BN

اسداللہ خان


مریم نواز جیت گئیں ، ہاری نیب بھی نہیں


ماحول بدل رہا ہے، ہوائیں اپنا رخ تبدیل کر رہی ہیں ۔ شریف خاندان کے لیے اچھی خبریں آنے کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔ نیب کو اپنی پالیسی بدلنا پڑ رہی ہے۔ نیب پراسیکیوٹرز پریشان ہیں ،موقف بدلتے ہوئے وہ الجھنوں کا شکار لگتے ہیں۔ بعض اوقات کھل کے ملزموں کی حمایت کرنے لگتے ہیں اور کبھی کبھار فکس میچ کی طرح سلو بائولنگ کرنے لگتے ہیں ۔ سوچیے اس بچے کی ذہنی کیفیت کیا ہوتی ہو گی، جسے سب سوالوں کے جواب آتے ہوں مگر کسی وجہ سے وہ جواب نہ دینے پر مجبور ہو۔ لاہور میں چیف
جمعه 30  ستمبر 2022ء مزید پڑھیے

اسحاق ڈار کون ہیں؟

بدھ 28  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان
اسحاق ڈار کے وزیر خزانہ بننے کے حوالے سے بڑی سادگی کے ساتھ یہ دلیل دی گئی ہے کہ وہ کسی بھی عدالت سے سزا یافتہ نہیں ہیں لہذا انہیں وزیر خزانہ بنائے جانے میں کوئی ہرج نہیں ۔ لیکن دلیل دینے والوں نے یہ نہیں بتایا کہ جب کوئی مسئلہ ہی نہیں تھا تو اپنے ہی دور حکومت میں اپنے ہی وزیر اعظم کے جہاز میں انہیں کیوں بھاگنا پڑا تھا،پھر پانچ سال تک وہ کیوں جلا وطنی کاٹتے رہے،اپنے اوپر اشتہاری کا داغ لگوا لیا لیکن واپس نہیں آئے ۔ آج آئے تو پھر وزیر اعظم ہی کے
مزید پڑھیے


مفتاح صاحب!آزاد کشمیر کے ساتھ یہ سلوک کیوں؟

هفته 24  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان

سیاست بے رحم ہے، اتنی بے رحم کے ریاست کے مفادات کو نقصان پہنچانے سے بھی نہیں ہچکچاتی۔اپنی تختی لگانے اور دوسرے کی تختی کو روکنے کی خواہش میں یہاں کئی مرتبہ نوے فیصد مکمل منصوبوں کو بھی ادھورا چھوڑ دیا گیا کہ کہیں فریق مخالف کی تختی آویزاں نہ ہو جائے یا اسے اس کا کریڈیٹ نہ مل جائے ۔ سیاست کے لئے عوام کو نقصان پہنچانے کا چلن تو عام ہے مگر اپنے سیاسی مفادات کے لیے ریاست کو نقصان پہنچانا کہاں کی حب الوطنی ہے۔ اہلیانِ آزاد کشمیر آجکل روتے نظر آتے ہیں ۔ تبھی وہ ہمیشہ
مزید پڑھیے


’’کفن‘‘ سیلاب زدگان کے لیے

بدھ 21  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان
اپنی حکومت کو سیلاب زدگان کے لیے دوسرے ملکوں سے امداد مانگتے دیکھتا ہوں تو منشی پریم چند کا افسانہ’’ کفن ‘‘یاد آتا ہے۔ افسانے کے دو کردار ہیں ،گھسو اور مادھو۔ دونوںباپ بیٹا ہیں اور پرلے درجے کے نکھٹو۔نچلی ذات کے دونوں کردار ایک جھونپڑی میں رہتے ہیں،کام کاج کرتے نہیں، کبھی دل چاہا تو مزدوری کر لی اور پھر کئی دن کے لیے اِدھر اُدھر پَڑ رہے۔کبھی مانگ تانگ کے بھی گزارا کر لیا کرتے تھے اور چھوٹی موٹی چوری چکاری سے بھی نہ کتراتے تھے۔ ایسے لوگوں کے لیے مصیبت رحمت بن کے آتی ہے۔ کہانی کے مطابق گھسو
مزید پڑھیے


سیاسی الجھنوں میں گِھرے گھمبیر معاشی مسائل

بدھ 14  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان
پاکستانی عوام کو مہنگائی نے چاروں اطراف سے گھیر لیا ہے۔بجلی کے بلوں نے تواچھے اچھوں کو دن میں تارے دکھا دیے ہیں۔گھریلو صارفین کو بجلی کے بل 45 سے 60 روپے فی یونٹ کے حساب سے بھیجے جا رہے ہیں۔بیس ہزار روپے ماہانہ کمانے والے کو جب اپنی آمدن سے زیادہ کا بل موصول ہوتا ہے تو اسے غشی کے دورے پڑنے لگتے ہیں۔ پچاس ہزار روپے ماہانہ کمانے والا بھی اگر پچیس ہزار کا بل ادا کردے گا تو بچوں کی فیسیں ، کچن کا راشن اور گھرکے دیگر اخراجات کہاں سے پورے کرے گا۔ دوسری طرف عالمی
مزید پڑھیے



