BN

ارشاد محمود


اب کوئی علی گیلانی نہ ہوگا


مزاحمت، جدوجہد اور کشمکش کا استعارہ بابائے آزادی سیّد علی گیلانی بھی اس جہاں فانی سے کوچ کرگئے۔ وہ ایک عہد ساز شخصیت تھے۔ نوے کی دہائی میں کشمیر میں شروع ہونے والی آزادی کی تحریک میں علی گیلانی نے رفتہ رفتہ ایسا رنگ جمایا کہ سب ہی ان کے رنگ میں رنگ گئے۔ گزشتہ اٹھائیس برسوں سے علی گیلانی کے زیادہ تر شب وروز جیلوں یا نظربندی میں بیتے۔ لوگوں نے ان کے ساتھ جینے اور مرنے کا عہد کیا۔ شیخ عبداللہ کے بعد کشمیریوں نے اگر کسی ایک شخصیت کی پوجا کی تو اس کا نام علی گیلانی
جمعه 03  ستمبر 2021ء مزید پڑھیے

تین یا پانچ سال کافی نہیں

پیر 30  اگست 2021ء
ارشاد محمود
پاکستان تحریک انصاف کی حکومت تین برس مکمل کرچکی ہے۔گزشتہ ہفتے وزیراعظم عمران خان نے اسلام آبادکے کنونشن سینٹر میں اپنی تین برسوں کی کارگزاری پیش کی لیکن یاران نکتہ داںکہاں مطمئن ہوتے ہیں۔حقیقت یہ ہے کہ گزشتہ تین برسوں میں پی ٹی آئی کی حکومت نے ملک کے بنیادی اسٹرکچر میں اصلاحات لانے کی بھرپور کوشش کی تاکہ ان قومی تنازعات ، مسائل اور ایشوزکا پائیدار حل تلاش کیا جاسکے جو ملکی ترقی کی راہ میں اکثر روڑے اٹکاتے ہیں۔چونکہ ان مسائل کے حل کے لیے بے پناہ توانائی، سیاسی عزم اور وقت درکار ہوتا ہے لہٰذا ماضی میں
مزید پڑھیے


افغانستان: بھارت کے آپشنز

پیر 23  اگست 2021ء
ارشاد محمود
پاکستان، چین، ایران اور روس کے برعکس بھارت نے کابل میں اپنا سفارت خانہ بند کرنے اور سفارتی عملے کو نکالنے کا فیصلہ کیا۔دلچسپ بات یہ ہے کہ طالبان نے بھارتی قافلے کو ایئر پورٹ تک محفوظ راہ داری فراہم کی۔ درحقیقت کابل پر طالبان کے قبضے نے جیو اسٹرٹیجک اور جیو پولیٹیکل منظرناموں کی حرکیات کو مکمل طور پر تبدیل کر دیا ہے جس کے خطے کی سیاست پر گہرے اثرات مرتب ہوں گے۔ بین الاقوامی اور علاقائی طاقتیں سرگرمی کے ساتھ طالبان کے زیر انتظام افغانستان اور اس کے بعد کے نتائج سے نمٹنے کے لیے پالیسی
مزید پڑھیے


کابل پھر اجڑ رہاہے

پیر 16  اگست 2021ء
ارشاد محمود
افغانوں کی ریاست ایک بار پھر بکھرنے کو ہے اور دنیا ساری تماشا دیکھ رہی ہے۔افغان اجڑرہے ہیں۔ خاک وخون میں نہلائے جارہے ہیں۔ بستیوں کی بستیاں مسمار ہونے کو ہیں۔ گزشتہ بیس برسوں میں جو کچھ تعمیر ہوا وہ بھک سے اڑنے کو ہے۔ تباہی کے راستے پر گامزن افغانوں کو کوئی پہلے روک سکا ہے نہ اب ان کا ہاتھ تھاما جا سکتاہے۔ افسوس! کوئی ایسی دانشمند لیڈرشپ ان کے درمیان موجود نہیں جو اتحاد اور اتفاق کے ساتھ قوم کو یکجاکرسکتی۔ طوفان میں پھنسی کشتی کو کنارے لگا سکتی۔کوئی ایک بھی ادارہ ایسانہیں بنایا جاسکا جو افغان
مزید پڑھیے


کشمیر:بے بسی کے دوسال

پیر 02  اگست 2021ء
ارشاد محمود
چند دن بعد پانچ اگست کو مقبوضہ جموں وکشمیر میں بھارتی آئین کی دفعہ 370 اور 35A کی منسوخی کے دوسال پورے ہوں گے۔یہ دن ہمیں مقبوضہ جموں وکشمیر کی تقسیم اور ریاستی درجہ کے خاتمے کی یاد دلاتاہے۔ان دوسالوں میں کشمیریوں کو غیر معمولی آئینی، سیاسی ، معاشی اور تہذیبی یلغار کا سامنا کرنا پڑا۔ ریاست کے خدوخال بدلنے کے لیے بھارتیہ جنتاپارٹی نے ایک ایسے منصوبے پر کام شروع کیا جس کا منطقی انجام کشمیریوں کی اسلامی شناخت اور ثقافتی تشخص کا خاتمہ ہے۔ حال ہی میںبھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بھارت نواز کشمیری لیڈروں کے ساتھ ایک
مزید پڑھیے



