BN

ارشاد احمد عارف

مکافات عمل

جمعه 25 مئی 2018ء

فاٹا بل کی منظوری موجودہ پارلیمنٹ اور حکومت کا کارنامہ ہے۔ فیصلہ قومی سلامتی کمیٹی میں ہوا اور مسلم لیگی حکومت کو اپنے حلیفوں مولانا فضل الرحمن اور محمود اچکزئی کے دبائو سے نکل کر یہ بل منظور کرانا پڑا۔ میاں نواز شریف چاہتے تو اپنے دور حکمرانی میں یہ کریڈٹ لے سکتے تھے مگر فاٹا کے عوام اور قوم کے مفاد پر انہوں نے مولانا اور اچکزئی سے تعلق کو ترجیح دی۔ قوم کو پہلی بار قومی سلامتی کمیٹی کی افادیت کا پتہ چلا اور یہ بھی معلوم ہوا کہ منتخب حکمران کس طرح محض اتحادیوں کو خوش رکھنے
مزید پڑھیے


فوج کے خلاف چارج شیٹ

جمعرات 24 مئی 2018ء
احتساب عدالت میں میاں نواز شریف کا جمع کرایا بیان غلط بیانی کا پلندہ‘ تضادات کا مجموعہ‘ پانامہ پیپرز میں موجود الزامات کی براہ راست تائیداور پاک فوج کے خلاف چارج شیٹ ہے۔ عدالت کے سامنے ہر مجرم ماضی کے مختلف واقعات کو ایک دوسرے سے جوڑ کر سازشی کہانی بیان کر تا ہے اور یہ ہم روزانہ نچلی عدالتوں میںپیشہ ور گواہوں اور عادی مجرموں کی زبانی سنتے ہیں۔بیان کا آغاز ہی غلط بیانی سے ہوا کہ ’’میرے بزرگوں نے پاکستان کی خاطر ہجرت کی‘‘ میاں نواز شریف کے بزرگ قیام پاکستان تو درکنار قرار داد پاکستان کی منظوری
مزید پڑھیے


تیر یا تُکّا

اتوار 20 مئی 2018ء

میاں نواز شریف کا بیانیہ پاکستان میں کتنا مقبول ہوا؟ وثوق سے کچھ کہنا مشکل ہے۔ مسلم لیگ(ن) میں مچی بھگدڑ اور وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے علاوہ‘ میاں شہباز شریف و نثار علی خاں کے متضاد بیانات تو اس بیانئے کو لغو ثابت کرتے ہیں مگر یہ بات ماننی پڑے گی کہ امریکہ اور بھارت نے بیانیے کا خیر مقدم کیا۔ میری اطلاع کے مطابق دو روز قبل بھارتی سیکرٹری خارجہ وجے کیشو گھوکلے نے ایڈیٹرز سے آف دی ریکارڈ گفتگو میں کہا کہ بھارت نے انگریزی اخبار ڈان کو دیے گئے نواز شریف کے انٹرویو کا خیر
مزید پڑھیے


کجھ شہر دے لوک وی ظالم سن

جمعه 18 مئی 2018ء
مسلم لیگ(ن) سے تحریک انصاف کا رخ کرنے والے ارکان اسمبلی پر طنز اور تنقید کے تیر برسانے کا شوق بجا جنہیںمگراللہ تعالیٰ نے سوچنے سمجھنے کی صلاحیت سے نوازا ہے وہ اس بات پر غور کیوں نہیں کرتے کہ یہ ’’لوٹے‘‘ اور ’’فصلی بٹیرے‘‘ اچانک ایک جماعت چھوڑ کر دوسری میں جانے کا فیصلہ کیوں کرتے‘ اور ہمیشہ ان کا فیصلہ درست کیوں ثابت ہوتا ہے؟ قیام پاکستان کے وقت پنجاب کے تین سیاستدانوں کو مرغ بادنما کا نام دیا جاتا تھا دو کا تعلق مظفر گڑھ اور ایک کا رحیم یار خان سے تھا۔ عبدالحمید دستی مرحوم‘ ابراہیم
مزید پڑھیے


’’کوئز لنگ‘‘ نسل کے کچھ سانپ زندہ ہیں

جمعرات 17 مئی 2018ء
میاں نواز شریف نے ممبئی حملوں کے حوالے سے اپنے بیان پر قائم رہ کر اپنے برادر خورد میاں شہباز شریف اور وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو قوم کے سامنے شرمندہ کرایا جو اسے صحافی کی اختراع اور مخالفین کا پروپیگنڈا قرار دے رہے تھے مگر خود کو’’ صاحب کردار‘‘ ثابت کیا ؎ جھوٹ بولا ہے تو قائم بھی رہو اس پر ظفرؔ آدمی کو صاحب کردار ہونا چاہیے اب لوگ لاکھ کہتے پھریں کہ ڈان لیکس درست تھی تو میاں صاحب نے پرویز رشید‘ طارق فاطمی اور رائو تحسین کو قربانی کا بکرا کیوں بنایا؟ وزیر اعظم
مزید پڑھیے


