BN

ارشاد محمود



25جولائی کے بعد کا منظرنامہ


الیکشن ڈے اور حکومت سازی میں اب گنتی کے چند دن رہ گئے ہیں۔ نئی حکومت کے سامنے کئی طرح کے چیلنجز ہوں گے جن سے اسے نبردآزما ہونا ہوگا۔سب سے بڑا چیلنج یہ ہے کہ نو منتخب حکومت کو اپنی رٹ منوانا ہوگی۔گزشتہ ایک برس سے ملک میں سویلین حکومت کی عمل داری عملاًتما م ہوچکی ہے۔ سرکاری اہلکار خوف زدہ ہیں۔ وہ سرکاری خدمات سرانجام دینے پر آمادہ نہیں کہ مبادہ کسی سکینڈل میں پکڑے جائیں۔ بیوروکریسی لگ بھگ کام کرنا ترک کر چکی ہے۔ چنانچہ ریاستی مشینری عضومعطل بن چکی ہے۔ کالاباغ ڈیم کی تعمیر کے
هفته 07 جولائی 2018ء

شفاف الیکشن ضروری ہیں حضور

پیر 02 جولائی 2018ء
ارشاد محمود
انگریزی کا ایک محاورہ اکثر سننے کو ملتاہے :انصاف نہ صرف ہونا چاہیے بلکہ ہوتاہوا نظر بھی آنا چاہیے۔پاکستان میں الیکشن کاجو ہنگامہ برپا ہے وہ بہت یکطرفہ ہوگیا ۔ نون لیگ رفتہ رفتہ مقابلے سے باہر ہوتی جارہی ہے۔ ریاستی اداروں اور نون لیگ کے درمیان شروع ہونے والا تصادم اور محاذ آرائی کا اونٹ کسی کروٹ نہیں بیٹھ رہا ۔الیکشن میںمحض23 دن باقی ہیںلیکن نون لیگ ابھی تک بھرپور طریقے سے الیکشن مہم بھی شروع نہیں کرپائی۔ اس کی قیادت جو اکثر میچ فکس کرکے کھیلنے کی عادی ہے اس بار میدان میں اتر ہی نہیں رہی ۔
مزید پڑھیے


سیاست اور ڈرامہ

هفته 30 جون 2018ء
ارشاد محمود
سیاست ، اداکاری اور ڈرامے کا عہد قدیم سے چولی دامن کا ساتھ ہے۔ جس شخصیت میں یہ تینوں ہنر پائے جاتے ہوں وہ ایک کامیاب سیاست دان تصورکیا جاتاہے۔سیاست دان ہو یا اداکار دونوں کا مقصد ناظرین یا شہریوں کے دلوں میں گھر کرجاناہوتا ہے‘دل اور دماغ پر نقش کر نے والے مکالمے، تیر کی طرح دل میں اتر جانے والے جملے اور جذبات میں ہیجان برپا کردینے والے استعاروں،تشبیہات اورتمثیلات کا مسلسل استعمال کیا جاناتاکہ ناظرین یا شہریوں کا لیڈرشپ کے ساتھ گہرا ذاتی اور سماجی تعلق استوار ہوجائے۔ شہریوں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کے لیے
مزید پڑھیے


چودھری نثار کس مخمصے میں ہیں؟

پیر 25 جون 2018ء
ارشاد محمود
کوئی چودھری نثار علی خان سے پوچھے کہ وہ ایک ہی بار پریس کانفرنس کرکے بتاکیوں نہیں دیتے کہ کہنا کیاچاہتے ہیں۔ عرصے سے ایک تھیٹر لگایا ہوا ہے۔ ناراض ہونے پر جلد ہی راضی ہونے کی نوید بھی سنادیتے ہیں۔ فرماتے ہیں کہ عورت کی لیڈرشپ قبول نہیں اور کبھی عندیہ دیتے ہیں کہ سب ٹھیک ہوچکا ہے۔ ایک دوست نے چودھری نثارکی موجودہ کیفیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا :وسدی وی نئیں۔نسدی وی نئیں۔تے کْج دَسدی وی نئیں۔ ان کی پریس کانفرنسوں سے اب تک ایک ہی نکتہ ابھر کرسامنے آیا کہ مسلم لیگ نون میں انہیں نوے کی
مزید پڑھیے


شجاعت بخاری کا جرم کیا تھا؟

هفته 16 جون 2018ء
ارشاد محمود

یقین نہیں آتا کہ سینئر صحافی شجاعت بخاری کو دن دھاڑے سری نگر میں شہید کردیا گیا۔وہ کشمیر کے ہی نہیں بلکہ اس خطے کے ایک بڑے شہ دماغ قلمکار تھے۔ صحافی اور تجزیہ کار تو بہت ہوتے ہیں شجاعت بخاری کا دل اپنے لوگوں کے لیے دھڑکتاتھا۔وہ کشمیر میںجاری تشدد اور قتل و غارت کی محض خبریں نہیں چھاپتے تھے بلکہ حالات کو بدلنے کی بھی کوشش کرتے۔ کشمیر پر ہونے والی ہر پیش رفت سے نہ صرف باخبر ہوتے بلکہ حالات کے سدھار کے لیے سرگرم بھی ۔ اسی درد دل نے انہیں تنازعات کے پرامن اور مذاکرات
مزید پڑھیے