آزادکشمیر الیکشن: پی ٹی آئی کہاں کھڑی ہے

هفته 24 جولائی 2021ء
ارشاد محمود
نون لیگ اور پیپلزپارٹی آزادکشمیر کے الیکشن میں دھاندلی کا راگ اس قدر شد ومد سے الاپ رہی ہیں جیسے کہ دھاندلی کا سارا منصوبہ ان کی نگرانی میں مرتب ہوا ہو۔الیکشن میں کامیابی کا ڈھنڈورا پیٹنے والی ان دونوں جماعتوں نے آزادکشمیر پر پانچ پانچ برس حکومت کی ۔ گزشتہ عام الیکشن میں پی پی پی اسمبلی کی محض تین نشستیں حاصل کرسکی تھی۔ اب کی بار نون لیگ کی الیکشن میں کامیابی کے امکانات مخدوش ہوچکے ہیں۔ اس کے بڑے بڑے برج الٹنے کا خطرہ حقیقت بنتا نظر آرہاہے۔ آزادکشمیر کے لوگ زیادہ دیر تک ایک جماعت سے وابستہ
مزید پڑھیے


حضور!کشمیر کو تختۂ مشق نہ بنائیں

پیر 12 جولائی 2021ء
ارشاد محمود
جناب بلاول بھٹو اور محترمہ مریم نواز کی آزادکشمیر کی الیکشن مہم میں شرکت نے مقامی الیکشن کو قومی سطح پر بحث ومباحثے کا عنوان بنادیا ہے۔ان کی پرجوش تقریروں اور تحریک انصاف پر الزامات نے سیاسی درجہ حرارت بھی بڑھادیا ہے۔ دونوں رہنماؤں نے ووٹروں کی توجہ حاصل کرنے کے لیے مسئلہ کشمیر پر تحریک انصاف کی حکومت کے خلاف ایک مقدمہ عوام کی عدالت میں پیش کیا۔ ان کا کہنا ہے کہ پانچ اگست2019 کو جو کچھ ہوا وہ بھارت اور پاکستان کی حکومتوں کی ملی بھگت کا نتیجہ ہے۔پی ٹی آئی کشمیر پر سودے بازی کرچکی
مزید پڑھیے


پاکستانیت اور وزیراعظم عمران خان

پیر 05 جولائی 2021ء
ارشاد محمود
گزشتہ دنوں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے زوردیا کہ پاکستانیت پر فخر کیا جائے۔ پاکستانی زبان، کلچر اور لباس کو رواج دیا جائے۔ انگریز بننے کی کوشش میں اپنی تہذیب اور کلچر کی تذلیل نہ کی جائے۔ پاکستان میں روزاوّل سے شناخت کا مسئلہ چلا آرہاہے۔ حکمران طبقہ اینگلو انڈین یا پھر مغربی تہذیب کے زیراثر رہا۔ وہ ترقی، تہذیب ، تربیت اور رہنمائی کے لیے مغربی دنیا کے فکری ماخذوں کی طرف دیکھتاتھا۔ حکمرانوں کی گزشتہ سات دہائیوں کی تاریخ اٹھا کر دیکھیں تو سوائے چند ایک کے سب ہی کے سب مغربی تہذیب
مزید پڑھیے


مودی کی کشمیر پر کل جماعتی کانفرنس

پیر 28 جون 2021ء
ارشاد محمود
لگ بھگ دوبرسوں کی ناکام کشمیر پالیسی کے بعد بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی کو ان ہی کشمیری لیڈروں کے ساتھ نشست کرنا پڑی، جنہیں ان کی حکومت نے مسترد شدہ، بدعنوان اور ملک دشمن قراردے کر طویل عرصے تک جیلوں میں بند کیے رکھاتھا۔ چرچا اگرچہ اس اعلیٰ سطحی نشست کا بہت ہوالیکن ڈھاک کے وہ ہی تین پات کی ماند نکلا کچھ خاص نہ۔ مقبوضہ جموں وکشمیر کے چودہ مختلف الخیال لیڈروں کے ساتھ ملاقات میں وزیراعظم نریند مودی نے کوئی دوٹوک بات نہ کی۔ اگرچہ محبوبہ مفتی نے ریاست جموں وکشمیر کی داخلی خودمختاری اور دفعہ 370کی
مزید پڑھیے


اعتماد کا بحران سب کچھ نگل جائے گا!

پیر 21 جون 2021ء
ارشاد محمود
اخلاقی گراوٹ اور عمومی انحطاط کا سلسلہ تو صدیوں سے جاری ہے لیکن گزشتہ چند عشروںسے اس میں غیر معمولی تیزی آئی ہے۔قومیں اور ملک مالی مشکلات یا کمزور عسکری صلاحیت کی وجہ سے کم تباہ ہوتے ہیں ۔ سماج سے برے بھلے، کھرے کھوٹے کی تمیز مٹ جائے تو انہیں برباد ہونے سے کوئی روک نہیں سکتا۔ شہریوں کا ریاستی اور قومی اداروں پر سے اعتبار اٹھ جائے تو رفتہ رفتہ قومی وجود کھوکھلا ہوجاتا ہے اور کسی کو کانوں کان خبر بھی نہیں ہوتی۔ ماضی میں بھی بے شمار قو میںا ور مما لک محض اس لیے صف
مزید پڑھیے








اہم خبریں