عوض معاوضہ گلہ ندارد

اتوار 13 مئی 2018ء
میاں نواز شریف وزیر اعلیٰ پنجاب تھے، آئی جے آئی تشکیل پا چکی تھی اور جنرل حمید گل مرحوم کی قیادت میں مختلف جماعتوں اور الیکٹ ایبلز کو ہانکا لگا کر آئی جے آئی میں اکٹھا کیا جا رہا تھا۔ ہمارے دوست ڈاکٹر محمد شفیق چودھری انڈیپنڈنٹ پارلیمانی گروپ کے سیکرٹری کے طور پر فیصل آباد کے ایک حلقہ سے قومی اسمبلی کے اُمیدوار تھے، انہیں آئی جے آئی کا ٹکٹ مل چکا تھا کیونکہ طے شدہ فارمولے کے مطابق آزاد گروپ کے ارکان اسمبلی آئی جے آئی کے ٹکٹ کے حقدار تھے۔ ڈاکٹر شفیق چودھری نے حلقے کا رُخ
مزید پڑھیے


پھوکا فائر

جمعه 11 مئی 2018ء

چار ارب نوے کروڑ ڈالر کی بھارت کو منتقلی کے حوالے سے نیب کی پریس ریلیز لوزبال تھی جس پر ماہر بلّے باز کی طرح میاں نواز شریف نے ہٹ لگانے کی کوشش کی مگر بلاّ ہوا میں گھما کر رہ گئے۔ یوں کہ اپنی پریس کانفرنس میں میاں نواز شریف ستر پیشیوں اور احتساب عدالت کی کارروائی کو لے بیٹھے۔ میاں صاحب کے وفادار ساتھیوں اور اندھے پیروکاروں کے سوا سب جانتے ہیں کہ احتساب عدالت میں کارروائی مروجہ قوانین اور عدل و انصاف کے تقاضوں کے مطابق چل رہی ہے اور تاخیر کا سبب استغاثہ نہیں میاں صاحب
مزید پڑھیے


موقع شناسی

جمعرات 10 مئی 2018ء

یہ ان دنوں کی بات ہے جب میاں نواز شریف وزیر اعلیٰ پنجاب تھے اور چودھری پرویز الٰہی نے مخدوم یوسف رضا گیلانی اور میاں محمد آصف سے مل کر بغاوت کا علم بلند کر رکھا تھا ۔اطلاع ملی کہ میاں نواز شریف کی کابینہ کا ایک رکن بھی باغی گروپ سے مل گیا ہے۔ وزیر اعلیٰ کا بیان اخبارات میں چھپا کہ ایک شخص کے جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا‘ مسلم لیگ پارلیمانی پارٹی کے باقی ارکان میاں صاحب کے ساتھ ہیں۔ مجید نظامی صاحب مرحوم نہیں چاہتے تھے کہ مسلم لیگ اور پنجاب حکومت انتشار کا شکار
مزید پڑھیے


کیا زمانے میں پنپنے کی یہی باتیں ہیں

منگل 08 مئی 2018ء

برادر احسن اقبال کو اللہ تعالیٰ حفظ و امان میں رکھے اور شفائے کاملہ عاجلہ عطا فرمائے۔ تلخی بڑھ رہی ہے اور سیاست میں بات تو تو، میں میں سے بڑھ کر گولی تک آ پہنچی ہے۔ درجہ حرارت بڑھانے میں کسی ایک شخص اور گروہ کا کمال نہیں، ہر ایک اپنا حصہ ڈال رہا ہے۔ حکمران بھی کسی سے پیچھے نہیں۔ فرق صرف اتنا ہے کہ اپوزیشن حکومت اور اپنے سیاسی مخالفین پر برہم ہے مگر حکمرانوں کا ہدف اپوزیشن کے علاوہ ریاستی ادارے فوج، خفیہ ایجنسیاں اور عدلیہ ہیں۔ جلتی پر تیل ہر ایک ڈال رہا ہے، پانی
مزید پڑھیے


چارج شیٹ

اتوار 06 مئی 2018ء

وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں اگلا الیکشن خلائی مخلوق کرائے گی‘ الیکشن کمشن کا اصرار ہے ’’نہیں آئین کے آرٹیکل218کے تحت آزادانہ‘ منصفانہ اور غیر جانبدارانہ انتخابات کمشن کے فرائض میں شامل ہے اور وزیر اعظم کا بیان آئین کی روح‘ کمشن کے مینڈیٹ کے خلاف ہے‘‘ وزیر اعظم کی مانیں تو ایک قومی ادارے الیکشن کمشن کی بے بسی‘ بے اختیاری اور بے عملی کا پہلو نکلتا ہے اور الیکشن کمشن کے دعوے پر یقین کریں تو وزیر اعظم غلط بیانی اور مبالغہ آرائی کے مرتکب ٹھہرتے ہیں اور جمہوریت کی بے ادبی ہوتی ہے۔ پاکستان کئی
مزید پڑھیے