پاک بھارت تعلقات : جمود ٹوٹ رہاہے

بدھ 13 جون 2018ء
ارشاد محمود
دہلی اوراسلام آباد سے پاک بھارت تعلقات میں نہ صرف بہتری کے اشارے مل رہے ہیں بلکہ الیکشن کے بعد دونوں ممالک کے درمیان رسمی مذاکراتی عمل بھی بحال ہونے کے روشن امکانات نظر آتے ہیں۔ بھارت سرکار نے طویل غور وفکر اور ناکام تجربات کے بعد بتدریج اپنی حکمت عملی تبدیل کی۔ سخت گیر پالیسی کے برعکس مکالمے کا راستہ اختیار کرنا شروع کردیا ہے۔ ممکن ہے کہ کوئی حادثہ اس عمل کو ابتدائی مرحلے میں ہی سبوتاژکردے جیسے کہ ماضی میں ہوتاآیا ہے تاہم اعلیٰ سطحی اجلاسوں میں طے پاچکا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان
مزید پڑھیے


ٹوئٹر پر الیکشن کا معرکہ

هفته 09 جون 2018ء
ارشاد محمود
سوشل میڈیا پر الزامات ،جوابی الزامات اورگالم گلوچ کے ذریعے اس دفعہ الیکشن کا معرکہ لڑاجارہاہے۔ سیاسی جماعتوں اور سیاستدانوں کی سوشل میڈیا ٹیمیں ایک دوسرے کو چور، بدعنوان، ملک دشمن اور بے حیا ثابت کرنے کے لیے سرگرم ہیں۔پاکستانی سیاست سوشل میڈیا بالخصوص ٹوئٹر نے جس قدر تیزی سے مقبولیت حاصل کی اور روایتی میڈیا کو پس منظر میں دھکیلا وہ حیرت انگیز ہے۔ الیکشن کمیشن کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق اس وقت ملک بھر میں رجسٹرڈ ووٹروں کی تعداد 10 کروڑ 42 لاکھ 67ہے ۔ چار کروڑ 58 لاکھ کے لگ بھگ خواتین ہیں۔سیاسی جماعتوں کے
مزید پڑھیے


ریحام خان کی کتاب

پیر 04 جون 2018ء
ارشاد محمود
تحریک انصاف کے مخالفین کی امیدوں کا مرکز اب ریحام خان کی کتاب بن چکی ہے۔ مارکیٹ میں آئے گی تو نہ صرف دھوم مچائے گی بلکہ تحریک انصاف والے منہ چھپاتے پھریں گے۔کتاب کی تقریب رونمائی کی منصوبہ بندی اس طرح کی گئی کہ وہ الیکشن میں موضوع بحث بن سکے ۔عمران خان کے حامیوں کو مایوس ہی نہیں بلکہ شرمندہ کردے۔ کتاب تو آیا ہی چاہتی ہے لیکن کیا یہ کتاب رائے عامہ کو متاثر اور تحریک انصاف کے حامیوں کے اعصاب شل کرپائے گی یا یہ بھی ایک مشق لاحاصل ہی ہوگی۔ لیڈروں اور سیاسی جماعتوں کے درمیان
مزید پڑھیے


آزادکشمیر : ایک سنگ میل طے کرلیا

هفته 02 جون 2018ء
ارشاد محمود
ایک طویل اور اعصاب شکن جدوجہد کے بعد آزادکشمیر کو بااختیار بنانے اور انتظامی، مالی اور قانونی سازی کے اختیارات اسلام آباد میں’’آباد‘‘کشمیر کونسل سے مظفرآباد منتقل کرنے کا فیصلہ ہوگیا۔وفاقی کابینہ نے جاتے جاتے کچھ تاریخ ساز فیصلے کیے ان میں آزادکشمیر، گلگت بلتستان کو بااختیار بنانے اور قبائلی علاقہ جات کو خیبر پختون خوا میں ضم کرنے کے فیصلے نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور نون لیگ کی لیڈرشپ کو تاریخ میں ایک منفرد مقام عطا کیا ۔ ان کالموں میں متعدد بار یہ لکھا جاچکا ہے کہ آزادکشمیر کے شہری اور لیڈرشپ بلاجھجک کہتی تھی کہ
مزید پڑھیے


گلگت بلتستان ایک سنگ میل طے کرگیا

منگل 29 مئی 2018ء
ارشاد محمود
احتجاجی مظاہروں کے باوجود وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے دیرینہ عوامی مطالبے کے پیش نظر گلگت بلتستان کے موجودہ قانونی ، آئینی اور انتظامی ڈھانچے میں بنیادی نوعیت کی تبدیلیوں کا اعلان کردیا ۔نئے نظام کو گلگت بلتستان ریفارمز آرڈر 2018 ء کا نام دیاگیا ۔نیا نظام تین برسوں کے طویل غورو فکر اور اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت کا ثمر ہے۔سرتاج عزیز جیسے زیرک اور منجھے ہوئے سیاستدان اور بیوروکریٹ نے محنت شاقہ کے بعد یہ خاکہ تیار کیا۔ نئے آڈر کے تحت گلگت بلتستان کی اسمبلی اور حکومت کو قانون سازی، مالیاتی اور ترقیاتی امور میں وہ تما م
مزید پڑھیے