سیکرٹری الیکشن کمیشن پبلک اکائونٹس کمیٹی میں

جمعه 09  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان
سنا ہے الیکشن کمیشن آف پاکستان ایک خود مختار ادارہ ہے لیکن گذشتہ روز پبلک اکائونٹس کمیٹی کے ممبران نے سیکرٹری الیکشن کمیشن عمر حمید کو بلا کر نہ صرف سخت سرزنش کی بلکہ انہیں عمران خان کو نوٹس جاری کرنے کا حکم دے دیا۔ سیکرٹری الیکشن کمیشن بار بار کہتے رہے کہ وہ ہر کام قانون کے دائرے میں رہ کر ہی کر سکتے ہیں مگر چئیرمین پبلک اکائونٹس کمیٹی نور عالم خان نے کہہ دیا کہ پبلک اکائونٹس کمیٹی آپ کو حکم دیتی ہے کہ آپ عمران خان کو نوٹس جاری کریں ۔ پبلک اکائونٹس کمیٹی کا اجلاس
مزید پڑھیے


جب ہم بہتے بہتے بچے ……(2)

بدھ 07  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان
رات کے آٹھ بجے تھے جب ہم سبی کے لیے عازم سفر ہوئے ۔ ڈیرہ اللہ یار سے یوں تو ہمیں دو گھنٹے لگنے تھے لیکن اُس وقت حالات مختلف تھے۔ اندازہ نہیں تھا کہ کچھ ہی دیر میں ہم بہت پچھتانے والے تھے۔راستے میں اگرچہ کہیں کہیں سڑک پر تھوڑا بہت پانی موجود تھا لیکن بس اتنا ہی کہ موٹر سائیکل سوار کو بھی وہاں سے گزرنے میں زیادہ دشواری نہ ہوتی۔ نوتال سے ہوتے ہوئے ہم نے بختیار آبادعبور کر لیا تو سبی محض ایک گھنٹے سے بھی کم ڈرائیو پر رہ گیاتھا۔ بختیار آباد سے نکلتے ہی ہمیں
مزید پڑھیے


سیلاب کی کوریج اور چیلنجز

جمعه 02  ستمبر 2022ء
اسداللہ خان
پانی میں ڈوبے لاڑکانہ میں رات جیسے تیسے گزری۔ صبح آٹھ بجے میرے ایک دوست شیراز پٹھان گھر سے ناشتہ بنوا کر لے آئے۔انڈے ، پراٹھے،چکن کڑاہی اور تھرموس میں چائے۔ناشتہ کرتے ہی میں نے اجازت چاہی اور بلوچستان کی راہ لی جہاںڈیرہ الہ یار میں کوئٹہ سے آنے والی ٹیم اور بیوروچیف کوئٹہ خلیل احمد میرے منتظر تھے۔ راستے میں جگہ جگہ احتجاج کے باعث ٹریفک جام تھی۔مظاہرین حکومتی امداد نہ ملنے کے باعث راستے بند کر کے احتجاج کر رہے تھے۔ ایک دو چھوٹے چھوٹے احتجاجوں سے تو جلد جان چھوٹ گئی لیکن شکار پور والے بات مان
مزید پڑھیے


سیلاب کی کوریج اور چیلنجز

بدھ 31  اگست 2022ء
اسداللہ خان
کراچی سے کوئٹہ کی فلائٹ منسوخ ہوئی تو مسافروں نے احتجاج شروع کر دیا۔کئی مسافر ایسے تھے جن کی تیسری پرواز منسوخ ہوئی تھی اور ہفتے بھر سے وہ کراچی میں پھنسے ہوئے تھے۔ انتظامیہ کا اصرار تھا کہ موسم کی خرابی کے باعث جہاز کوئٹہ نہیں لے جا سکتے جبکہ مسافرمختلف طرح کے الزامات عائد کر رہے تھے۔ایک جملہ کئی لوگ دوہرارہے تھے’’تم لوگ ہم بلوچستان والوں کو بھیڑ بکریاں سمجھتے ہو جو روز پرواز منسوخ کر دیتے ہو‘‘۔ ان الزامات میں اس وقت شدت آ گئی جب اُسی جہاز پر اسلام آباد کے مسافر سوار کیے جانے لگے۔
مزید پڑھیے


تھوڑی سی توجہ سیلاب پر بھی

جمعه 26  اگست 2022ء
اسداللہ خان
یہ منظر دل اداس کر دینے والا تھا۔ راجن پورشہر کے قریب ہی واقع ایک دیہاتی علاقے میں محمد حسین کا خاندان سیلاب میں بہہ جانے والا اپنا گھر چھوڑ کر بند کے اوپر آن بیٹھا تھا۔ ایمر جنسی میں ایک بوڑھی ماں ،ایک بیوی ، تین چھوٹے بچے ،دو بکرے، ایک بیمار بکری اور چند خرگوش باہر نکال لانے میں کامیاب ہوا تھا۔ پانی سے گزر کر دوبارہ گھر کو گیا تو تین چارپائیاں ، زمین پر بچھانے کے کچھ کپڑے اور چند برتن بھی باہر نکال لایا۔ اب صورتحال یہ تھی کہ جلانے کو خشک لکڑی اور پکانے
مزید پڑھیے








اہم خبریں