BN

اسداللہ خان



الکیمسٹ


آفاقی زبان کے وجود پر یقین، غیبی اشاروں کی سمجھ،خوابوں کی تعبیر پانے کی خواہش، خواہش کی تکمیل کے لیے کوشش، مطالعہ کی عادت ، جد و جہد مسلسل اور خود پر کامل یقین۔ یہ کہانی ہے الکیمسٹ کی۔ پائولو کوئیلہو کا ناول الکیمسٹ بہت پہلے پڑھا، پچھلے چار دن سے گھر میں رہنے کے باعث اُن کتابوں کی دوبارہ ورق گردانی کی جو بہت پہلے پڑھی تھیں اور دماغ سے محو ہو رہی تھیں۔ انہی میں پائولو کوئیلہو کا شہر ہ آفاق ناول الکیمسٹ بھی تھا۔ الکیمسٹ کی کہانی ایک گڈریے کے گرد گھومتی ہے جس کا نام سینٹیاگو ہے
هفته 28 مارچ 2020ء

افواہیں پھیلا کر تسکین ملتی ہے؟

جمعرات 26 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
یہ سٹریس ری ایکشن ہے یا جانے کیا ۔ خوف کا تاثر ختم کرنے کی بھونڈی کوشش ہے یا کچھ اور ۔ بطور قوم غیر ذمہ داراور بے حس ہونا اس کی وجہ ہے یا پھردروغ گوئی کی ایسی خُوپڑ گئی ہے کہ جھوٹ اور سچ انہیں ایک جیسے دکھنے لگے ہیں۔ صرف یہی نہیں بلکہ جھوٹ انہیں سچ سے زیادہ پُر لطف لگتا ہے ، سچ کی نسبت جھوٹ پر یقین انہیں زیادہ آتا ہے ، سنسنی پھیلا کر تسکین ملتی ہے اور دوسروں کو خوفزدہ کر کے مزہ آتا ہے ۔ افواہ ساز فیکٹریوں کا کاروبار عروج
مزید پڑھیے


کرونا کا راستہ روکنے کے راستے

هفته 21 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
ذہنی طور پر تیار رہنا چاہیے ، کرونا نے ابھی پھیلنا ہے۔ابھی تو یہ پاکستان میں آیا ہے ، جس طرح کرونا کے مریض آسانی سے گھوم پھر رہے ہیں یقینی بات ہے یہ مزید لوگوں میں بیماری پھیلانے کا باعث بنیںگے۔حکومت کے پاس پھیلائو روکنے کے آپشنز بظاہر تین ہیں۔ -1شہروں کولاک ڈائون کر دیا جائے -2ہر طرح کے ملکی اور غیرملکی سفر پر پابندی لگا کر چار سے زیادہ لوگوں کو جمع ہونے سے روک دیا جائے -3ہسپتالوں کی او پی ڈیز بند کر دی جائیں یہ تینوں اقدامات اٹھانا کتنا آسان یا مشکل ہے اور اس کے نتیجے میں کیا
مزید پڑھیے


کیا غلط کہا ینگ ڈاکٹرز نے ؟

جمعه 20 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
اصل بات یہ ہے کہ حکومت کے پاس کرونا سے نمٹنے کے لیے کوئی طبی حکمت عملی ہے ہی نہیں۔ ایک ایسے وقت میں جب ہوٹلوں ، شادیوں ، مذہبی اجتماعات اور شاپنگ سینٹرز پر پابندی لگا دی گئی ہے ، پبلک پارکس اور ٹرانسپورٹ بند کر دی گئی ہے ، مساجد میں نماز جمعہ کے اجتماعات تک کو محدود کرنے پر غور ہو رہا ہے ، ملک بھر میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی ہے ، چار سے زیادہ لوگ ایک جگہ پر اکٹھے نہیں ہو سکتے وہاں صرف ایک جگہ ایسی ہے جہاں ہزاروں لوگ بیک وقت
مزید پڑھیے


کراچی رے کراچی …(2)

هفته 14 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
کراچی کے عوام نے تنگ آ کر پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دے دیا ۔ انہیں لگا کہ سالہا سال سے ایم کیو ایم اور پاکستان پیپلز پارٹی ان کے مسائل کا حل نہیں ڈھونڈ سکی، کسی نئی جماعت کو آزمایا جائے ۔ تبدیلی کے نعروں کے جواب میں کراچی نے پاکستان تحریک انصاف کے چودہ امیدواروں کومنتخب کر کے قومی اسمبلی جبکہ بائیس کو ووٹ دے کر صوبائی اسمبلی میں بھیجا۔ان میں سے اکثر وہ ہیں جن کے نام بھی پہلے لوگوں نے نہ سنے تھے ، چار چھے کے علاوہ تو میں بھی کسی سے واقف نہ تھا،
مزید پڑھیے




