورٹر؍ صباح نیوز) وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ مویشی منڈیوں کے اوقات کار صبح 6سے شام 7بجے تک ہوں گے ، دیہات اور شہروں کے درمیان مویشیوں اور افراد کی نقل و حرکت سے کورونا پھیلنے کا خدشہ ہے ، حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے بروقت اقدامات سے کورونا کے زیادہ پھیلائو کو روکا گیا۔وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر اور نیشنل کوآرڈی نیٹر لیفٹیننٹ جنرل حمودالزمان کے زیرصدارت لاہور میں نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کا اجلاس ہوا جس میں صوبائی چیف سیکرٹریز نے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔ اجلاس میں مویشی منڈیوں کے انتظام اور ایس او پیز کا جائزہ لیا گیا۔ شرکاء کو بتایا گیا کہ ملک بھر میں 700مویشی منڈیاں قائم کی گئی ہیں ، تمام متعلقہ افراد کو ایس او پیز فراہم کر دیئے گئے ہیں۔اس موقع پر اسد عمر نے کہا کہ حکومتی بروقت اقدامات سے کورونا کے زیادہ پھیلائوکو روکا گیا، ملک بھر میں 321مقامات پر سمارٹ لاک ڈاون جاری ہے ، سمارٹ لاک ڈائون کے ذریعے 3لاکھ افراد کو کورونا سے بچایا گیا ہے ، این سی او سی نے 3شہروں میں کورونا کے تیزی سے پھیلاو کی نشاندہی کی۔اسد عمر نے کہا کہ دیہات اور شہروں کے درمیان مویشیوں اور افراد کی نقل و حرکت سے کورونا پھیلنے کا خدشہ ہے ، کورونا کے پھیلائو کو روکنے کے لئے مویشی منڈیوں کا بہتر نظم و نسق ناگزیر ہے ، مویشی منڈیوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا تاہم ان کا حجم چھوٹا ہوگا، مقررہ حد سے زیادہ لوگوں کو منڈی آنے کی اجازت نہیں ہوگی، شہر کے اندر کسی کو مویشی منڈی لگانے کی اجازت نہیں دی جائے گی، مویشی منڈیوں میں ماسک کے استعمال اور سماجی فاصلوں کو یقینی بنایا جائے گا، مویشی منڈیوں کے اوقات کار صبح 6سے شام 7بجے تک ہوں گے ، مویشی منڈیوں کے داخلی راستوں پر سکرینگ کی جائے گی۔لاہور کے بعد ایسے اجلاس دیگر صوبائی دارالحکومتوں میں بھی کئے جائیں گے ۔اسد عمر نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ وزیراعلیٰ کے ساتھ ملاقات میں پنجاب حکومت کی کورونا کی روک تھام کیلئے کوششوں کو سراہا اور سمارٹ لائون، عید پر ایس او پیز پر عملدرآمد کی ضرورت پر زور دیا۔ لاہور(نمائندہ خصوصی سے )وفاقی اور پنجاب حکومت نے عید الاضحیٰ کے موقع پر کورونا وبائکے پھیلنے کے خدشات کے باعث عوام کی حفاظت کو اولین ترجیح قرار دے دیا جبکہ عید الاضحیٰ کے اجتماعات اور اس موقع پر سجائی جانے والی مویشی منڈیوں کے لئے ایس او پیز سامنے آ گئے ۔محکمہ داخلہ پنجاب کے ذرائع کے مطابق لاہور سمیت صوبہ بھر کی مساجد میں عید الاضحیٰ کے موقع پرعید الفطر کے ایس او پیز کو ہی برقرار رکھا جائے گا، مساجد اور امام بارگاہوں میں قالین اور دریاں نہیں بچھائی جائیں گی، صاف فرش پر نما پڑھی جائے گی،اگر کچا فرش ہو صاف چٹائی بچھائی جا سکتی ہے ،مسجد اور امام بارگاہوں کے احاطہ کے اندر عید الاضحیٰ کے اجتماعات کا اہتمام کیا جائے گا،سڑک اور فٹ پاتھ پر نمازپڑھنے سے حتی الوسع اجتناب کیا جائے ،50سال سے زائد عمر کے لوگ، نابالغ بچے ، کھانسی، نزلہ ، زکام وغیرہ کے مریضوں کو مساجد اور امام بارگاہوں میں لانے سے گریز کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق مویشی منڈیاں شہروں کی حدود سے دو سے ساڑھے چار کلو میٹر دور؍باہر سجائی جائیں گی،صوبہ بھر میں مویشی منڈیوں کے اوقات کار صبح 6 سے شام 7بجے تک ہوں گے ،مویشی منڈیوں کی تعداد بڑھائی جائے گی تاہم حجم چھوٹا ہوگا ،مویشی منڈیاں عید سے 10روز قبل مکمل فعال ہوں گی،تمام مویشی منڈیوں میں محکمہ لائیو سٹاک اور ہیلتھ کا کیمپ ہوگا،جانوروں کو کلیئر کرکے منڈیوں تک بھیجا جائے گا، مویشی منڈی میں جانے والوں کے لئے ماسک پہننا ضروری ہوگا اور جانوروں کو بھی ایک محدودفاصلے سے دیکھا جا سکے گا۔