کراچی رے کراچی

جمعرات 12 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
گذشتہ ہفتہ کراچی میں گزرا۔ ٹی وی شوز کی ریکارڈنگ کے سلسلے میں ان علاقوں میں جانے کا اتفاق بھی ہوا جہاںسے کبھی گزر نہ ہوا تھا۔ بلدیہ ٹائون ، اورنگی ٹائون، لانڈھی اور لیاری جیسے علاقوں میں جا کر اندازہ ہوا کہ یہاں پر بسنے والوں کو ابھی شہری ہونے کا سٹیٹس تک نہیں دیا گیایعنی انہیں بنیادی شہری سہولیات تک حاصل نہیں۔ سڑکیں، عام استعمال کا صاف پانی ، سیوریج کا نظام ، ٹرانسپورٹ ، مناسب اسکول اور بنیادی مراکز صحت، کچھ بھی تو دستیاب نہیں۔کچھ علاقے توایسے تھے جہاں نلکہ کھولیں تو سیوریج کا گنداپانی چلنے لگتا
مزید پڑھیے


یہ ہیں خواتین کے اصل مسائل

هفته 07 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
خواتین کے عالمی دن کو سنجیدگی سے منانے کے لیے ان کے مسائل پر سنجیدگی سے غور کرنا ضروری ہے ۔ ذرا غور تو کیجیے عورت کے اصل مسائل ہیں کیا۔عورت کے مسائل کو حل کرنے کے لیے کیا کوششیں ہوئی ہیں اور ان کوششوں کے نتیجے میں کیا نتائج حاصل ہوئے ہیں ۔آئیے ذرا سنجیدگی کے ساتھ ان مسائل پر ایک نظر ڈالتے ہیں۔عورت کا پہلا مسئلہ تو وہیںسے شروع ہو جاتا ہے جب ذہنی بلوغت کی عمر کو پہنچے بغیر سولہ سال کی عمر میں اس کی شادی کر دی جاتی ہے جو کہ بد قسمتی سے سندھ
مزید پڑھیے


عمران خان کو گھر بھیجنے میں حائل رکاوٹیں!

جمعرات 05 مارچ 2020ء
اسداللہ خان
وہ جو کہتے ہیں حکومت اور اسٹیبلشمنٹ کے تعلقات مثالی نہیں رہے۔ وہ جو سمجھتے ہیں کہ حکومت ڈیلیور نہیں کر سکی‘ اسٹیبلشمنٹ پریشان ہے اور عمران خان کے سامان باندھنے کا وقت ہوا چاہتا ہے وہ جو پہلے دسمبر اور پھر مارچ کی تاریخ دے رہے تھے۔ وہ جو مائنس ون کی کہانی سناتے ہیں کبھی مائنس آل کی‘ کبھی قومی حکومت کی بات کرتے ہیں کبھی نئے انتخابات کی۔ شہر اقتدار میں بیٹھے ان تمام دوستوں سے اختلاف کی جسارت کرتے ہوئے دس دلائل ان کی خدمت میں پیش کیے دیتا ہوں۔ 1۔ خطے کے حالات پاکستان میں کسی
مزید پڑھیے


حکومت مشکل راستے پر چل پڑی

هفته 29 فروری 2020ء
اسداللہ خان
آپ کو یاد ہو گا کہ نواز شریف کے ملک سے باہر جاتے ہی ایک تاثر یہ پیدا ہو ا تھا یا دیا گیا تھاکہ نواز شریف ڈیل کے تحت باہر گئے ہیںمگر عمران خان اس ڈیل کا حصہ نہیں۔اگر یہ تاثر درست تھا تو جان لیجئے کہ اب عمران خان نے نواز شریف کو باہر بھیجنے والوں سے تعلقات خراب کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے ۔ بظاہر اس کہانی کے تین فریق ہے ، فریق اول ،عمران خان ، فریق دوم، نواز شریف اورفریق سوم، نواز شریف کو باہر بھیجنے والے۔اس کہانی پر یقین کرنے والوں کو لگتا ہے
مزید پڑھیے


ڈیرن سیمی سے ایک ملاقات

جمعرات 27 فروری 2020ء
اسداللہ خان
پشاور زلمی کے کپتان ڈیرن سمی سے سرِ راہ ملاقات ہو گئی۔ پاکستان کی شہریت ملنے کے بعد کافی خوش تو لگ رہے تھے لیکن میں نے محسوس کیا کہ کئی الجھنوں کا شکار ہیں۔ برسبیل تذکرہ میں نے پوچھا کہ جناب پاکستانی بننے کے بعد کیسا محسوس کر رہے ہیں؟ اپنی مخصوص دلنشیں مسکراہٹ لبوں پر لاتے ہوئے کہنے لگے ، پاکستانی بننے کے بعد خود کو بڑا آزاد محسوس کر رہا ہوں، اب میں جہاں دل چاہے سڑک پہ کچرا پھینک سکتا ہوں، پان کھا کے تھوک سکتا ہوں، یہاں تک کہ جب اور جہاں دل چاہے رفع حاجت
مزید پڑھیے